Chaton Mandiro Aur Pairon Par

چھتوں منڈیروں اور پیڑوں پر

چھتوں منڈیروں اور پیڑوں پر

ڈھلتی دھوپ کے اجلے کپڑے سوکھ رہے تھے

بادل سرخ سی جھالر والے بانکے بادل

ہنستے چہکتے پھولوں کا اک گلدستہ تھے

ہر شے کندن روپ میں ڈھل کر دمک رہی تھی

گالوں پر سونے کی ڈلگ اور آنکھوں میں اک تیز چمک تھی

سارا منظر کیف کے اک لمحے میں بے بس

لذت کی بانہوں میں جکڑا ہمک رہا تھا

اور پھر دو آنکھوں کو ملتی

کالے الجھے بالوں کو مکھ پر بکھرائے

چھوٹے چھوٹے قدم اٹھاتی بڑھتی آئی

پہلی کھڑکی میں جب اس نے جھانکا

کھڑکی کی دہلیز پہ رکھا اک نازک گلدان چٹخ کر ٹوٹ گیا

الجھے بالوں پاگل آنکھوں والی نے تب آگے بڑھ کر

دوسری تیسری اور پھر گلی کی ہر کھڑکی میں جھانک کے دیکھا

گل دانوں کو ٹھوکر ماری

اک اک پھول کو روند دیا

تب وہ مجھ کو دیکھ کے لپکی

میری جانب غیظ بھری نظروں کا ریلا آیا

پھر جیسے کچھ شوخ کے ٹھٹھکی

سرخ گلاب کا پھول مرے ہاتھوں میں تھمایا

اور خود چکنے فرش پہ گر کر ٹوٹ گئی

وزیر آغا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(253) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Wazir Agha, Chaton Mandiro Aur Pairon Par in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 101 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Wazir Agha.