Dhoop Ke Sath Gaya Sath Nibhanay Wala

دھوپ کے ساتھ گیا ساتھ نبھانے والا

دھوپ کے ساتھ گیا ساتھ نبھانے والا

اب کہاں آئے گا وہ لوٹ کے آنے والا

ریت پر چھوڑ گیا نقش ہزاروں اپنے

کسی پاگل کی طرح نقش مٹانے والا

سبز شاخیں کبھی ایسے تو نہیں چیختی ہیں

کون آیا ہے پرندوں کو ڈرانے والا

عارض شام کی سرخی نے کیا فاش اسے

پردۂ ابر میں تھا آگ لگانے والا

سفر شب کا تقاضا ہے مرے ساتھ رہو

دشت پر ہول ہے طوفان ہے آنے والا

مجھ کو در پردہ سناتا رہا قصہ اپنا

اگلے وقتوں کی حکایات سنانے والا

شبنمی گھاس گھنے پھول لرزتی کرنیں

کون آیا ہے خزانوں کو لٹانے والا

اب تو آرام کریں سوچتی آنکھیں میری

رات کا آخری تارا بھی ہے جانے والا

وزیر آغا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(934) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Wazir Agha, Dhoop Ke Sath Gaya Sath Nibhanay Wala in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 101 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Wazir Agha.