Din Dhal Choka Tha Our Parindah Safar Main Tha

دن ڈھل چکا تھا اور پرندہ سفر میں تھا

دن ڈھل چکا تھا اور پرندہ سفر میں تھا

سارا لہو بدن کا رواں مشت پر میں تھا

جاتے کہاں کہ رات کی بانہیں تھیں مشتعل

چھپتے کہاں کہ سارا جہاں اپنے گھر میں تھا

حد افق پہ شام تھی خیمے میں منتظر

آنسو کا اک پہاڑ سا حائل نظر میں تھا

لو وہ بھی خشک ریت کے ٹیلے میں ڈھل گیا

کل تک جو ایک کوہ گراں رہ گزر میں تھا

اترا تھا وحشی چڑیوں کا لشکر زمین پر

پھر اک بھی سبز پات نہ سارے نگر میں تھا

پاگل سی اک صدا کسی اجڑے مکاں میں تھی

کھڑکی میں اک چراغ بھری‌ دوپہر میں تھا

اس کا بدن تھا خوف کی حدت سے شعلہ وش

سورج کا اک گلاب سا طشت سحر میں تھا

وزیر آغا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1048) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Wazir Agha, Din Dhal Choka Tha Our Parindah Safar Main Tha in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 101 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Wazir Agha.