Khud Say Howa Juda To Mila Martaba Tujhe

خود سے ہوا جدا تو ملا مرتبہ تجھے

خود سے ہوا جدا تو ملا مرتبہ تجھے

آزاد ہو کے مجھ سے مگر کیا ملا تجھے

اک لحظہ اپنی آنکھ میں تو جھانک لے اگر

آؤں نظر میں بکھرا ہوا جا بجا تجھے

تھا مجھ کو تیرا پھینکا ہوا پھول ہی بہت

لفظوں کا اہتمام بھی کرنا پڑا تجھے

یہ اور بات میں نے صدائیں ہزار دیں

آئی نہ دشت ہول سے اک بھی صدا تجھے

تو نے بھی خود کو مرکز عالم سمجھ لیا

لگ ہی گئی زمانے کی آخر ہوا تجھے

کیا قہر ہے کہ رنگوں کے اس اژدہام میں

جز رنگ زرد اور نہ کچھ بھی ملا تجھے

نظروں نے تار تار کیا آسماں تمام

آئی نہ راس تاروں بھری یہ ردا تجھے

دائم رہے سفر میں ترا ناقۂ خیال

دیتا رہوں میں روز یہی بد دعا تجھے

کہنے کو چند گام تھا یہ عرصۂ حیات

لیکن تمام عمر ہی چلنا پڑا تجھے

وزیر آغا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1051) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Wazir Agha, Khud Say Howa Juda To Mila Martaba Tujhe in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 101 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Wazir Agha.