Safar Ka Dosra Marhala

سفر کا دوسرا مرحلہ

چلی کب ہوا کب مٹا نقش پا

کب گری ریت کی وہ ردا

جس میں چھپتے ہوئے تو نے مجھ سے کہا

آگے بڑھ آگے بڑھتا ہی جا

مڑ کے تکنے کا اب فائدہ

کوئی چہرہ کوئی چاپ ماضی کی کوئی صدا کچھ نہیں اب

اے گلے کے تنہا محافظ ترا اب محافظ خدا

میرے ہونٹوں پہ کف

میرے رعشہ زدہ بازوؤں سے لٹکتی ہوئی گوشت کی دھجیاں

اور لاکھوں برس کا بڑھاپا

جو مجھ میں سما کر ہمکنے لگا

مجھ کو ماضی سے کٹنے کا کچھ ڈر نہیں

اپنے ہم زاد کو روبرو پا کے میں غم زدہ بھی نہیں

یہ عصا جھکتے شانوں پہ کالی عبا اور گلے کے چلنے کا پیہم صدا

اب یہی میری قسمت یہی آسرا

وزیر آغا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(465) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Wazir Agha, Safar Ka Dosra Marhala in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 101 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Wazir Agha.