Sikha Diya Hai Zamanay Ne Be Basar Rehna

سکھا دیا ہے زمانے نے بے بصر رہنا

سکھا دیا ہے زمانے نے بے بصر رہنا

خبر کی آنچ میں جل کر بھی بے خبر رہنا

سحر کی اوس سے کہنا کہ ایک پل تو رکے

کہ ناپسند ہے ہم کو بھی خاک پر رہنا

تمام عمر ہی گزری ہے دستکیں سنتے

ہمیں تو راس نہ آیا خود اپنے گھر رہنا

وہ خوش کلام ہے ایسا کہ اس کے پاس ہمیں

طویل رہنا بھی لگتا ہے مختصر رہنا

سفر عزیز ہوا کو مگر عزیز ہمیں

مثال نکہت گل اس کا ہم سفر رہنا

شجر پہ پھول تو آتے رہے بہت لیکن

سمجھ میں آ نہ سکا اس کا بے ثمر رہنا

عجیب طرز تکلم ہے اس کی آنکھوں کا

خموش رہ کے بھی لفظوں کی دھار پر رہنا

ورق ورق نہ سہی عمر رائیگاں میری

ہوا کے ساتھ مگر تم نہ عمر بھر رہنا

ذرا سی ٹھیس لگی اور گھر کو اوڑھ لیا

کہاں گیا وہ تمہارا نگر نگر رہنا

وزیر آغا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1601) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Wazir Agha, Sikha Diya Hai Zamanay Ne Be Basar Rehna in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 101 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Wazir Agha.