Tujhe Bhi Yaad To Hoga

تجھے بھی یاد تو ہوگا

کبھی ہوا

اک جھونکا ہے جو

دیواروں کو پھاند کے اکثر

ہلکی سی ایک چاپ میں ڈھل کر

صحن میں پھرتا رہتا ہے

کبھی ہوا

اک سرگوشی ہے

جو کھڑکی سے لگ کر پہروں

خود سے باتیں کرتی ہے

کبھی ہوا

وہ موج صبا ہے

جس کے پہلے ہی بوسے پر

ننھی منی کلیوں کی

نندیا سے بوجھل

سوجی آنکھیں کھل جاتی ہیں

کبھی ہوا

اب کیسے بتائیں

ہوا کے روپ تو لاکھوں ہیں

پر اس کا وہ اک روپ

تجھے بھی یاد تو ہوگا

جب سناٹے

پوری پوری ٹوٹ گرے تھے

چاپ کے پاؤں

اکھڑ گئے تھے

سرگوشی پر

کتنی چیخیں جھپٹ پڑی تھیں

اور پھولوں کی آنکھوں سے

شبنم کی بوندیں

فرش زمیں پر

چاروں جانب بکھر گئی تھیں

وزیر آغا

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(525) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Wazir Agha, Tujhe Bhi Yaad To Hoga in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 101 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Wazir Agha.