Ilzam Aik Yeh Bhi Utha Lena Chahiye

الزام ایک یہ بھی اٹھا لینا چاہیئے

الزام ایک یہ بھی اٹھا لینا چاہیئے

اس شہر بے اماں کو بچا لینا چاہیئے

یہ زندگی کی آخری شب ہی نہ ہو کہیں

جو سو گئے ہیں ان کو جگا لینا چاہیئے

وہ کس طرف چلا ہے لگائے کوئی سراغ

میں کس طرف رواں ہوں پتا لینا چاہیئے

یعنی قمار عشق میں کیا کچھ ہے داؤ پر

اس راز وا شگاف کو پا لینا چاہیئے

کیسا ہے کون یہ تو نظر آ سکے کہیں

پردہ یہ درمیاں سے ہٹا لینا چاہیئے

دل پر جو یادگار رہے اس کے مکر کی

ایسا بھی کوئی نقش بنا لینا چاہیئے

اس طرح بھی چلا ہے کبھی کاروبار شوق

روٹھے کوئی تو اس کو منا لینا چاہیئے

کیجیے نہ کیوں مطالبۂ وصل اے ظفرؔ

کی ہے وفا تو اس کا صلہ لینا چاہیئے

ظفر اقبال

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(229) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Zafar Iqbal, Ilzam Aik Yeh Bhi Utha Lena Chahiye in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 50 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Zafar Iqbal.