Nahi Ke Tairay Isharay Nahi Samjhta Hon

نہیں کہ تیرے اشارے نہیں سمجھتا ہوں

نہیں کہ تیرے اشارے نہیں سمجھتا ہوں

سمجھ تو لیتا ہوں سارے نہیں سمجھتا ہوں

ترا چڑھا ہوا دریا سمجھ میں آتا ہے

ترے خموش کنارے نہیں سمجھتا ہوں

کدھر سے نکلا ہے یہ چاند کچھ نہیں معلوم

کہاں کے ہیں یہ ستارے نہیں سمجھتا ہوں

کہیں کہیں مجھے اپنی خبر نہیں ملتی

کہیں کہیں ترے بارے نہیں سمجھتا ہوں

جو دائیں بائیں بھی ہیں اور آگے پیچھے بھی

انہیں میں اب بھی تمہارے نہیں سمجھتا ہوں

خود اپنے دل سے یہی اختلاف ہے میرا

کہ میں غموں کو غبارے نہیں سمجھتا ہوں

کبھی تو ہوتا ہے میری سمجھ سے باہر ہی

کبھی میں شرم کے مارے نہیں سمجھتا ہوں

کہیں تو ہیں جو مرے خواب دیکھتے ہیں ظفرؔ

کوئی تو ہیں جنہیں پیارے نہیں سمجھتا ہوں

ظفر اقبال

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1027) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Zafar Iqbal, Nahi Ke Tairay Isharay Nahi Samjhta Hon in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 105 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Zafar Iqbal.