Kaam Itne Hain K Araam Nahi Jante Hain

کام اتنے ہیں کہ آرام نہیں جانتے ہیں

کام اتنے ہیں کہ آرام نہیں جانتے ہیں

لوگ یہ سب سے اہم کام نہیں جانتے ہیں

فیس بک پر ہیں مرے جاننے والے لاکھوں

میرے ہم سایے مرا نام نہیں جانتے ہیں

عشق میں ذہن کو تکلیف نہ دی دل کی سنی

ہم اسی واسطے انجام نہیں جانتے ہیں

ہمیں بس اتنا پتا ہے کہ خدا ہوتا ہے

ہم ان اقسام کی اقسام نہیں جانتے ہیں

سب نے سگریٹ کی طرح منہ سے لگا لی دنیا

ہے نشہ اتنا کہ انجام نہیں جانتے ہیں

دے تو سکتے ہیں سبھی جان خدا کی خاطر

پر خداوند کے احکام نہیں جانتے ہیں

میں کہ لوگوں میں بہت کم ہی رہا ہوں ذیشانؔ

اس لیے لوگ مجھے عام نہیں جانتے ہیں

ذیشان ساجد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(494) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Zeeshan Sajid, Kaam Itne Hain K Araam Nahi Jante Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 15 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Zeeshan Sajid.