بالی ووڈ کی ”جھگڑالو“حسینائیں

ماضی کی ہیروئنوں میں ایسی مثالیں بہت کم ملتی تھیں،وحیدا رحمان،مدھو بالا،وجنتی مالا،ہیما مالنی اور مادھوری ڈکشٹ نے کبھی کسی دوسری اداکارہ کو طعن تشنیع کا نشانہ نہیں بنایا جبکہ موجودہ دور کی اداکارائیں”جھگڑالو عورتیں“بن چکی ہیں۔

ہفتہ دسمبر

Bollywood ki Jhagralloo Haseenaye
ہما میر حسن
پیار اور قابت فلموں کی کہانیاں ہی نہیں ہیں۔یہ رویے حقیقت کی دنیا میں بھی جلوہ افروز ہوتے ہیں ۔ بالی ووڈ میں نفرت اور محبت کے قصے عام ہیں۔جو کل دوست ہوتے ہیں وہ اچانک ایک دوسرے کے رقیت ہوجاتے ہیں،خاص طورسے وہ اداکارائیں جو بالی ووڈ کی سکرین پر برا جمان ہیں ایک دوسرے سے شاکی بھی ہیں اور دوستی بھی عام ہے وہ جب ایک دوسرے سے ناراض ہوتی ہیں تو نہ صرف پس پردہ سکرین و شنام طرازی کے جوہر دکھاتی ہیں بلکہ میڈیا پر وہ ایک دوسرے کے راز افشاء کرتی ہیں اور ان کے مداھین کو ایک دوسری ہی فلم دیکھنے کو ملتی ہیں کچھ ایسی اداکاروں کا یہاں ذکر کیا جارہا ہے۔

وہ ناکام رہے پھر جب پریانکا کرینہ کے بوائے فرینڈ شاہد کپور کے قریب ہوئیں تو ظاہری سی بات ہے کہ کرینہ کے پریانکا سے اختلافات شدت اختیار کرگئے ایک بار کرینہ سے پوچھا گیا کہ اپنے مدمقابل کس اداکارہ کو سمجھتی ہیں تو انہوں نے کہا رانی مکھر جی کو بہترین اداکارہ سمجھتی ہیں جب پریانکا کے بارے میں پوچھا گیا کہ پریانکا کو اپنے مدمقابل نہیں سمجھتی تو ان کا جواب تھا کہ وہ پریانکا کو ”اے لسٹ“اداکارہ نہیں مانتیں جس سے پریانکا بہت دکھی ہوگئیں تاہم ان کا کہنا تھا کہ وہ انڈسٹری میں دوستیاں بنانے نہیں آئیں مگر وہ کسی کی دشمن بھی نہیں البتہ انہیں اپنے بارے میں کہے گے سخت الفاظ ہمیشہ یار رہتے ہیں بالی ووڈ کی یہ اداکارائیں اس قدر غصیلی کیوں ہے؟کیا انہیں کوئی خوف ہے یا پھر وہ سکینڈلز اورلڑائی جھگڑوں سے میڈیا میں اپنی مقبولیت برقرار رکھنا چاہتی ہیں ناقدین کا کہنا ہے ک ایسے رویوں سے وہ کسی عام عورت کی طرح دکھائی دیتی ہیں جنہیں اقدار سے کوئی غرض نہیں ہوتی ہے وہ صرف مفاذ کو ہی پیش نظر رکھتی اور اس کے لیے کچھ بھی کر گزرتی ہیں ماضی کی ہیروئنوں میں ایسی مثالیں بہت کم ملتی تھیں۔

(جاری ہے)

۔وحید رحمان ،مدھو بالا،وجنتی مالا،ہیما مالنی،اور مادھوری ڈکشٹ نے کبھی کسی دوسری اداکارہ کو طعن تشنیع کا نشانہ نہیں بنایا اور نہ دھمکیاں دیں۔جبکہ موجودہ دور کی اداکارائیں”جھگڑالو عورتیں“ب چکی ہیں۔
سونم کپور اور ایشوریا رائے۔۔۔۔۔۔آنٹی ان کو کہا تو برا مان گئیں:
دنیا کی حسیناؤں میں شمار ہونے والی ایشوریا رائے کے حسن اور سٹائل کے لاکھوں دیوانے ہیں مگر سونم کپور ایسا نہیں سمجھتی جس کا وہ برملا اظہار کرتی ہیں ،ایشوریا اور سونم کپور کے مابین سرد جنگ کی روداد بہت دلچسپ ہے اور ایسا بہت کم دیکھنے میں آیا ہے کہ کوئی اداکارہ کسی کو آنٹی کہہ کر مخاطب کرئے ۔

۔ہوا کچھ یوں کہ ایک جگہ سونم نے ایشوریا رائے کو ”آنٹی“کہتے ہوئے کہا کہ وہ نئی نسل کے لیے مثل راہ ہیں۔سونم کے آنٹی کہنے پر ایشوریا کی ناراضگی تو بنتی تھی تاہم وہ بہت سمجھدار ہیں اورکبھی اپنے کسی بیان سے تنقید کا شکار نہیں ہوتیں۔البتہ اس دوران انہوں نے سونم کو آڑے ہاتھوں لیا اس دوران ایک مشہور کاسمیٹک کمپنی نے فیصلہ کیا وہ اپنی سفیر ایشوریا کے ساتھ سونم کو بھی ایک پروڈکٹ کی پروموشن کے سلسلے میں عالمی سطح پر ہونے والے فیسٹیول میں نمائندگی کا موقع دیں گے تاہم جب یہ بات ایشوریا کو معلوم ہوئی تو انہوں نے کمپنی کے سربراہ سے ناگواری کا اظہار کیا اور اس کے نتیجے میں سونم کو فیسٹیول میں شرکت کے لیے دعوت نامہ ہی وصول نہ ہوا جس پر سونم کافی خفا ہوئیں،سونم فیسٹیول میں شرکت کے لیے پرجوش تھی تاہم ان کی ساری امیدوں پر پانی پھرگیاسونم نے کہا کہ ”ایشوریا میرے پاپا کے ساتھ فلموں میں ہیروئین آتی تھیں تو وہ میری آنٹی ہی ہوئیں نا؟سونم کی معصومیت سے کیا کہے۔

۔۔؟سونم کے بیانات اکثر متنازع حیثیت اختیار کرتے ہیں تاہم وہ پھر بھی بالی ووڈ سٹارز کے بارے میں بیان بازی سے گریز نہیں کرتیں۔بہر کیف کچھ عرصے کے بعدفلمساز کرن جوہر کی سالگرہ میں سونم اور ایشوریا کی ملاقات ہوئی سب کو امید تھی وہ دونوں ایک دوسرے سے نظریں چڑائیں گی مگرایشوریا منجھی ہوئی اداکار کی طرح سونم سے ملیں اوریوں محسوس کروایا کہ ہمارے مابین کبھی کوئی جھگڑا ہی نہیں تھا سونم نے بھی معاملے کی نزاکت دیکھتے ہوئے ایشوریا کو اسی طرح رسپانس دیا مگر میڈیا سے سب کچھ کہاں چھپتا ہے؟سونم کے چہرے کے تاثرات صاف بتارہے تھے کہ انہیں غصہ ختم کرنے میں ابھی ٹائم لگے گا ایشوریا نے ایک فیسٹول میں جامنی رنگ کی لپ سٹک لگائی تھی جس پر سونم نے کہا تھا ایشوریا سٹائل نہیں جانتی ،میڈیا نے سونم کے اس بیان کو خوب دریج دی سونم کہتی ہیں کہ”میں انیل کپور کی بیٹی ہوں میں سونے کا چمچہ منہ میں لے کر پیدا ہوئی ہوں اور مجھے ہر وہ چیز چاہیے جو مجھے پسند ہیں “مگر بالی ووڈ میں ایسا رواج نہیں یہاں محنت اور ایک دوسرے سے اچھے مراسم سے سب ملتا ہے۔


کترینہ کیف اور دیپیکا۔۔۔کس نے کس کا بوائے فرینڈ چھینا؟
یہ دونوں حسینائیں بالی ووڈ پر راج کررہی ہیں مگر ایک دوسرئے کو ایک نظر نہیں بھاتیں۔سب جانتے ہیں کہ کپور خاندان کے چشم و چراغ رببیر کپور جب دیپیکا کی زلفوں کے اسیر تھے تو کترینہ کیسے رنبیر کو لے آڑیں اورپھر اپنی فلم”عجب پریم کی غضب کہانی“ کی شوٹنگ کے دوران رنبیر کے عجب پریم میں مبتلا ہوگئیں اس سے قبل رنبیر اور دیپیکا بالی ووڈ کی بہترین جوڑی شمار کئے جاتے تھے مگر بالی ووڈ سٹارز کے مزاج بھی بدلتے موسموں کی طرح ہوتے ہیں۔

کب کس پر دل آجائے کوئی پتا نہیں چلتا؟بہر کیف کترینہ اور دیپیکا کی سرد جنگ کا آغاز اسی سبب ہوا اور آج تک دونوں اداکارائیں ایک دوسرے سے نظریں چراتی ہیں دیپیکا رنبھیر کی بے وفائی سے شدید ذہنی تناؤ کا شکار ہوئی تھیں اور انہوں نے ڈاکٹر سے رجوع کیا تھا بہر کیگ جلدہی ان کی زندگی میں اداکار رنویر سنگھ نے خوشیاں بکھیر دیں،دوسری طرف وقت نے کروٹ لی اور دیپیکا سے بے وفائی کے مرتکب ہوکر کترینہ کے دیوانے بننے والے رنبیر نے سات سال بعد ہی کترینہ سے بھی نگاہیں چرالیں اور نئی سمت پر گامزن ہوگئے۔

اب کترینہ اور دیپیکا کا ایک حوالہ رنبیر کی سابق گرل فرینڈ کا ہے دونوں اداکارائیں گھائل تو ایک شخص کی بے وفائی سے ہوئیں مگر وہ ایک دوسری کو اس کا ذمہ دار سمجھتی ہیں اور آج تک ایک دوسری سے دشمنی نبھارہی ہیں یہ بھی سچ ہے کہ جب کوئی آپ کی گڈ بک میں شامل نہ ہوا اور وہ آپ کو ملنے والے کام پر بھی قبضة کرلے تو غصہ کچھ زیادہ ہی آتا ہے۔ایسا ہی کچھ کترینہ اور دیپیکا کے معاملے میں ہوتا رہتا ہے،جب ایک مشہور کاسمیٹکس کمپنی نے کترینہ کو آؤٹ کرکے دیپیکا کو اپنی سفیر مقرر کرلیا تو کترینہ کے قرینی دوست کہنے لگے کترینہ نے خود ہی کاسمیٹکس کمپنی سے اپنا معاہدہ ختم کیا ہے تاکہ وہ اپنا ذاتی میک اپ لانچ کرسکے بہر حال کترینہ دیپیکا ایک دوسرے کی مخالف سمجھی جاتی ہیں اور ان کی ہر خبر میڈیا کی زینت بنتی ہیں،کہا جارہا ہے حال ہی میں شاہ رخ کی نئی فلم میں اداکار دیپیکا کو ڈراپ کرکے کترینہ کو شامل کی گیا ہے جس سے دونوں کے درمیان مزید اختلافات نے جنم لیا تاہم دیپیکا کے بقول وہ بہت مصروف ہیں اس لیے فلم میں کترینہ اور انوشکا شامل ہوئی،کچھ عرصہ قبل کترینہ نے جب انسٹا گرام کاآغاز کیا تو تقریباً سبھی بالی ووڈ سٹارز نے انہیں خوبصورت انداز میں ویلکم کیا لیکن جب دیپیکا کے بوائے فرینڈ رنویر سنگھ نے کترینہ کے لیے لکھا کہ ”دیر آیدرست آید“تو دیپیکا آگ بگولہ ہوگی۔

کیونکہ کترینہ نے پہلے بھی ان کے بوائے فرینڈ کو چھین چکی ہیں،نافذین کا کہناہے کہ دونوں اداکاراوں کا اکثر ایک دوسرے کا سامنا بھی کرنا پڑتا ہے لہٰذا انہیں رنجشیں بھلا کر ایک دوسرے کو گلے لگالینا چاہیے ۔دیپیکا کا کترینہ پر غصہ جائز بھی ہے مگر اب دیپیکا کو غصہ تھوک دینا چاہیے کیونکہ جس رنبیر کو انہوں نے چھینا تھا اب وہ بھی ان کے ساتھ نہ رہے۔

مزید بالی ووڈ کے مضامین :

Your Thoughts and Comments