شوبز اور سال2018ء

پاکستانی فلموں نے بھارتی فلموں سے زیادہ بزنس کیا

پیر دسمبر

showbiz aur saal 2018

سیف اللہ سپرا
ثقافتی سرگرمیوں کے حوالے سے سال2018ء پچھلے کئی سالوں کی نسبت قدرے بہتررہا۔اس سال اچھی اور معیاری پاکستانی فلمیں بنیں جنہیں لوگوں نے پسند کیا۔بڑی تعداد میں ٹی وی ڈرامے بھی بنے۔
سٹیج ڈراموں کا بزنس بھی خوب چمکا۔اہم ثقافتی اداروں نیشنل کونسل آف آرٹس،پنجاب آرٹس کونسل، لاہور آرٹس کونسل(الحمر)ملتان آرٹس کونسل سمیت دیگر آرٹس کونسلز کے زیر اہتمام سارا سال ثقافتی تقریبات منعقد ہوتی رہیں۔ثقافتی سرگرمیوں میں اضافے کی ایک بڑی وجہ ملک میں امن وامان کی بحالی ہے۔
سال 2018ء میں سلورسکرین پر پاکستانی فلموں کا راج رہا اس برس نمائش پذیر ہونے والی کچھ پاکستانی فلمیں ناکامی سے بھی دو چار ہوئیں تاہم چند فلموں کے خطیر بزنس نے فلمی صنعت کا مورال بلند کیا۔

(جاری ہے)


ہنرمند اور فنکارپاکستان کے علاوہ بیرون ملک بھی اپنی صلاحیتوں کا لو ہا منوانے میں کامیاب ہوئے ہیں۔پاکستانی فلمی شائقین میں بھارتی فلموں کا جادو ایک عرصے سے سر چڑھ کر بول رہا ہے لیکن اس برس پاکستانی ہنر مندوں نے اپنے کمال فن سے فلم بینوں کی بھر پور توجہ حاصل کی اور پاکستانی فلموں نے اربوں روپے کے سرمائے سے بننے والی بالی وڈ فلموں کا سحر توڑ دیا ہے ۔
پاکستانی فلم ”جوانی پھر نہیں آنی ٹو“نے 66کروڑ80لاکھ ،فلم ”پرواز ہے جنون“نے43کروڑ اور ”طیفاان ٹربل“نے41کروڑ44لاکھ روپے کا بزنس کرکے نیا ریکارڈ قائم کردیا ہے۔دوسری طرف پاکستان میں سب سے زیادہ بزنس بالی وڈ فلم ”سنجو“نے کیا جس نے تقریباً35کروڑ،اس کے بعد ”پدماوتی“نے28اور”باغی ٹو“نے16کروڑ روپے کمائے۔
رواں برس17پاکستانی اور22بالی وڈ فلموں کی نمائش ہوئی ۔پاکستانی فلموں میں فلم ”جوانی پھر نہیں آنی ٹو“رومانوی اور مزاحیہ فلم ہے جس کی ڈائریکشن ندیم بیگ نے دی۔ستاروں میں ہمایوں سعید،فہد مصطفی،ماوراحسین ،کبریٰ خان ،عظمیٰ خان،احمد علی بٹ ،واسع چودھریاوردیگر فنکاروں نے اداکاری کے جو ہر دکھائے۔فلم ”پرواز ہے جنون“کے ہدایتکار حسیب حسن ہیں ۔فلم کے نمایاں اداکاروں میں حمزہ علی عباسی ،احدرضا میر ،ہانیہ عامر اور کبریٰ خان شامل ہیں۔
معروف گلوکار اور اداکار علی ظفر کی فلم ”طیفاان ٹربل“کے ہدایتکار احسن رحیم ہیں ۔فلم میں علی ظفر اور مایا علی نے مرکزی کردار نبھائے۔فلم ”پرچی“کے ہدایتکار افضل جعفری ہیں ۔کاسٹ میں حریم فاروق ،علی رحمان خان،احمد علی بٹ ،عثمان مختار ،فائزہ سلیم اور شفقت چیمہ شامل ہیں ۔فلم ”مان جاؤ ناں“کے ہدایتکار عابس رضا ہیں ۔اداکاروں میں عدیل چودھری،ایاز سومرو،ہراج یامین،نعیم حق،اسماء عباس، آصف رضا میر اور نےئر اعجاز شامل ہیں ۔فلم ”پری“کی ہدایات الطاف علی نے دیں۔
فنکاروں میں محمد قوی خان،سلیم مرزا اور رشید ناز کے علاوہ نئے چہرے شامل ہیں۔فلم ”آزاد“کے ہدایتکار ریحان شیخ ہیں۔ستاروں میں صنم سعید،ریحان شیخ،نرمابچہ،انجلین ملک،زاہد احمد سلمان شاہد ،عمران عباس اور دوسرے فنکار شامل ہیں ۔فلم ”کیک“کی ہدایات عاصم عباسی نے دیں ۔اداکاروں میں صنم سعید ،عدنان ملک ،فارس خالد ،حراحسین اور دیگر شامل ہیں ۔فلم ”موٹر سائیکل گرل“کے ہدایتکار عدنان سرور ہیں۔
فلم میں اداکارہ سوہائے علی ابڑو نے مرکزی کردار نبھایا جبکہ سینئر اداکارہ ثمینہ احمد بھی شاندار کردار میں جلوہ گر ہوئیں ۔فلم ”سات دن محبت ان“کے ہدایتکار مینو گوہر اور فرجاد نبی ہیں۔ ستاروں میں شہریار منور،
جاوید شیخ ،آمنہ الیاس ،عائشہ عمر،حنا دلپذیر،میراسیٹھی ،عمران اسلم اور رمل علی شامل ہیں ۔فلم ”آزادی“
کے ہدایتکار عمران ملک ہیں ۔فلم میں اداکار معمررانا اور سونیا حسین نے مرکزی کردار اداکیے۔ان کے علاوہ سینئر اداکار ندیم نے شاندار کردار نگاری کی ہے۔فلم”نہ بینڈ نہ باراتی“کے ہدایتکار محمود اختر ہیں ۔ستاروں میں محمد قوی خان،علی کا ظمی اور عتیقہ اور ڈھو کے علاوہ دوسرے فنکار شامل ہیں ۔فلم ”وجود“کی ڈائریکشن جاوید شیخ نے دی ہے۔
اداکار دانش تیمور اور سعیدہ امتیاز نے مرکزی کردار نبھائے۔فلم ”جیک پاٹ“کے ہدایتکار شعیب خان ہیں ۔فنکاروں میں جاوید شیخ ،نور حسن،صنم چودھری ،ثناء ،فخر اور دوسرے فنکار شامل ہیں ۔فلم ”لوڈویڈنگ“کی ڈائریکشن نبیل قریشی نے دی ہے ۔کاسٹ میں فہد مصطفی ،مہوش حیات ،ثمینہ احمد ،نور حسن ،فائزہ حسن قیصر پیا اور دوسرے فنکار شامل ہیں ۔فلم ”دی ڈونکی کنگ“کے ہدایتکار عزیز جندانی ہیں ۔یہ بچوں کی اینیمیٹڈ فلم ہے جسے بالخصوص بچوں اور خواتین میں بہت پسند کیا گیا۔
رواں برس کی آخری ریلیز ہونے والی فلم ”پنکی میم صاحب“کی ہدایتکار شازیہ علی خان ہیں ۔اداکاروں میں حرایامین ،کرن ملک،عدنان جعفر،خالد احمد ،حاجرہ خان اور دیگر شامل ہیں ۔بالی وڈ فلموں میں ”سنجو“،”بدھائی ہو“،”جلیبی“،”فرائی ڈے“،”مبارکاں“،”ریس تھری“،”ٹھگ آف ہندستان“، ”سوئی دھاگہ“،”ٹوپوائنٹ زیرو“اور دوسری شامل ہیں۔
پاکستانی فلموں میں ہدایتکار ندیم بیگ کی فلم ”جوانی پھر نہیں آنی ٹو“نے 66کروڑ80لاکھ روپے کا بزنس کرکے نہ صرف نیاریکارڈ قائم کیا ہے بلکہ انہوں نے اپنا ہی ریکارڈ توڑ ڈالا ہے ۔گزشتہ برس ان کی فلم ”پنجاب نہیں جاؤں گی“نے 51کروڑ روپے کا بزنس کرکے پاکستانی فلمی تاریخ میں ایک نیا ریکارڈ قائم کیا تھا۔توقع کی جارہی ہے کہ آنے والے وقتوں میں پاکستانی فلمیں بھی سوکروڑ روپے کمانے میں کامیاب ہو جائیں گی۔
”جوانی پھر نہیں آنی ٹو“کو پاکستان کے علاوہ بیرون ملک بھی بے پناہ پذیرائی ملی ہے ۔دوسرے نمبر پر آنے والی فلم ”پرواز ہے جنون“حب الوطنی پر مبنی ایک ایکشن فلم ہے جس میں اداکار حمزہ علی عباسی نے مرکزی کردار نبھایا ہے اور فلمی شائقین کی طرف سے اس فلم کو بہت سراہا گیا۔تیسرے نمبر پر آنے والی علی ظفر کی فلم ”طیفا ان ٹربل “ہے جو ایک کامیڈی ،ایکشن اور رومانٹک فلم ہے ۔ یہ علی ظفر کی ہوم پروڈکشن کے تحت بننے والی انکی پہلی فلم ہے اور اس کی کامیابی کے بعد وہ نئی فلم بنانے کی تیاریوں میں مصروف ہیں۔ رواں برس پاکستانی فلمی صنعت نے ترقی کی ہے اور پاکستانی فلموں کے بیرون ملک سرکٹ میں اضافہ ہوا ہے۔
رواں برس پہلی بار سعودی عرب میں پاکستانی فلموں کی نمائش کا سلسلہ شروع ہوا۔”پرچی“پہلی پاکستانی فلم ہے جس کی نمائش سعودی عرب کے سینما گھر میں ہوئی۔اب پاکستانی فلموں کی20سے25ممالک میں نمائش ہونا شروع ہو چکی ہے جس کی بدولت معیاری فلموں کے بزنس میں خاطر خواہ اضافہ ہوا ہے ۔
تاہم فلمسازی کا عمل صرف کراچی تک محدود ہے ۔لاہور(ماضی میں جسے فلمی مرکز کہا جاتا تھا)میں فلمسازپریشانی کا شکار ہیں ۔مبینہ طور پر چند لوگوں کی اجارہ داری کے باعث ان کی فلموں کو شوزنہیں ملتے۔
2018ء کے حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے اداکار اور فلمساز ہمایوں سعید کا کہنا تھا کہ رواں برس پاکستانی فلمی صنعت نے نمایاں کامیابی حاصل کی ہے ۔میں خدا کا شکر ادا کرتا ہوں کہ میری فلم ”جوانی پھر نہیں آنی ٹو“نے66کروڑ سے زائد کا بزنس کیا ہے اور اسے صرف پاکستان ہی نہیں بلکہ دوسرے ملکوں میں بھی بے حد کا میابی ملی ہے ۔میں سمجھتا ہوں کسی بھی پراجیکٹ کی کامیابی میں پوری ٹیم کی محنت شامل ہوتی ہے لیکن ڈائریکٹر کا عمل دخل زیادہ ہوتا ہے ۔
ندیم بیگ نے مذکورہ فلم کی نہایت عمدہ ڈائریکشن دی ہے اور وہ سال 2018ء کے کامیاب ترین ہدایتکار ہیں ۔میں نے دوبئی فلموں کے پراجیکٹ پر کام شروع کردیا ہے جنہیں2019ء میں نمائش
کیلئے پیش کیا جائے گا ۔سینئر اداکار اور جاوید شیخ کا کہنا تھا کہ 2018ء فلمی صنعت کی ترقی کا سال ہے ۔
اس سال بہت سی شاندار فلمیں ریلیز ہوئیں اور ملک بھر میں درجنوں کی تعداد میں نئے سینما گھر تعمیر ہوئے ۔آج پاکستانی فلموں کا بزنس 50کروڑ روپے سے تجاوز کرچکا ہے ۔اگر دیکھا جائے تو چند برس قبل تک سوچا بھی نہیں جا سکتا تھا کہ ملکی فلمیں اتنا خطیر بزنس کر سکتی ہیں۔
پاکستانی فلمی صنعت ترقی کی نئی منازل طے کررہی ہے ۔وہ وقت دور نہیں جب فلم بین مکمل طور پر بھارتی فلموں کے سحر سے نکل ملکی فلموں کی طرف راغب ہونگے۔انکا کہنا تھا کہ ابھی فلمسازوں کے مسائل ضرور ہیں لیکن آنے والے وقت میں حالات تبدیل ہوجائیں گے۔
سال2018کچھ ستاروں کے لیے نئی زندگی کے آغاز کا بھی زینہ ثابت ہوا جنہوں نے شادی کے بعد نیا سفر شروع کیا۔اداکار منیب بٹ اور اداکارہ ایمن خان کی شادی کی تقریبات نومبر سے دسمبر تک چلتی رہیں اور طویل عرصے تک منگنی کے بندھن میں بندھے ہرنے کے بعد یہ جوڑا اب رشتہ ازدواج سے منسلک ہو گیا ہے ،دونوں کی نکاح کی تقریب 21نو مبر کو ہوئی اور6سے زائد تقریبات کے باعث سوشل میڈیا پر لوگوں کی بحث کا باعث بھی بنی۔
معروف اداکارہ عائشہ خان نے میجر عقبہ حدید ملک سے شادی کے بعد شوبز کو خیر بادکہہ دیا تھا،شادی کی تقریب اپریل میں منعقد ہوئی اور تصاویر سوشل میڈیا پروائرل بھی رہیں ۔اداکار فیروز خان کے لیے بھی2018 شادمانی کا سال ثابت ہوا جس دوران ان کے ڈرامے خانی اور رومیو ویڈہیر تو ہٹ ہوئے ہی،اس کے ساتھ ساتھ وہ علیزے نامی خاتون سے زندگی بھر کے بندھن میں بھی بندھ گئے ،مارچ کے آخر اور اپریل کے شروع میں ہونے والی تقریبات میں اس جوڑے نے اپنی نئی زندگی کا آغاز کیا۔
اداکار عمران اشرف بھی جولائی میں شادی کے بندھن میں بند ھ گئے جن کی شادی کرن سے ہوئی اور شادی کی تقریب میں متعدد فنکاروں نے بھی شرکت کی۔
اداکار اسد محمود بھی رواں سال ماڈل سارا شہزاد کے ساتھ رشتہ ازدواج سے منسلک ہوئے ،شادی کی تقریب بہت سادہ تھی ،جس میں دونوں نے سفید لباس پہن کر شرکت کی۔اداکارہ سارہ رازی نے بھی چند ماہ پہلے اپنے کزن سے شادی کرلی تھی۔ان کے شوہر کا تعلق شوبز سے نہیں ہے ۔اداکارہ انعم فیاض کی رخصتی بھی اسی سال ہوئی جن کا نکاح کافی عرصہ پہلے ہو چکا تھا ۔
اداکارہ اقدس غفار نے بھی زندگی کے نئے سفر کا آغاز کیا،اقدس غفار معروف اداکارہ سعدیہ غفار کی بہن ہیں ۔اداکارہ ثمن انصاری نے امریکہ میں دوسری شادی کرلی۔اداکار فیضان شیخ اور ماہم عامر کی رخصتی بھی اسی سال ہوئی۔لاہور سے تعلق رکھنے والی اداکارہ ثوبیہ خان نے کر کٹر عبدالقادر کے بیٹے عثمان قادر سے لومیرج کرلی۔
اس سال شوبز کی کچھ اہم شخصیات اس جہانِ فانی سے رخصت ہو گئیں ۔معروف شیف زیبدہ آپا سال کے پہلے مہینے میں ہی داغ مفارقت دے گئیں جبکہ اسی ماہ منو بھائی بھی دنیا چھوڑ گئے۔فلم اور ٹی وی کے سینئر اداکار اختر شاد،موسیقار استادنذر حسین بھی دنیا سے چلے گئے ۔مشہور کی بورڈ پلےئر طاہر انتقال کرگئے ۔
مردان میں سٹیج اداکارہ سنبل خان کو قتل کردیا گیا۔اداکارہ نگار سلطانہ انتقال کرگئیں۔اس سال دنیا چھوڑنے والے دیگر فنکاروں میں قاضی واجد ،منالاہوری ،کلثوم سلطانہ ،مدیحہ گوہر ،چکرم ،اعجاز حسین بیلی ،وکی کو برا اور علی اعجاز شامل ہیں ۔لاہور سے تعلق رکھنے والی معروف ماڈل انعم تنولی نے نا معلوم وجوہات کی بنا پر خود کشی کرلی۔

مزید متفرق کے مضامین :

Your Thoughts and Comments