عشق کے لیے وقت نہیں،،،،،

اداکار ٹائیگر شروف کہتے ہیں میری زندگی میں فی الحال صرف کام ہے،،،،ویسے بھی میں کسی لڑکی کے پاس جاکر ہائے ہیلو نہیں کہہ سکتا ہاں اگر کوئی لڑکی مجھے پسند کرتی ہے تو خود کہہ دے۔
زارا مصطفی:

بالی ووڈ اداکاراور ایکشن ہیرو مارشل آرٹ میں ”بلیک بیلٹ“چیمپئین اور جمناسٹک کے ماہر ٹائیگر شروف 2014 میں پہلی مرتبہ فلم”ہیروپنتی“کے مرکزی کردار میں جلوہ گر ہوئے اور پہلی ہی فلم کی مقبولیت کے بعد ٹائیگر کو فلم فئیرایوارڈ سٹارگِلڈ ایوارڈ،آئیفا ایوارڈ،سپر سٹار آف ٹو مورو،موسٹ اینٹرٹیننگ جیسے اہم اعزازات سے بھی نوازا گیا”دھوم تھری“کے لئے انہوں نے عامر خان کو باڈی بلڈنگ کے حوالے سے خصوصی ٹریننگ دی تھی فلموں میں آنے کے بعد ٹائیگر مشہور گانوں ”زندگی آرہا ہوں میں“چل وہاں جاتے ہیں“اور بے فکرا“کی میوزک ویڈیو میں بھی اپنی ڈانسنگ صلاحیتوں کو منواچکے ہیں ٹائیگر نے اپنی دوسری فلم”باغی“سے بھی شہرت کے نئے ریکارڈ قائم کئے اور دنیا بھر تقریباً ایک ارب سے زائد رقم باکس آفس پراکٹھی کی مگر پہلی دو فلموں کی کامیابی کے بعد ٹائیگر کی خواہش تھی کی ریتک کی طرح سپر ہیرو کے کردار سے بھی مقبولیت حاصل کرلیں مگر خلاف توقع ایسا نہ ہوسکا اور ان کی تیسری فلم”اے فلائینگ جٹ“فلاپ ہوگئی ہر نئے دن کو نئے عزم و حوصلے کے ساتھ خوش آمدید کہنے والے ٹائیگر آج کل ”باغی ٹو“کی شوٹنگ میں مصروف ہیں،سٹوڈ نٹ آف دی ائیر 2 میں بھی کرن جوہر کی پہلی پسند ہیں سپر ہیرو نہیں بن سکے تو کیا ہوا سپر سٹار بننے کے لئے ٹائیگر کا فلائینگ جٹ بالکل تیار ہے اب دیکھنا یہ ہے کہ وہ پہلی اڑان کب بھریں گے؟ٹائیگر شروف کے نام سے مشہور ہونے والی بالی ووڈ کے اداکار جگو دا یعنی جیکی شروف اور پروڈیوسر عائشہ دت کے اس بیٹے کا اصلی نام جے ہیمنت شروف ہے ٹائیگر کی ایک چھوٹی بہن کرشنا شروف بھی ہے یہ کہا جاتا ہے کہ ٹائیگر ہندوؤں کے دیوتا شری شیو بھگوان کے بہت بڑے بھگت ہے یہی وجہ ہے کہ ٹائیگر کی جسمانی ساخت بھی اسی بھگوان کے مشابہ ہے جو ٹائیگر نے بہت محنت اور مخصوص غذاؤں سے حاصل کی ہے اس لئے وہ ہر اچھے کام کی شروعات سے پہلے شیو بھگوان کی پوجا ضرور کرتے ہیں اور ہرسوموار کا”ورتھ“بھی رکھتے ہیں تاکہ اپنے بھگوان کو خوش کرسکیں اتنا ہی نہیں وہ شراب سگریٹ اور اس جیسے دیگر نشوں سے بھی کوسوں دور بھاگتے ہیں اس حوالے سے جیکی شروف کاکہنا ہے کہ میرے بیٹے نے میری کوئی عادت نہیں اپنائی بلکہ یہ ہوبہو اپنی ماں کا عکس ہیں یہ بلاوجہ دوستوں کے ساتھ گھر سے باہر نہیں جاتا وقت کا بہت پابند ہے کیا کھانا ہے کیا نہیں کھانا فٹنس کے معاملے میں توبہت محتاط ہے۔

خواب سچ ہوگئے: کہا جاتا ہے کہ ٹائیگر کو 2009 میں ہی بالی ووڈ کی مختلف فلموں کی پیشکش ہورہی تھی اگر چہ ٹائیگر کو معروف ٹی وی شو”فوجی“کے ری میک میں بھی مرکزی کردار کی پیشکش ہوئی لیکن انہوں نے اسے بڑے وقار سے مسترد کردیا کیونکہ وہ بالی ووڈ کے افق پر چمکتاستارہ بننے کے خواب سجائے بیٹھے تھے مگر اس کے باوجود ٹائیگر نے 2010 میں فلمساز سوسبھاش گھئی کی پیشکش کو بھی مسترد کردیا جو جیکی کی مشہور زمانہ فلم ”ہیرو“کے ری میک پر مبنی مرکزی کردار تھا حالانکہ عامر خان کی بھی خواہش تھی کہ ٹائیگر سوسبھاش کی یہ پیشکش ضرور قبول کرلیں البتہ 2012 میں انہوں نے ساجد انڈیا والہ کی فلم ”ہیرو پنتی“سائن کرکے فلمی حلقوں کو حیران کردیا ٹائیگر کی ماں عائشہ کہتی ہے میں نے کچھ سال پہلے فلم”بوم“پروڈیوس کی اچانک ڈسٹری بیوٹرز کے ساتھ تنازعہ ہوگیا اورانہوں نے فلم ریلیز کرنے سے انکار کردیا اس وقت جیکی نے مجھ سے کہا کہ یہ ہمارے خاندانی وقارکا معاملہ ہے اس لئے ہم خود فلم ریلیز کریں گے جس کے لیے ہم نے اپنا گھر گروی رکھ دیا لیکن بدقسمتی سے فلم کے ناکام ہوگئی اور ہمارا گھر نیلام ہوگیا لیکن جب ٹائیگر نے فلموں میں آنے کا فیصلہ کیا تو مجھ سے کہا کہ میں آپ کے لئے وہ گھر خریدنے جارہا ہوں مجھے اپنے بیٹے پر بہت فخر ہے میں ٹائیگر سے کہنا چاہتی ہوں کہ جب وہ ایسی باتیں کرتا ہے تو اس کے لیے میری محبت میں اضافہ ہوجاتا ہے ٹائیگر جس طرح مجھے اور اپنے پاپا کو عزت دیتا ہے ہماری کوئی بات نہیں ٹالتا ہمارے لئے بہت اہم ہے کیونکہ آج کل اس کی عمر کے بچے ایسے نہیں ہیں،،،“

لڑکیوں جیسا ڈانس: اداکاری کے حوالے سے ٹائیگر کو اکثر تنقید کا نشانہ بھی بنایا جاتا ہے ناقدین کا کہنا ہے کہ ٹائیگر محض ایکشن اور ڈانس میں نمبر ون ہیں مگر اداکاری میں نہیں اس کے جواب میں ٹائیگر کا کہنا ہے فلموں میں میرا ڈانس اور ایکشن اس قدر تخلیقی انداز میں پیش کیا جاتا ہے کہ میری اداکاری دب جاتی ہے لوگوں کی توجہ ویسے بھی ڈانس اور ایکشن پر زیادہ ہوتی ہے لیکن آئندہ میں کوشش کروں گا کہ کسی ایسی فلم کا انتخاب بھی کروں جس میں ڈانس اور ایکشن سے زیادہ اداکاری کی گنجائش ہوتا کہ میں اپنے ناقدین کو متاثر کرسکوں ویسے میں تنقید کا کبھی برا نہیں مناتا بلکہ بہت دھیان سے سنتا ہوں میں نے اپنے ناقدین سے اب تک سب سے ناپسندیدہ بات یہ سنی ہے کہ میں لڑکیوں کی طرح ڈانس کرتا ہوں جبکہ میں جانتا ہوں یہ درست نہیں ہے ویسے بھی بحیثیت اداکار میں اپنی قابلیت بخوبی جانتا ہوں۔

جیسا باپ ویسا بیٹا: بالی ووڈ کے معروف فلمساز سوسبھاش گھئی کہتے ہیں میں جیکی سے کہنا چاہتا ہوں کہ جس طرح اس نے اپنے بیٹے کی تربیت کی ہے وہ آج کل کے فلمی لوگوں سے بہت مختلف ہے وہ ہر برائی سے دور ہے اسے غلط درست کا فرق بہت اچھی طرح معلوم ہے ۔”پونم ڈھلوں“کہتی ہے ٹائیگر تم اپنے پیارے بچے ہوں کہ تمہارے والدین پر رشک آتا ہے لیکن ساتھ ہی ساتھ تم بھی بہت خوش نصیب ہوں کہ تمہیں جیکی جیسا باپ ملا تمہارے باپ میں بحیثیت انسان بہت سے خوبیاں ہیں انہیں ضرور اپنانا ہاں لیکن یاد رکھنا اپنے باپ کی طرح بے وقوفی کی حد تک سخی بننے کی ضرورت نہیں کیونکہ اس سے آخر میں نقصان تمہارا ہی ہوگا۔

انا کا مسئلہ: ٹائیگر کے والد جیکی کاکہنا ہے ٹائیگر کے پاس عشق محبت کے لیے وقت نہیں ہے اس کی زندگی میں صرف کام ہے وہ بچپن سے ہی اپنے کام میں اس قدر مگن ہے کہ اسے اور کوئی چیز کو شوق نہیں ہوتا اس حوالے سے ایک انٹرویو میں ٹائیگر نے بتایا جب میری ماں فخریہ انداز میں مجھ سے اپنی والہانہ محبت کا اظہار کرتی ہے تو میں اپنے آپ کو مزید محنت کے لئے اکساتا ہوں اور مجھے اپنے کام کے علاوہ کسی اور چیز کا خیال نہیں آتا،،،،،ویسے بھی کسی نئے رشتے کو استوار کرنے میں اپنا بہت سا وقت دینا پڑتا ہے جو میرے پاس نہیں ہے کوئی بھی رشتہ بنانے کے لئے خود پسندی سے باہر نکلنا پڑتا ہے کچھ پانے کے لئے کچھ کھونا پڑتا ہے مگر مجھے لگتا ہے میں یہ سب اپنے کام کے لیے تو کرسکتا ہوں لیکن شاید کسی نئے رشتے کے لئے فی الحال اس کی گنجائش نہیں ہے ویسے بھی میں کبھی کسی لڑکی کے پاس جاکر اسے ہیلو نہیں بولتا جس کی وجہ میرا شرمیلا پن ہے یا شاید میں پہل کرنے میں نکما ہوں ،ٹائیگرکا کہنا ہے کہ مجھے سکول کالج کے زمانے میں بھی بہت سی لڑکیاں اچھی لگتی تھیں مگر میں نے کبھی کسی سے کہا نہیں جس میں سے ایک شردھا کپور بھی ہیں جو میرے ساتھ سکول میں پڑھتی رہی ہیں اور مجھے بہت اچھی لگتی ہے مگر اسے محبت نہیں کہا جاسکتا شاید اسی لئے ”باغی “میں لوگوں کو ہماری کمیسٹری پسند آئی۔