امریکی عدالت نے 15سال بعد امریکی معروف گلوکار کو ریپ مقدمہ سے بری کردیا

امریکی عدالت نے 15سال بعد امریکی معروف گلوکار کو ریپ مقدمہ سے بری کردیا
لاس اینجلس (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 13 ستمبر2018ء) امریکی عدالت نے 38 سالہ معروف امریکی پاپ گلوکار نک کارٹر کو ڈیڑھ دہائی قبل ایک اداکارہ کو مبینہ طور پر ریپ کا نشانہ بنانے کے مقدمے میں بری کردیا۔نک کارٹر پر الزام تھا کہ انہوں نے آج سے 15 سال قبل یعنی 2003 میں اداکارہ و گلوکارہ میلیسا شومین کا ان کے ہی گھر میںریپ کیا تھا۔گلوکار نک کارٹر نے ہمیشہ سے ہی ریپ الزامات کو مسترد کیا، تاہم 33 سالہ میلیسا شومین نے ان کے خلاف 2 سال قبل مقدمہ درج کروایا تھا۔

نک کارٹر کے خلاف لاس اینجلس کانٹی کی عدالت میں مقدمہ زیر سماعت رہا، تاہم عدالت نے گلوکار کے خلاف ریپ الزامات کے تحت فرد جرم عائد کرنے کا مقدمہ خارج کردیا۔لاس اینجلس کانٹی کی عدالت کے پراسیکیوٹر نے بتایا کہ گلوکار کے خلاف اس لیے مقدمہ خارج کیا گیا، کیوں کہ قانونی طور پر مقدمے زائد المیعاد ہوچکا تھا۔

(جاری ہے)

پراسیکیوٹر نے بتایا کہ عدالت کے مطابق نک کارٹر کے خلاف لگائے گئے ریپ الزامات کی قانونی طور پر 2013 تک تحقیقات کی جاسکتی تھی، تاہم اب یہ قانونی طور پر ختم ہوچکا ہے، اس لیے گلوکار کے خلاف فرد جرم عائد نہیں کی جاسکتی۔

نک کارٹر کی قانونی ٹیم کے مطابق گلوکار نے پہلے دن سے ہی ریپ الزامات کو مسترد کیا اور وہ اس بات پر حیران ہیں کہ میلیسا شومین نے انہیں خود ہی گھر آنے کی دعوت تھی اور خود ہی ان پر الزامات لگائے۔دوسری جانب میلیسا شومین نے عدالتی فیصلے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ ریاست کی وجہ سے انصاف حاصل کرنے میں ناکام رہیں۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 13/09/2018 - 21:58:50

متعلقہ عنوان :

Your Thoughts and Comments