MENU Open Sub Menu

نوجوان کسی بھی ملک کا سب سے قیمتی اثاثہ ہیں اُن کی ترقی ہی قوم کے روشن مستقبل کی ضمانت ہے‘جہانگیر خانزادہ

پاکستان کی آبادی کا 60فیصد نوجوانوں پر مشتمل ہے جو ہمیں ملکی معیشت کے استحکام کا بہترین موقع فراہم کر رہا ہے‘صوبائی وزیر

نوجوان کسی بھی ملک کا سب سے قیمتی اثاثہ ہیں اُن کی ترقی ہی قوم کے روشن ..
لاہور(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 12 فروری2018ء) صوبائی وزیر کھیل و اُمور نوجوانان جہانگیر خانزادہ نے کہا ہے کہ نوجوان کسی بھی ملک کا سب سے قیمتی اثاثہ ہیں اُن کی ترقی ہی قوم کے روشن مستقبل کی ضمانت ہے،پاکستان کی آبادی کا 60فیصد نوجوانوں پر مشتمل ہے جو ہمیں ملکی معیشت کے استحکام کا بہترین موقع فراہم کر رہا ہے، یہی وجہ ہے کہ حکومت پنجاب نئی نسل کو مثبت انداز میں پروان چڑھانے کے لیے بہترین مواقع فراہم کر رہی ہے سکولوں اور کالجز میں محفوظ اور دوستانہ تعلیمی ماحول فراہم کیا جا رہا ہے اعلیٰ تعلیم کے حصول کو ممکن بنانے کے لیے ایجوکیشن انڈومنٹ فنڈ کے تحت وظائف مہیا کیے جا رہے ہیں۔

ان خیالات کا اظہار اُنھوں نے یونیورسٹی آف لاہور میں حکومت پنجاب کے اشتراک سے منعقدہ پہلی دو روزہ انٹرنیشنل کانفرنس سے خطاب کے دوران کیا۔

اس موقع پر ان کے ساتھ جنرل شفاعت اور کانفرنس کے چیف ایگزیکٹو آفیسر نسیم اچکزئی بھی موجود تھے۔ انہوںنے کہاکہ پسماندہ علاقوں میں بچیوں کی شرح خواندگی میں اضافے کے لیے زیورتعلیم پروگرام متعارف کروایا گیا ہے۔

چائلڈ لیبر کا خاتمہ کر کے بچوں کو سکولوں تک لایا جا رہا ہے اس مقصد کے لیے ان کے والدین کو مالی معاونت فراہم کی جا رہی ہے۔مستحق اور ذہین طلبہ کی نچلی سطح سے بہترین تربیت کے لیے دانش سکول قائم کیے گئے ہیں جہاں غریب گھرانوں کے بچے اعلیٰ تعلیمی ماحول میں پروان چڑھ رہے ہیں۔فارغ التحصیل اور کم تعلیم یافتہ نوجوانوں کو ٹیکنیکل ٹریننگ اور کاروبار کی خصوصی تربیت دی جا رہی ہے، دوران تعلیم اپنی کفالت آپ کے تحت ای روز گار سکیمیں متعارف کروائی جا رہی ہیں۔

چھوٹے کاروبار کے آغاز کے لیے بلاسود قرضوں میں مائیکرو فنانسنگ کی جا رہی ہے اور اس کے پھیلائو کے لیے پرائیویٹ پارٹنر شپ کو فروغ دیا جا رہا ہے۔ قوم کے معماروں کی بہتر جسمانی نشونما کے لیے تعلیم کے ساتھ ساتھ کھیل کے میدان بھی آباد کیے جارہے ہیں اس مقصد کے لیے تحصیل، ضلع، کمیونٹی اور پنجاب بھر کے تمام پبلک سکولوں، کالجوں اور یونیورسٹیوں میں پلے گرائونڈز کی اپ گریڈیشن اور عدم موجود سہولیات کی فراہمی کا آغاز کر دیا گیا ہے ۔

سکول کی سطح بہترین کھلاڑیوں کے انتخاب اور انٹرنیشنل لیول پر ٹریننگ کے لیے ضلعی سطح پر سپورٹس اکیڈیمیز اور کمپلیکسز کے قیام کا سلسلہ بھی شروع کیا جا چکا ہے۔صوبائی وزیر نے کہا کہ اس وقت ملکی ترقی میں نوجوانوں کا کردار سٹیک ہولڈز کا ہے۔ یوتھ کانفرنس کے انعقاد کا مقصد ملک کے چاروں صوبوں سے بہترین اذہان کو اکٹھا کر کے پالیسی سازی میں نمائندگی دینا ہے تاکہ ان کی صلاحیتوں سے استفادہ کرتے ہوئے بہتر پالیسیاں تشکیل دی جا سکیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک پر امن ملک ہے اور ہمارے نوجوانوں کو اپنے عمل سے دُنیا بھر میں اپنی امن پسندی ثابت کرنی ہے اور پاکستان کا امیج بہتر بنانا ہے۔ صوبائی وزیر نے مختلف یونیورسٹیوں سے آئے طلبہ کو تاکید کی کے وہ کانفرنس کے دوران قیام امن اور بین الصوبائی ہم آہنگنی سے متعلق مباحث میں بڑھ چڑھ کے حصہ لیں اور متعلقہ مسائل کے حل کے لیے اپنی تجاویز پیش کریں اُنھوں نے مختلف صوبوں کے نمائندگان کو یقین دلایا کہ اُن کی آراء نہ صرف حکومتی سطح پر زیر بحث لائی جائیں گی بلکہ قابل عمل تجاویز کو پالیسی کا حصہ بنایا جائے گا۔

جنرل شفاعت نے کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا موجودہ حالات میں نیشنل یوتھ کانفرنس کا انعقاد بین الصوبائی ہم آہنگنی کے ساتھ ساتھ نوجوان نسل کو ملکی ترقی میں ان کے کردار سے روشناس کروانے کی ایک بہترین کاوش ہے اور ایسی کاوشیں مستقبل میں بھی جاری رہنی چاہییں۔کانفرنس کے چیف ایگزیکٹو آفیسر نسیم اچکزئی نے طلبہ کو کانفرنس کے اغراض و مقاصد سے آگاہ کیا اور حکومت پنجاب کے بھر پور تعاون پرصوبائی وزیر کا شکریہ ادا کیا۔ آخر میں صوبائی وزیر نے ملک کے مختلف حصوں سے آئے طلبہ و طالبات کے ساتھ گروپ فوٹو بنوائی اور انھیں محکمہ کھیل و اُمور نوجوانان کی جانب سے پنجاب انٹرنیشنل سوئمنگ کمپلیکس میں عشائیے کی دعوت دی۔ اس موقع پر مختلف ثقافتی پروگرام بھی پیش کیے گئے۔
وقت اشاعت : 12/02/2018 - 18:05:39

Your Thoughts and Comments