مصباح الحق کی جانب سے اوپننگ بلے باز فخر زمان کا دفاع

فخر کی بیٹنگ اوسط 47 ہے، اتنی بہترین اوسط والے بلے باز کو کسی صورت نظرانداز نہیں کیا جا سکتا: قومی ٹیم کے ہیڈ کوچ و چیف سلیکٹر کا اعلان

muhammad ali محمد علی بدھ اکتوبر 23:16

مصباح الحق کی جانب سے اوپننگ بلے باز فخر زمان کا دفاع
لاہور(اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 9اکتوبر2019ء) مصباح الحق کی جانب سے اوپننگ بلے باز فخر زمان کا دفاع، قومی ٹیم کے ہیڈ کوچ و چیف سلیکٹر کا کہنا ہے کہ فخر کی بیٹنگ اوسط 47 ہے، اتنی بہترین اوسط والے بلے باز کو کسی صورت نظرانداز نہیں کیا جا سکتا۔ قومی کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ مصباح الحق نے سری لنکا کے ہاتھوں ٹی ٹونٹی پاکستانی ٹیم کے وائٹ واش کے بعد پریس کانفرنس کے دوران بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہم سری لنکا کو کمزور ٹیم سمجھ رہے تھے، میں نے ٹیم کا انتخاب کیا ہے اورمیں جوابدہ ہوں۔

انہوں نے کہا کہ میں شکست کی ذمہ داری کو قبول کرتا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ ٹیم کی کارکردگی پر حیران ہوں، اسی ٹیم نے میچز جیتے ہیں۔ کچھ صحافیوں کی جانب سے جارح مزاج بلے باز فخر زمان کو تنقید کا نشانہ بنانے پر مصباح الحق نے ان کا دفاع کیا۔

(جاری ہے)

مصباح الحق نے کہا کہ فخر زمان کی بیٹنگ اوسط 47 ہے، ایسے میں کیسے انہیں نظرانداز کیا جا سکتا ہے۔ خیال رہے کہ سری لنکا کی ٹیم نے آخری میچ میں 13رنز سے کامیابی حاصل کرکے پاکستان کےخلاف ٹی ٹونٹی سیریز میں وائٹ واش مکمل کرلیا۔

یہ پہلا موقع ہے جب پاکستان کو ٹی ٹوئنٹی سیریز میں کلین سوئپ کی شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا ہے۔ سری لنکا کی تیسرے درجے کی ٹیم سے بدترین شکست کھانے پر قومی ٹیم کے کھلاڑیوں اور مینیجمنٹ کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ واضح رہے کہ تیسرے ٹی20 کےلئے پاکستانی ٹیم میں احمد شہزاد کی جگہ حارث سہیل، عمر اکمل کی جگہ افتخار احمد اور محمد حسنین کی جگہ عثمان خان شنواری کو شامل کیا گیا ہے۔

میچ کےلئے سری لنکن ٹیم میں داسن شناکا (کپتان)، دانوشکا گناتھیلاکا، سدیرا سماراوکرانا (وکٹ کیپر)، بھنوکا راجاپکسا، انجیلو پریرا، اوشادا فرنانڈو، وانندو ہسارنگا، لہیرو مدوشانکا، لکشن سنڈیکان، کوس راجیتھا اور لہیرو کمارا شامل ہیں جبکہ پاکستانی ٹیم سرفراز احمد (کپتان)، فخر زمان، بابراعظم، حارث سہیل، افتخار احمد، آصف علی، عماد وسیم، شاداب خان، وہاب ریاض، محمد عامر اور عثمان شنواری پر مشتمل تھی ۔ سری لنکا نے پہلے کھیلتے ہوئے پاکستان کو 148 رنز کا ہدف دیا تھا۔ تاہم پاکستانی بلے باز ہدف کے تعاقب میں 134 رنز ہی بنا سکے۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 09/10/2019 - 23:16:50

Your Thoughts and Comments