ٹوکیو اولمپکس ملتوی: جاپان کو 5.8 ارب ڈالر نقصان کا خدشہ

سٹیڈیمز،دیگرسہولیات کی دیکھ بھال و مرمت اور گیمز کی نئے سرے سے تیاری کیلئے3.8 ارب ڈالر درکار،دیگر معاشی نقصانات کی مالیت بھی 2ارب ڈالرز ہوگی

Zeeshan Mehtab ذیشان مہتاب جمعرات مارچ 15:40

ٹوکیو اولمپکس ملتوی: جاپان کو 5.8 ارب ڈالر نقصان کا خدشہ
ٹوکیو (اردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔26مارچ2020ء ) کرونا کی تباہ کاریوں کی وجہ سے اولمپکس2020ء کے التوا کی وجہ سے میزبان ملک جاپان کو 5.8ارب ڈالر کے بھاری نقصان کے خدشہ کا اظہار کیا جا رہا ہے ۔ اولمپکس 2020ء کے میزبان جاپان نے میگا ایونٹ کی تیاریوں کے لئے تیس ارب ڈالر کے قریب اخراجات کر رکھے ہیں جب کہ جاپان کی کنسائی یونیورسٹی کے اعزازی پروفیسر اور معروف ماہر معاشیات کاتسوہیرو میاموتو نے کہا ہے کہ ٹوکیو اولمپکس کے انعقاد میں ایک سالہ تاخیر سے 5.8 ارب ڈالرز کا بھاری نقصان ہو سکتا ہے ۔

رپورٹ کے مطابق صرف سٹیڈیمز اور ان سے منسلک دیگر سہولیات کی دیکھ بھال و مرمت اور گیمز کی نئے سرے سے تیاری کیلئے 3.8 ارب ڈالر درکار ہوں گے جب کہ دیگر معاشی نقصانات کی مالیت بھی دو ارب ڈالرز تک جا پہنچے گی۔

(جاری ہے)

رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ سیاحت میں کمی اور صارف کا خرچ محدود ہونے کے نتیجے میں جاپان کی مجموعی معیشت مزید متاثر ہو سکتی ہے ۔یاد رہے کہ دنیا کی ایک تہائی آبادی کو گھروں تک محدود کردینے والے کورونا وائرس سے مجموعی طور پر اب تک تقریباً 21 ہزار اموات ہوچکی ہیں جبکہ اس وائرس کا شکار بننے والے افراد کی تعداد 4 لاکھ 74 ہزار سے تجاوز کر گئی ہے۔

وبا سے سب سے بری طرح متاثر ہونے والے ملک اٹلی میں ہلاکتوں کی تعداد 7 ہزار 500 سے بھی تجاوز کرگئی ہے جہاں مجموعی طور پر 74 ہزار 386 کورونا کیسز سامنے آچکے ہیں۔ دنیا میں وائرس سے سب سے زیادہ متاثرہ ملک چین رہا، جہاں متاثرین کی تعداد 81 ہزار سے زائد تھی اس کے بعد اٹلی جہاں یہ تعداد 74 ہزار جبکہ اس کے بعد امریکا 69 ہزار سے زائد متاثرین کے ساتھ تیسرے اور اسپین 49 ہزار سے زائد متاثرین کے ساتھ چوتھے نمبر پر تھا۔ان ممالک کے علاوہ جرمنی میں 37 ہزار سے زائد متاثرین، ایران میں 27 ہزار متاثرین اور فرانس 25 ہزار متاثرین رپورٹ ہوئے ہیں، ان کے بعد سوئیزر لینڈ، برطانیہ، شمالی کوریا اور نیدرلینڈ میں سب سے زیادہ متاثرین رپورٹ ہوئے ہیں۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 26/03/2020 - 15:40:49

Your Thoughts and Comments