بتیسویں اسکریبل چیمپئن شپ کا آغاز ہوگیا، 45 ٹاپ رینکنگ کھلاڑیوں کی شرکت

ہفتہ ستمبر 00:15

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 18 ستمبر2020ء) پاکستان اسکریبل ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام بتیسویں گلیڈی ایٹر پاکستان اسکریبل چیمپئن شپ کا جمعے کے روز آغاز ہوگیا جس میں ملک بھر سے ٹاپ 45 کھلاڑی شرکت کررہے ہیں۔چیمپئن شپ کے پہلے روز 7 سات میچز کھیلے گئے جس میں موجودہ دفاعی چیمپئن اور ٹاپ رینکنگ پلیئرز نے تقریبن ساتھ مہینے کے بعد ایک دوسرے کا سامنا کیا۔

پاکستان اسکریبل ایسوسی ایشن کے زیراہتمام 32 میں ماسٹرز چیمپیئن شپ کو کو کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے اسپانسر کیا ہے جبکہ مقامی دواساز کمپنی فارم ایوو لمیٹڈ نے ٹورنامنٹ کے لیے کراچی میں اپنے گیسٹ ہاس میں جگہ فراہم کی ہے۔چیمپئن شپ کے منتظمین اور اسپانسرز کے مطابق کرونا کی وبا کے دوران اگرچہ پاکستانی کھلاڑیوں نے ملکی اور بین الاقوامی اسکریبل مقابلوں میں حصہ لیا ہے لیکن یہ چیمپئن شپ سات مہینوں میں پہلا ٹورنامنٹ ہے جہاں پر پاکستان کے 45 صف اول کے کھلاڑی ایک دوسرے کے آمنے سامنے بیٹھ کر مقابلہ کر رہے ہیں ۔

(جاری ہے)

چمپین شپ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ہوئے پاکستان اسکریبل ایسوسی ایشن کے ڈائریکٹر یوتھ پروگرام اور نائب صدر طارق پرویز نے تمام کھلاڑیوں کو کھیل کے انعقاد پر مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ سات مہینوں کے بعد یہ پہلا موقع ہے کہ وہ ایک دوسرے کے آمنے سامنے بیٹھ کر ایک دوسرے کا مقابلہ کر رہے ہیں اس لئے انہیں تمام احتیاطی تدابیر اور ایس او پیز کا خیال رکھنا چاہیے۔

طارق پرویز کا کہنا تھا کہ گزشتہ سات مہینوں میں پاکستانی کھلاڑیوں نے دنیا بھر میں ہونے والے آن لائن گیمز نے حصہ لیا ہے جبکہ ان کی ایسوسی ایشن مسلسل ہفتہ وار آن لائن گیمز منعقد کرائے ہیں جس کے نتیجے میں کھلاڑیوں کی کی تیاری اچھی طرح سے ہو چکی ہے لیکن اس چیمپئین شپ میں امید ہے کہ نیا ٹیلنٹ ابھر کر سامنے آئے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ اس سال ہونیوالی چیمپئن شپ کے مقابلے کسی اسکول یا تعلیمی ادارے کے بجائے فارمیوو فارماسیوٹیکل کے گیسٹ ہاس میں منعقد کیئے جارہے ہیں تاکہ کورونا وائرس سے بچا کے لیے ممکنہ حد تک احتیاطی تدابیر اختیار کی جاسکیں۔

انہوں نے کہا کہ پی ایس اے پاکستان کا واحد اور پہلا اسکریبل کلب ہے جو دو دہائیوں سے مختلف نوعیت کے مقابلے منعقد کراتا آرہا ہے تاہم کورونا وائرس کی وبا کے پیش نظر پاکستان اسکریبل چیمپئن شپ اس سال کی پہلی سرگرمی ہوگی جس میں ملک بھر سے 45 ٹاپ رینکنگ پلیرز شرکت کر رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ایسے کھیلوں کے انعقاد کا مقصد خاص طور پر نوجوان کھلاڑیوں کو عالمی مقابلوں کے لئے تیار کرنا ہے۔

اس موقع پر فارمیوو فارماسیوٹیکل کمپنی کے نمائندے زبیر احمد صدیقی نے کہا کہ انکا ادارہ جسمانی صحت کے ساتھ ساتھ دماغی صحت کے لئے ہونیوالی سرگرمیوں کی بھرپور حوصلہ افزائی کرتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اسکریبل ایسوسی ایشن کے ساتھ چیمپئن شپ کے انعقاد کے لیے تعاون کرنے کا بنیادی مقصد ملک میں مثبت اور صحت مند سرگرمیوں کو فروغِ دینا ہے۔افتتاحی تقریب سے ٹورنامنٹ ڈائریکٹر حسان ہادی خان اور مقامی دواساز کمپنی کے ڈائریکٹر کمرشل منصور خان نے بھی خطاب کیا۔ٹورنامنٹ کے دوران 27 میچز کھیلے جائیں گے جبکہ ٹورنامنٹ کے سیمی فائنل اور فائنل اتوار کی شام چار ایوو کے کراچی میں واقع گیسٹ ہاس میں منعقد ہوں گے۔

مزید متعلقہ خبریں پڑھئیے‎ :

وقت اشاعت : 19/09/2020 - 00:15:21

Your Thoughts and Comments