بیانکا آندریسکوکا یو ایس اوپن ٹینس میں شاندار کلک

Bianca Andreescu Makes History At 2019 Us Open

2000ءکی صدی میں پیدا ہونے والی پہلی ٹینس کھلاڑی بنیں جس نے گرینڈسلیم جیتا

Arif Jameel عارف‌جمیل جمعرات ستمبر

Bianca Andreescu Makes History At 2019 Us Open
بیانکا آندریسکو 8ستمبر2019ءکو کینیڈا کی مرد خواتین ٹینس کھلاڑیوں میں وویمنز سنگل کا گرینڈ سلیم ٹائٹل جیت کر تاریخ کی پہلی کینیڈین کھلاڑی بن گئیں۔ 2000ءکی صدی میں پیدا ہونے والی پہلی ٹینس کھلاڑی جس نے گرینڈسلیم جیتا۔ یو ایس اوپن کا فائنل مقابلہ جیتنے کے بعد درجہ بندی میں 5ویں نمبر پرآ گئیں۔ بیانکا آندریسکو سے ایک انٹرویو میں جیت کے بارے میں تاثرات دینے کیلئے کہا گیا تو کینیڈین سٹار بیانکا آندریسکونے کہا " اس ایک کلک نے میری زندگی بدل دی ©"۔

انکو اس قبل اتنے بڑے ٹورنامنٹ کا فائنل کھیلنے کا کوئی تجربہ نہیں تھا۔ پہلی دفعہ پہنچیں اور اپنے ملک کیلئے جیت کا جھنڈا تھام لیا۔ سال کا چوتھا اور آخری گرینڈ سلیم یو ایس اوپن ٹینس ٹورنامنٹ 2019ءکا 139واں ایڈیشن اگست کے آخری ہفتے میں نیویارک امریکہ میں شروع ہوا۔

(جاری ہے)

حسب روایت بڑے مرد و خواتین کے ناموں کے ساتھ مقابلے میں وہ کھلاڑی بھی شامل تھے جنہوں نے اُن بڑے ناموں کے ساتھ مقابلہ کرنا ہو تا ہے اور اگر اُن بڑے کھلاڑیوں میں سے کسی کو نئے یا کم درجہ بندی والے کھلاڑی سے شکست ہو جائے تو اُسکے نام کو چار چاند لگ جاتے ہیں۔

خواتین کا فائنل: مردوں کے فائنل میں تو ایسا نہ ہو سکا اور رافیل نڈال جیت گئے لیکن اس دفعہ یو ایس اوپن ٹینس کے خواتین کے فائنل میں کچھ ایسا ہی ہوا ۔کامیابیوں کے پہاڑ اور سب سے بڑے نام سرینا ولیم پر ضرب لگائی کینڈین اسٹا ربیانکا وانی ثے آندریسکونے اسٹیٹ سیٹ میں 6۔3،7۔5کے ساتھ شکست دے کر۔ بیانکا وانی ثے آندریسکو: رومانیہ سے تعلق رکھنے والے قابل والدین نِکو اور ماریہ آندریسکو کی بیٹی بیانکا وانی ثے آندریسکو 16ِجون 2000ءکو کینیڈا میں پیدا ہو ئی ۔

نام میں وانی ثے امریکہ کی مشہور گلوکارہ،اداکارہ اور فیشن ڈیزائنر وانی ثے لئن ولیمز کی شہرت کی وجہ سے شامل کیا۔ بیانکا آندریسکو نے 7سال کی عمر میں ٹینس کھیلنے کا آغاز کر دیا۔نصابی تعلیم اور کھیلنے کا سلسلہ جاری رہا اور اعلیٰ ٹریننگ ٹینس کے بڑے میدان میں لے آئی۔اس دوران آن لائن ہائی اسکول ڈپلومہ بھی حاصل کر لیا اوربڑے مقابلوں کے ابتدائی مرحلوں میں کامیابی بھی حاصل کر نی شروع کر دی۔

لیکن ا بھی کہیں دُور تک کواٹر فائنل میں رسائی تک کا خواب پورا ہوتا ہوا نظر نہیں آرہا تھا۔ بیانکا آندریسکو نئے کھلاڑیوں کی طر ح پُر عزم تھیں کہ ایک دفعہ اپنی صلاحیت کو مزید بہتر ٹریننگ سے ضرور اُجاگر کرنا ہے جس کا پہلا نتیجہ مارچ2019ءمیں انڈیا ویلز اوپن ٹورنامنٹ کے فائنل میں اینجلیک کر بر کو 6۔4،3۔6،6۔4 سے شکست دے کر سامنے آیا اور چند ماہ بعد اگست2019ءکے کینیڈین اوپن کے فائنل میں بھی رسائی حاصل کر لی۔

مقابلہ تھا دُنیا ِٹینس کے بڑے نام سرینا ولیم سے۔ کینیڈین اوپن کے فائنل کا مقابلہ سرینا ولیم اوربیانکاآندریسکو کے درمیان ابھی شروع ہی ہوا تھا اور پہلے سیٹ کے پوائنٹ تھے1۔3کہ19ویں منٹ میں سرینا ولیم نے کمر میں کھچاﺅ کے باعث مقابلے سے دستبرداری کا اعلان کر دیا اور ریٹائر ہرٹ ہونے کی وجہ سے جیت کا فیصلہ بیانکا وانی آریسکو کے حق میں آگیا ۔

1969ءمیں فیا اربن کے بعد پہلی کینیڈین خاتون بنی جس نے سنگلز میں کینیڈا اوپن جیتا۔ لیکن جیت کا مزہ کرکرہ تھا کیونکہ نام بے نام ہی رہا اور اگلا قدم تھا یوایس اوپن ٹینس کی طرف۔ بیانکا آندریسکو نے راﺅنڈ کے چار میچ جیتے اور کواٹر فائنل میں بلجیم کی حریف کھلاڑی ایلیسی مارٹن یزکو ایک سخت مقابلے کے بعد 3۔6،6۔2،6۔3سے بھی میچ ہرا دیا۔بڑ ے ٹورنامنٹ کے سیمی فائنل میں بلند حوصلہ ٹین ایج کھلاڑی بیانکا آندریسکو کے سامنے سوئیز ر لینڈ کی کھلاڑی تھی اور مقابلہ سخت۔

دونوں کے حق میں بھی میچ رہا اور اپنے حریف سے خوف بھی کہ کہیں یہ میچ پوائنٹ دوسرے کے حق میں نہ ہو جائے اور پھر آخرکار بیانکا آندریسکو کے حق میں ہو گیا اور کامیابی حاصل کی 7۔6،7۔5سے۔ بیانکا وانی ثے آندریسکوبمقابلہ سرینا ولیم: سرینا ولیم ٹینس کورٹ میں اپنے خواب کو حقیقت میں بدلنے کیلئے داخل ہوئیں۔وہ23گرینڈ سلام اپنے نام کر چکی تھیں اور اس فائنل میں جیت کر آسٹریلیا کی مارگریٹ کورٹ کے24ٹائٹلز کا ریکارڈ برابر کرنے کی خواہش رکھتی تھیں۔

دوسری طرف پہلی دفعہ ایک بڑے گرینڈ سلیم کے فائنل میں پہنچنے والی 5 فُٹ 7انچ قد کی وہ نوجوان کھلاڑی لڑکی کھڑی تھی جو جانتی تھی کہ آج آنکھیں کھول کر کھیلا تو شکست ہے اور دل لگا کر کھیلا تو فتح۔ سرینا ولیم کا خواب اور خواہش اگلے گرینڈ سلیم کیلئے رہ گئی اور بیانکا وانی ثے آندریسکوجس نے کینیڈین اوپن میں سرینا ولیم کےخلاف مقابلہ جیتنے کے بعد اپنے نام کو بے نام سمجھا یو ایس اوپن کے فائنل میں سرینا ولیم کو ہی باقاعدہ بھرپور شکست دے کر ٹینس کی دُنیا میں اپنے نام کو چار چاند لگتے دیکھا۔

مردوں کا فائنل: یو ایس اوپن میں مردوں کے فائنل میں مقابلہ بڑے کھلاڑی رافیل نڈال کا 23سالہ روسی نوجوان ڈینیل مدیدوف سے تھا جو پہلی دفعہ گرینڈ سلیم فائنل میں پہنچااور رنر اَپ رہا۔رافیل نڈال نے 19واں گرینڈ سلیم جیتااور اب وہ ایک گرینڈ سلیم پیچھے ہیں راجر فیڈر کے 20 کے ریکارڈ سے۔ "آگے کھیلتے ہیں دیکھتے ہیں اور ملتے ہیں "۔

مزید مضامین :

Your Thoughts and Comments