سری لنکا کی سکاٹ لینڈکو بھی شکست

Sri Lanka Ki Scotland Ko Bhi Shikast

سنگاکارا کی رواں ورلڈکپ میں مسلسل چوتھی سنچری۔۔۔۔ سٹار لنکن بیٹسمین نے کئی ریکارڈز توڑڈالے، ذمہ دارانہ بیٹنگ کا تاریخی مظاہرہ

Ejaz Wasim Bakhri اعجاز وسیم باکھری جمعرات مارچ

Sri Lanka Ki Scotland Ko Bhi Shikast

آئی سی سی کرکٹ ورلڈکپ میں گزشتہ روز گر وپ اے کے میچ میں سری لنکا نے سکاٹ لینڈ کو 148 رنز سے ہرا دیا۔ گزشتہ روز ہوبارٹ میں کھیلے گئے میچ میں سری لنکا نے کامیابی تو حاصل کی لیکن یہ کامیابی انتی اہمیت کی حامل نہیں تھی جتنی اس میچ میں سنگاکارا کی ایک اور سنچری اہمیت کی حامل ہے۔ سنگاکارا نے سکاٹ لینڈ کیخلاف سنچری سکور کرکے نہ صرف اپنی ٹیم کی جیت میں اہم کردار ادا کیا بلکہ وہ رواں ورلڈکپ میں لگاتار چار سنچریاں بھی بنانے میں کامیاب ہوگئے ہیں۔ کمار سنگاکارا نے لگاتار تیسری سنچری بنا کر پاکستانی ظہیر عباس اور سعید انور سے لگاتار سنچریاں بنانے کا ورلڈ ریکارڈ چھین لیا ہے۔سنگاکارا نے ورلڈ کپ میں سکاٹ لینڈ کے خلاف میچ میں 124 رنز کی شاندار اننگ کھیل کر لگاتار چوتھی سنچری بنا کر عالمی اعزاز اپنے نام کیا۔

(جاری ہے)

وہ ناصرف ورلڈ کپ بلکہ ایک روزہ کرکٹ کی تاریخ میں بھی لگاتار چار سنچریاں بنانے والے دنیا کے پہلے بلے باز بن گئے ہیں جبکہ یہ ان کے کیریئر کی 25ویں سنچری تھی۔وہ اب تک ورلڈ کپ کے چھ میچوں میں 464 رنز بنا کر سب سے زیادہ رنز بنانے والے بلے باز بھی ہیں۔سنگاکار نے اس سے قبل بنگلہ دیش، انگلینڈ اور آسٹریلیا کے خلاف بھی تھری فیگر اننگ کھیلی تھی جہاں ان کا سکور بالترتیب 105، 117 ناٹ آؤٹ اور 104 رہا۔اس سے قبل پاکستان کے ظہیر عباس اور سعید انور سمیت ہرشل گبز، اے بی ڈی ویلیئرز، کوئنٹن ڈی کوک اور روس ٹیلر کو بھی لگاتار تین سنچریاں بنانے کا اعزاز حاصل تھا۔یہ اعزاز سب سے پہلے ظہیر عباس نے 1982 میں ہندوستان کے خلاف لگاتار تین میچوں میں تین سنچریاں بنا کر حاصل کیا تھا۔اس کے بعد سعید انور نے شارجہ میں سری لنکا اور ویسٹ انڈیز کے خلاف لگاتار تین سنچریاں سکور کی تھیں۔

دوسری طرف ورلڈ کپ میں اب تک کھیلے گئے میچوں کے بعد بیٹنگ کے شعبے میں کمار سنگاکارا اور باؤلنگ میں سکاٹ لینڈ کے جوش ڈیوے سرفہرست ہیں۔ میگا ایونٹ میں جہاں ایک طرف ٹیموں کے درمیان عالمی ٹائٹل کیلئے جنگ جاری ہے وہیں پر کھلاڑی بھی بیٹنگ و باؤلنگ کے شعبے میں ایک دوسرے پر سبقت حاصل کرنے کیلئے سرتوڑ کوششوں میں مصروف ہیں، بیٹنگ کے میدان میں سری لنکا کے کمار سنگاکارا چھائے ہوئے ہیں، انہوں نے اب تک 6 میچوں میں 496 رنز بنا رکھے ہیں جس میں ان کی چار شاندار سنچریاں بھی شامل ہیں۔گزشتہ روز کھیلے گئے میچ کی سمر ی کچھ یوں ہے کہ سری لنکا نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا اور مقررہ 50 اوورز میں 9 وکٹوں کے نقصان پر 363 رنز بنائے، 21 کے مجموعی اسکور پر لاہیرو تھریمانے کے کیچ آوٴٹ ہونے کے بعد کمار سنگاکارا اور دلشان نے ذمہ دارانہ بیٹنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے 195 رنز کی شاندار شراکت قائم کی، کمار سنگاکارا نے ورلڈ کپ میں مسلسل چوتھی سنچری اسکور کرکے ایک روزہ میچوں کی نئی تاریخ رقم کی اور 95 گیندوں میں 124 رنز کی شاندار اننگز کھیل کر کیچ آوٴٹ ہوئے جب کہ دلشان نے بھی اسکاٹ لینڈ کے بولروں کی خوب دھلائی کرتے ہوئے 104 رنز کی عمدہ اننگز کھیلی۔سری لنکا کے مایہ ناز بلے باز جے وردھنے اس میچ میں بھی زیادہ اسکور نہ کرپائے اور فقط 2 رنز بنا کر 244 کے مجموعے پر پویلین لوٹ گئے جب کہ کپتان اینجلو میتھیوز 51 رنز کی جارحانہ اننگز کھیل کر کیچ آوٴٹ ہوئے، دیگر کھلاڑیوں میں لاہیرو تھریمانے 4، کوسال پریرا 24، تھسارا پریرا 7، سیکوگے پراسنا 3 اور لستھ ملنگا ایک بنا کر آوٴٹ ہوئے۔ اسکاٹ لینڈ کی جانب سے جوش ڈیوی نے عمدہ بولنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے 3 وکٹیں حاصل کی، الیسڈیئر ایونس اور رشی بیرنگٹن نے 2،2 جب کہ روب ٹیلر میٹ میکن نے ایک، ایک کھلاڑیوں کو آوٴٹ کیا۔اسکاٹ لینڈ کی ٹیم 364 رنز کے ہدف کے تعاقب میں 44ویں اوور میں 215 رنز بنا کر آوٴٹ ہوگئی، پہاڑ جیسے ہدف کے تعاقب میں اسکاٹ لینڈ کی ٹیم آغاز سے ہی مشکلات کا شکار رہی اور فریڈے کولمین اور پریسٹن مومسن کے علاوہ کوئی بھی اسکاٹش بلے باز سری لنکن بولروں کا زیادہ دیر تک سامنا نہ کرسکا، فریڈے کولمین 70 اور پریسٹن مومسن 60 رنز بنا کر آوٴٹ ہوئے، دیگر کھلاڑیوں میں کیلم میکلوڈ 11، میٹ میکن 19، رشی بیرنگٹن 29، مائیکل لیسک 2، میتھیو کراس 7، روب ٹیلر 3 اور جوش ڈیوی 4 رنز بنا کر پویلین لوٹے۔ سری لنکا نے نووان کلاسیکرا اور دشمانتھا چمیرا نے شاندار بولنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے 3،3 وکٹیں حاصل کیں، لستھ ملنگا کے حصے میں 2 وکٹیں آئیں جب کہ تھسارا پریرا اور دلشان نے ایک، ایک کھلاڑی کو آوٴٹ کیا۔ بہترین بلے بازی پر کمار سنگاکارا کو میچ کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔

مزید مضامین :

Your Thoughts and Comments