تجربہ کار زمبابوین ٹیم کا آج پردیسیوں پر مشتمل متحدہ عرب امارات ٹیم سے مقابلہ

Tajarabakar Zimbabwe Team Ka Aaj Pardesiyoon Per Mushtamil Uae Team Se Muqabla

وارم اپ میچز میں سری لنکا کیخلاف اپ سیٹ کامیابی ، پہلے راؤنڈ میچ میں جنوبی افریقہ کیخلاف شاندار کھیل سے زمبابوے اب کمزور حریف نہیں رہا

Ejaz Wasim Bakhri اعجاز وسیم باکھری جمعرات 19 فروری 2015

کرکٹ ورلڈکپ 2015ء مکمل آب و تاب کے ساتھ جاری ہے۔ ایونٹ میں اب تک ہونیوالے میچز میں تقریباً تمام بڑی ٹیموں نے توقعات کے مطابق کامیابیاں حاصل کیں ہیں تاہم آئرلینڈ نے ویسٹ انڈیز کو پہلے میچ میں شکست دیکر ایونٹ کا اب تک کا سب سے بڑا اپ سیٹ کیا ہے۔ ورلڈکپ میں آٹھ ٹاپ ٹیمیں تو شریک ہی ہیں ان کے ساتھ ساتھ چھ کمزور ٹیمیں بھی شرکت کررہی ہیں۔ گوکہ ٹورنامنٹ میں ابھی تک زیادہ میچز نہیں ہوئے لیکن یہ بات واضح ہوگئی ہے کہ اس بار چھوٹی اور کمزور ٹیموں کو کمزور سمجھنا بے وقوفی ہوگی۔ آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ میں ورلڈکپ کے میچز ہورہے ہیں اور انتظامیہ نے تمام گراؤنڈز کی پچز کو بیٹنگ وکٹوں میں تبدیل کردیا ہے۔ بیٹنگ وکٹ پر چھوٹی ٹیم بڑی بن جاتی ہے اور بڑی ٹیم بھی چھوٹی ٹیم کے برابر کھڑی ہوتی ہے ، یہی وجہ ہے کہ ویسٹ انڈیز تین سو سے زائد رنز کرکے بھی اپ سیٹ شکست کھا گئی۔

(جاری ہے)

میگاایونٹ میں ابھی بہت کچھ باقی ہے، ابھی کمزور ٹیموں کے مضبوط ٹیموں کے ساتھ میچز بھی آنے ہیں جن کے بارے میں عموماً پہلے ہی سے رائے قائم کرلی جاتی ہے کہ یہ میچ یکطرفہ ہوگا لیکن اس بار ایسا نہیں ہے، آئرلینڈ کی ویسٹ انڈیز کیخلاف کامیابی ، وارم اپ میچز میں زمبابوے کی سری لنکا کو اپ سیٹ شکست اور سکاٹ لینڈ کی نیوزی لینڈ کیخلاف کارکردگی سے واضح پیغام مل گیا ہے اب میچز میچز یکطرفہ نہیں ہونگے اور یہی کرکٹ کا حسن ہے کہ جب ٹیمیں ایک دوسرے کے مدمقابل آتی ہیں تو شائقین بھی بور نہیں ہوتے اور مقابلہ بھی دیکھنے کو ملتا ہے۔ میگا ایونٹ میں آج متحدہ عرب امارات زمبابوے کیخلاف پہلی بار میدان میں اترنے جارہی ہے۔ گوکہ زمبابوے نے وارم اپ میچ میں سری لنکا کو شکست دی اور دوسال قبل پاکستان کو ٹیسٹ میچ میں ہرایا لیکن زمبابوے کو متحدہ عرب امارات کو کمزور حریف نہیں سمجھنا چاہئے۔ یواے ای کی ٹیم میں پاکستانی، سری لنکن اور بھارتی تارکین وطن شامل ہیں اور ان تین ممالک سے نکلا ہوا کرکٹ کا ٹیلنٹ کوئی معمولی نہیں ہوتا۔ گوکہ متحدہ عرب امارات کی ٹیم آن پیپر کمزور ہے لیکن اس ٹیم کو آسان نہیں لیا جاسکتا، زمبابوے ٹیم کے پاس اچھے کھلاڑی ہیں جو اچھی کرکٹ کھیلتے ہیں لیکن ون ڈے مقابلوں میں ہرٹیم کا ایک اچھا دن ہوتا ہے، آج کا میچ یقینی طور پر دیکھنے کا لائق ہوگا اور دلچسپ مقابلے کی توقع رکھی جاسکتی ہے۔یہ دونوں ٹیمیں پاکستان کے پول میں شامل ہیں اور پاکستان نے ان دونوں کے ساتھ مقابلہ کرنا ہے، بھارت کیخلاف شکست کے بعد قومی ٹیم پریشر میں ہے اور ان دو کمزور ٹیموں کے ساتھ ساتھ پاکستان نے آئرلینڈ جیسی خطرناک ٹیم اور ویسٹ انڈیز اور جنوبی افریقہ جیسی مضبوط ٹیموں کے ساتھ بھی مقابلہ کرنا ہے ، ایسے میں پاکستان کو کوارٹرفائنل تک رسائی حاصل کرنے کیلئے محنت کرنا ہوگی اور کم از کم آئرلینڈ، زمبابوے اور یواے ای کیخلاف یکطرفہ کامیابیاں حاصل کرنا ہونگی کیونکہ اگر پاکستان ان کمزور ٹیموں کیخلاف مشکل حالات میں جاکر کامیابی حاصل کرے تو یہ پاکستانی ٹیم کے معیار کی فتوحات نہیں ہونگی۔

مزید مضامین :

Your Thoughts and Comments