ورلڈکپ میں پہلا ریسٹ ڈے ،بھارت،نیوزی لینڈ اب تک ناقابل شکست

World Cup Main Pehla Rest Day

سنگاکارا بیٹنگ،ساؤتھی باؤلنگ میں سرفہرست ، کرس گیل کی سب بڑی اننگز

Ejaz Wasim Bakhri اعجاز وسیم باکھری منگل مارچ

World Cup Main Pehla Rest Day

کرکٹ ورلڈکپ پوری آب و تاب کے ساتھ جاری ہے۔ پاکستانی ٹیم میگاایونٹ میں پہلی کامیابی حاصل کرکے دوبارہ ٹائٹل کی دوڑ میں شامل تو ہوگئی ابھی بھی ریس میں بہت پیچھے ہے۔ ون ڈے رینکنگ میں ساتویں نمبر پر موجود مصباح الیون نے ابھی بہت کچھ کرنا ہے، بدھ کو یواے ای کے ساتھ میچ قومی ٹیم کیلئے ایک آسان مقابلہ ضرور ہوگا لیکن کسی بھی صورت میں ٹیم کو اس میچ کو غیرسنجیدہ اور معمول مقابلہ نہیں سمجھنا ہوگا کیونکہ کوارٹرفائنل تک رسائی کیلئے پاکستان کو اب بقیہ تینوں میچز میں کامیابی حاصل کرنی ہے اس کے بعد ہی ٹیم عزت کے ساتھ ٹاپ ایٹ ٹیموں میں شامل ہوسکتی ہے۔ ورلڈکپ میں اب تک جن ٹیموں کی شاندار کارکردگی رہی ہے ان میں نیوزی لینڈ اور بھارت شامل ہیں۔ آسٹریلیا کو بھی نیوزی لینڈ کیخلاف شکست ہوئی جبکہ جنوبی افریقہ بھی بھارت کے ہاتھ ہار کا مزہ چکھ چکاہے۔

(جاری ہے)

ویسٹ انڈیز نے پاکستان اور زمبابوے کو شکست دی لیکن اسے جنوبی افریقہ کیخلاف بڑے مارجن سے اور آئرلینڈ کیخلاف بڑے اپ سیٹ کی شکل میں شکست ہوچکی ہے۔ پاکستانی ٹیم ایونٹ میں بھارت اور ویسٹ انڈیز کیخلاف ناکامی کا منہ دیکھ چکی ہے جبکہ سری لنکا بھی نیوزی لینڈ کیخلاف ایک میچ میں ناکام ہوچکا ہے۔ گروپ اے میں انگلینڈ کی پوزیشن کافی کمزور ہوچکی ہے اور انگلش ٹیم کے پاس چانس تو موجود ہے لیکن امکانات بہت کم ہوگئے ہیں۔ بنگلہ دیش کے پاس کوارٹرفائنل تک رسائی کے امکانات موجود ہیں لیکن انہیں انگلینڈ کیخلاف اہم میچ میں کسی بھی صورت میں کامیابی حاصل کرنا ہوگی۔ میگا ایونٹ میں ناقابل شکست بھارت اور نیوزی لینڈ ٹورنامنٹ میں خطرناک حریف بن کرسامنے آئے ہیں اور دونوں ٹیموں کو ایونٹ کیلئے فیورٹ قرار دیا جارہا ہے لیکن آسٹریلیا ، سری لنکا اور جنوبی افریقہ بھی ٹائٹل کی ریس میں نمایاں لائن میں کھڑے ہیں۔

گزشتہ روز ورلڈکپ میں بریک ڈے تھے اور کوئی میچ نہیں کھیلا گیا۔ اب تک میگاایونٹ میں 23میچز کھیلے گئے ہیں اور صرف آسٹریلیا اور بنگلہ دیش کے مابین کھیلا گیا میچ بارش کی نذر ہوا۔ اس میچ میں بنگلہ دیش کو ایک پوائنٹ ملا ہے جس کی وجہ سے بنگالی ٹیم کی کوارٹرفائنل تک رسائی کے امکانات مزید روشن ہوگئے ہیں۔ اب تک ہونیوالے 23میچز میں بے شمار اچھے اور چند منفی ریکارڈ بھی بنے ہیں۔ ورلڈکپ میں اب تک بننے اور ٹوٹنے والے ریکارڈز میں سب سے نمایاں کرس گیل کی ڈبل سنچری ہے۔ گیل نے زمبابوے کیخلاف ورلڈکپ مقابلوں کی پہلی ڈبل سنچری مکمل کرکے یہ ریکارڈ اپنے نام کیا۔گیل انفرادی سکور میں215رنز کے ساتھ نمایاں ہوگئے ہیں۔ کرکٹ کے عالمی مقابلوں میں جنوبی افریقہ کے گیری کرسٹن 188 رنز بنا کر دوسرے، بھارتی بلے باز سارو گنگولی 183 رنز کے ساتھ تیسرے، ویسٹ انڈیز کے ویوین رچرڈ 181 کے ساتھ چوتھے اور بھارتی سابق آل راونڈر کپل دیو 175 رنز بنا کر پانچویں نمبر پر ہیں۔ زمبابوے کو بری طرح دھونے والی کالی آندھی جنوبی افریقی بیٹسمینوں کے سامنے بے بس نظر آئی، ڈی ویلیئرز نے اتنی پٹائی کی کہ ورلڈ کپ کی تاریخ کا 408 رنز کا دوسرا بڑا سکور بنا ڈالا۔ اس سے قبل ورلڈ کپ 2007 کے میچ میں ویسٹ انڈیز کے میدان میں بھارت نے برمودا کے خلاف رنز کا ڈھیر لگاتے ہوئے 413 کا ٹوٹل تھمایا تھا اسی طرح 1996 میں کینیا کے خلاف سری لنکا 398 رنز بنا کر تیسرے، 2007 کے ورلڈ کپ میچ میں آسٹریلیا 377 رنزبنا کر چوتھے اور بھارت 372 رنز بنا کر 5 ویں نمبر پرہے۔ اے بی ڈیویلیئرز نے 17 چوکوں اور 6 چھکوں کی مدد سے صرف 66 گیندوں پر 162 رنز بنا کر نہ صرف ورلڈ کپ بلکہ ایک روزہ میچوں کے تیز ترین 150 رنز بھی بنا ڈالے ۔ورلڈکپ میں مہنگے ترین بولرز ویسٹ انڈیز کے فاسٹ بولر جیسن ہولڈر ہیں جنہوں نے جنوبی افریقہ کی بے رحم بیٹنگ کے سامنے ایک وکٹ حاصل کرنے کے لیے 104 رنز دے دیئے لیکن اس فہرست میں ان سے بھی زیادہ پٹنے والے بولر بھی ہیں۔

باؤلنگ شعبے میں نیوزی لینڈ اور سٹریلیا کی وکٹیں فاسٹ بولر کے لیے سازگارسمجھی جاتی ہیں اس لیے اب تک ہونے والے میچوں میں تیز رفتار بولرز نے ہی عمدہ کارگردگی کا مظاہرہ کیا ہے جن میں نیوزی لینڈ کے بولر سپیڈ سٹار ٹم ساوٴتھی ہیں جو میگاایونٹ کے چار میچز میں 13وکٹیں حاصل کرچکے ہیں جبکہ نیوزی لینڈ ہی کے بولٹ 10وکٹوں کے ساتھ دوسرے نمبر پر موجود ہیں۔ جنوبی افریقہ کے پاکستانی نژاد عمران طاہر میگاایونٹ میں 9کھلاڑیوں کا شکار کرچکے ہیں جبکہ سکاٹ لینڈ کے ڈیوی، ویسٹ انڈیز کے جیروم ٹیلر بھی نو ، نو کھلاڑی آؤٹ کرچکے ہیں، آسٹریلیا کے مچل سٹارک ، بھارت کے ایشون ، نیوزی لینڈ کے ڈینیل ویٹوری اور انگلینڈ سٹیوفین آٹھ ، آٹھ کھلاڑیوں کو پویلین کی راہ دکھا چکے ہیں۔ ٹورنامنٹ کی بہترین باؤلنگ کا اعزاز نیوزی لینڈ کے ٹم ساؤتھی کے پاس ہے، ساؤتھی نے انگلینڈ کیخلاف 33رنز کے عوض 7کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا ۔بیٹنگ میں اب تک سری لنکا کے کمار سنگاکارا 4میچز میں 268رنز بناچکے ہیں جبکہ ویسٹ انڈیز کے کرس گیل 4میچز میں 258رنز کے ساتھ دوسرے، سری لنکا کے تھریمانے 256رنز کے ساتھ تیسرے اور سری لنکا ہی کے تلکرتنے دلشان 229رنز کے ساتھ چوتھے نمبر پر موجود ہیں۔

منفی ریکارڈز کا جائزہ لیا جائے تو پاکستان نے زمبابوے کے خلاف ابتدائی دس اوورز میں 14 رنز بنائے، یہ 14 سال بعد ابتدائی 10 اوورز میں پاکستان کا کم ترین سکور ہے، اس سے قبل پاکستان نے 2001 میں اس سے کم رنز بنائے تھے۔یہ اس ورلڈ کپ کا 10 اوورز میں سب سے کم ترین سکوربھی ہے۔اس ورلڈ کپ میں 15 اوورز میں بھی کم ترین سکور بنانے کا منفرد ’ریکارڈ‘ پاکستان کے پاس ہے، پاکستان نے ابتدائی 15 اوورز میں 34 رنز بنائے۔اس سے قبل متحدہ عرب امارات نے ہفتے کو ہندوستانی ٹیم کے خلاف 15 اوورز میں 41 رنز سکور کیے تھے۔اس ورلڈ کپ میں سب سے ذیادہ گیندوں پرابتدائی 50 رنز سکور کرنے والی ٹیموں کی فہرست میں بھی پاکستان دوسرے نمبر پر فائز ہے، پاکستان نے 112 گیندوں پر 50 رنز بنائے۔اس فہرست میں پہلا نمبر متحدہ عرب امارات کا ہے جس نے ہندوستان کے خلاف 114 گیندوں پر ابتدائی 50 رنز بنائے تھے۔

مزید مضامین :

Your Thoughts and Comments