Telecom Operators Concerns can cause delay in 3g Auction

ٹیلی کام آپریٹرز کے تھری جی لائسنس کی نیلامی پر شدید اعتراضات۔۔۔ نیلامی میں مسائل پیدا ہونے کا خطرہ

Telecom Operators Concerns can cause delay in 3g Auction

ملک میں تھری جی لائسنس کی نیلامی کیلئے مدت قریب آنے پر ملک میں بڑے ٹیلی کام آپریٹرز نے وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجی کو اس سارے عمل میں اپنے اعتراضات سے آگاہ کردیا ہے اور کہا ہے کہ ان اعتراضات کی موجودگی میں نہ صرف تھری جی کی نیلامی میں مسائل پیدا ہوں گے بلکہ سارے عمل کی شفافیت اور حکومت کی شہرت بھی متاثر ہونے کا احتمال ہے.

ذرائع کے مطابق ملک کے بڑے ٹیلی کام آپریٹرز نے اپنی تشویش سے نہ صرف وزارت برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی بلکہ وزارت خزانہ اور پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی کو بھی آگاہ کرتے ہوئے ان سے ان مسائل کو تھری جی لائسنسوں کی نیلامی کے عمل کے آغاز سے قبل حل کرنے کی استدعا کی ہے،واضح رہے کہ پاکستان مسلم لیگ(ن) حکومت نے تھری جی سپیکٹرم لائسنسوں کی نیلامی کا عمل اگست میں ہر صورت شروع کرنا ہے،ملک میں بڑے ٹیلی کام آپریٹروں کی جانب سے بنیادی اعتراضات میں تھری جی لائسنسوں کی قیمت،ادائیگی، ادائیگیوں کے طریقہ کار لائسنسوں کے حصول،قیمت اور ادائیگی کے حوالے سے شرائط اور ان لائسنسوں کی تعداد جیسے معاملات شامل ہیں،ملک میں بڑے ٹیلی کام آپریٹروں کو سب سے بڑا اعتراض اس امر پر ہے کہ وہ ٹیلی کام آپریٹروں جو کہ پہلے ہی مارکیٹ میں کام کررہے ہیں اور ٹوجی سہولیات فراہم کر رہے ہیں ان کو تھری جی اور فور جی سہولیات کی فراہمی کیلئے علیحدہ سے لائسنس لینا ہوگا اس نئے لائسنس کے حصول کا مطلب یہ ہے کہ موجودہ لائسنس سے ہٹ کر بھی علیحدہ سے ایک فریم ورک تشکیل دینا پڑے گا.

ان سارے مسائل کو حل کرنے کیلئے اگر وزارت خصوصی قانون سازی کرلے تو ان مسائل کا حل ممکن ہوسکتا ہے،جسمیں پہلے سے ٹوجی لائسنس رکھنے والے ٹیلی کام آپریٹروں جو کہ تھری جی یا فور جی لائسنس کے حصول کے بھی خواہشمند ہیں کے لئے علیحدہ سے قوانین وضع کئے جاسکتے ہیں،ہر نئی سپیکٹرم کے حصول کیلئے علیحدہ سے نئے لائسنس کا حصول نہ صرف ٹیلی کام آپریٹروں کے مسائل کو دوگنا کردے گا بلکہ اس سے ٹیلی کام آپریٹر کمپنیوں اور حکومت کے درمیان اعتماد سازی کے فقدان میں بھی اضافہ ممکن ہے.

اسی طرح پہلے سے موجود ٹوجی یا تھری جی نیٹ ورکس کو ختم کرکے اس کی جگہ بہتر رفتار فور جی نیٹ ورک کے ڈھانچہ کو کھڑا کرنا بجائے خود ایک بڑا مسئلہ ہے جبکہ اس کے ساتھ ساتھ ٹیلی کام سہولیات کی فراہمی کے حوالے سے ٹیلی کام آپریٹروں پر عائد غیر منصفانہ ٹیکسوں کا نفاذ ہے جس کا کافی بڑا اثر ان ٹیلی کام کمپنیوں کے صارفین اور عام عوام پر پڑ رہا ہے جو کہ پہلے ہی مالی مشکلات کا شکار ہیں

(جاری ہے)

تاریخ اشاعت: 2014-03-10

Your Thoughts and Comments