بند کریں
اتوار جولائی

مزید مضامین

حالیہ تبصرے

طرق ہنی 22-06-2018 04:22:27

اسلام وعلیکم، آپ کی شائع کردہ ایک تحریر ۱۵ ناکام سٹارٹ اپس سے مندرہ کروڑ تک کا سفر، اس تحریر کو دوبارہ ایڈٹ کر کر کے میں نے اسے اپنے فیس بک گروپ، راہبر پر پوسٹ کیا ہے اگر آپ کو یہ ایڈٹنگ موزوں لگے تو مجھ سے اس کام کے لئے رابطہ کر سکتے ہیں۔ شکریہ

  مضمون دیکھئیے
اویس رضا 30-03-2018 12:41:06

مجھے شامی کے موبائل اچھے لگتے ہیں اور اردو پوائنٹ کی خبریں آسان اور اردو میں ہوتی ہیں، آسان ویپ سائیڈ ہے ٹیکنالوجی ٹپش تیمور میری ویب سائیڈ ہے

  مضمون دیکھئیے
dr anwar kama ch 06-03-2018 15:26:22

very fruit full

  مضمون دیکھئیے
Ar. Tauseef Amjad Meer. 25-01-2018 11:30:55

Its IT Technology day by day improvements, thank you for acknlowdge publicly awareness

  مضمون دیکھئیے
Shafiq rehman 31-08-2017 11:15:33

Agr yh Sach Hai to Boht hii A6i Khabr Hai Agr fake hai to Fitty Muh

  مضمون دیکھئیے
muhammad ather 11-08-2017 14:28:02

mjhe technology sikhne ka bht shok he sir

  مضمون دیکھئیے
سائنسدان اب آواز کی لہروں سے کینسر کی تشخیص کر سکتے ہیں
اس طریقہ کار کا مظاہرہ تین سال پہلے کیا گیا تھا

ڈیوک یونیورسٹی، ایم آئی ٹی اور نانیانگ ٹیکنالوجیکل یونیورسٹی کےمحققین نے آواز کی لہروں سے کینسر کی تشخیص کا کامیاب مظاہرہ کیا ہے۔ طبی جریدے Small میں شائع ہونے والی تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ یہ طریقہ کار کامیاب ثابت ہوا ہے اور اسے علاج کے مقاصد کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے۔
اس تحقیق میں شامل محققین نے بتایا کہ بائیوپسی ٹیکنیک کو کینسر کی تشخیص میں گولڈ سٹینڈرڈ کا درجہ حاصل حاصل ہے لیکن یہ کافی تکلیف دہ ہے اور اسے کینسر کے بڑھنے پر استعمال کیا جا سکتا ہے۔

نئے طریقے میں آواز کی لہریں خون کے بہاؤ کے مطابق سیٹ کی جاتی ہے۔ جیسے ہی آواز بڑھتی ہے تو دباؤ کی وجہ سے خون میں ذرات بھی آگے بڑھتے ہیں۔کینسر کا معلوم کرنے کے لیے ڈاکٹر گردش کرتے ٹیومر سیلز کو ڈھونڈتے ہیں۔ گردش کرنے والے ٹیومر سیل بڑے ٹیومر سیلز کا حصہ ہوتے ہیں، جو اس سے الگ ہوکر خون میں گردش کرنے لگتے ہیں۔ گردش کرتے ٹیومر سیل چونکہ چھوٹے ہوتے ہیں، اس لیے آواز کی لہریں انہیں الگ جمع کر تی ہے، جہاں سے ان کا تجزیہ کیا جا سکتا ہے۔
اس طریقہ کار کا مظاہرہ تین سال پہلے کیا گیا تھا۔ اب اس میں کافی بہتری لائی گئی ہے۔

یہ خبر اُردو پوائنٹ پر شائع کی گئی۔ خبر کی مزید تفصیل پڑھنے کیلئے کلک کیجئے
تاریخ اشاعت: 2018-07-03

: متعلقہ عنوان

متعلقہ مضامین