سندھ اور بلوچستان کے بعض اضلاع میں خشک سالی کا خدشہ‎ ہے، محکمہ موسمیات

سندھ اور بلوچستان کے بعض اضلاع میں خشک سالی کا خدشہ‎ ہے، محکمہ موسمیات
اسلام آباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 03 اپریل 2021ء)محکمہ موسمیات  نے کہا ہے کہ سندھ اور بلوچستان کے بعض اضلاع میں خشک سالی کا خدشہ ہے۔ اکتوبر 2020 تا مارچ 2021 کے دوران ملک میں معمول کے مقابلہ میں 33.2 فیصد کم بارشیں ہوئی ہیں جبکہ اس دوران صوبہ پنجاب میں 46.7 فیصد زیادہ بارشیں ریکارڈ کی گئی ہیں۔ محکمہ موسمیات کے مطابق گزشتہ سال اکتوبر 2020 تا مارچ 2021 کے دوران ملک میں معمول سے 33.2 فیصد کم بارشیں ہوئی ہیں اور موسم سرما کے دوران کم بارشوں کے سبب جنوبی بلوچستان و سندھ کے بعض اضلاع میں خشک سالی کی صورتحال پیدا ہونے کا خدشہ ہے۔

رپورٹ کے مطابق خشک سالی کے باعث متعلقہ اضلاع میں زراعت اور لائیو اسٹاک متاثر ہو سکتا ہے۔ اس حوالی سے محکمہ موسمیات نے خشک سالی کے بارے میں باضابطہ الرٹ جاری کیا ہے۔

(جاری ہے)

محکمہ موسمیات کے مطابق اکتوبر 2020 مارچ 2021 کے دوران بلوچستان میں معمول سے 63.3 فیصد جبکہ سندھ میں77.3 فیصد اور خیبرپختونخوا میں 44.2فیصد کم بارشیں ہوئی ہیں۔ اسی طرح اس دوران گلگت بلتستان اور کشمیر میں بھی معمول کے مقابلہ میں 19.8 فیصد کم بارشیں ریکارڈ کی گئی ہیں۔

دوسری جانب پنجاب میں معمول سے46.7 فیصد زیادہ بارشیں ہوئی ہیں۔ محکمہ موسمیات نے خبردار کیا ہے کہ بلوچستان کے اضلاع چاغی، گوادر، ہرنائی، کیچ، خاران، مستونگ، نوشکی، پشین اور پنجگور میں درمیانے درجہ کی خشک سالی کا خدشہ ہے جبکہ سندھ کے جنوبی اضلار بدین، قمبرشہدادکوٹ، میرپورخاص، عمرکوٹ، سانگھڑ، ٹھٹھہ، تھرپارکر اور سجاول میں بھی کم درجہ کی خشک سالی کا امکان ہے۔  محکمہ موسمیات نے متعلقہ شراکتداروں کو ہدایت کی ہے کہ خشک سالی سے نمٹنے کیلیے قبل از وقت اقدامات کئے جائیں جبکہ موسم کی صورتحال کے لئے محکمہ موسمیات کی اپ ڈیٹس سے رہنمائی حاصل کی جائے۔

Your Thoughts and Comments