مسلمان اللہ کی بارگاہ میں خون بہا کرعزم کر رہے ہیں کہ وہ اسلام کی سربلندی کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے، صاحبزادہ ابوالخیرمحمد زبیر

عظمت مصطفیٰ ً کے قانون 295cکو تبدیل کرنے کیلئے نت نئی سازشیں کی جارہی ہیں، نماز عید کے اجتماع سے خطاب

حیدرآباد(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 23 جولائی2021ء) جمعیت علماء پاکستان (نورانی) و ملی یکجہتی کونسل کے صدر ڈاکٹر صاحبزادہ ابوالخیرمحمد زبیر نے کہا ہے کہ مسلمان اللہ کی بارگاہ میں خون بہا کرعزم کر رہے ہیں کہ وہ اسلام کی سربلندی کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریںگے، پاکستان اسلام کے نام پر قائم ہوا لیکن یہاں پر ریاست مدینہ کا نعرہ لگا کرغریب کا استحصال کیا جارہا ہے، عظمت مصطفیٰ ؐکے قانون 295cکو تبدیل کرنے کیلئے نت نئی سازشیں کی جارہی ہیں،کشمیر میں بھارت مظلوم کشمیریوں کا عرصہ حیات تنگ کئے ہوئے اور ہمارے حکمراں بھارت کی خوشنودی میں لگے ہیں۔

(جاری ہے)

لبرٹی چوک حیدرآباد میںنماز عیدالاضحی کے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے صاحبزادہ محمد زبیر نے کہا کہا کہ آج دنیا بھر میں مسلمان سنت ابراھیمی کی پیروی کرتے ہوئے جانورں کی قربانی رہے ہیںاوراللہ کی بارگاہ میں خون بہا کرعزم کررہے ہیں کہ وہ اسلام کی سربلندی کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریںگے عید الاضحی کا اصل مقصد اپنے رب کی خوشنودی کیلئے ہر طرح کی قربانی دینے کیلئے تیار رہنا ہے حضرت ابراھیم علیہ السلام اور حضرت اسماعیل علیہ السلام نے جس طرح اللہ کے حکم کے سامنے سرتسلیم خرم کیااسی جذبہ کے ساتھ ہمیں زندگی میں احکام الہٰی کو پورا کرنے کا عہد اور عزم کرنا ہے انہوں نے کہا کہ پاکستان اسلام کے نام پر قائم ہوا لیکن یہاں پر ریاست مدینہ کا نعرہ لگا کرغریب کا استحصال کیا جارہا ہے،مہنگائی کے سونامی نے عوام کا عرصہ حیات تنگ کردیا ہے یہود ونصاریٰ اور ہنود کو خوش کرنے کیلئے اسلام شعائر اسلام اورپیغمبر اسلام کے خلاف اقدامات کئے جارہے ہیںملک میں فرقہ واریت کی آگ بھڑکانے کیلئے صحابہ کرام اور اہل بیت اطہار کی ذات پر حملے ہورہے ہیںعظمت مصطفیٰ ؐ کے قانون 295cکو تبدیل کرنے کیلئے نت نئی سازشوں کی جارہی ہیںکشمیر میں بھارت مظلوم کشمیریوں کا عرصہ حیات تنگ کئے ہوئے اور ہمارے حکمراں بھارت کی خوشنودی میں لگے ہیں اس وقت کشمیر کی جدوجہد آزادی نیا رخ اختیار کرچکی ہے ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومت پاکستان مظلوم کشمیریوں کی ادارسی کرے بین الاقومی فورم پر کشمیریوں کے حقوق کی بات کی جائے اور سرحدوں پر جاری بھارتی جارحیت کا منہ توڑ جواب دیا جائے انہوں نے کہا کہ ہمیں دنیا بھر کے مظلوم مسلمانوں کی آواز بننا چاہئے فلسطین میں اسرائیلی جارحیت کے باعث نہتے مظلوم کشمیریوں کا خون بہایا جارہا ہے،روہنگیا کے مسلمانوں کا قتل عام ہو رہا ہے بھارت میں مسلمانوں پر عرصہ حیات تنگ کردیا گیا ہے انہوں نے کہا کہ حکمرانوں نیب سے تو بچ سکتے ہیں لیکن اللہ کی پکڑ سے نہیں بچ سکیں گے اپنی صفوں سے کرپٹ خائن اور بدعنوان لوگوں کو بکال باہر کریںیہ حکمرانوں کیلئے لمحہ فکریہ ہے کہ وہ بیرونی دباؤ میں آکر اور پارٹی مصلحتوں کی خاطر انصاف کا خون نہ کریں اور ملک میں قانون کی حکمرانی کو قائم کریںتاکہ عوام کا قانون کی حکمرانی پراعتماد بحال ہو اور کسی کوقانون ہاتھ میں لینے کی ضرورت پیش نہ آئے۔

Your Thoughts and Comments