تنخواہ دار طبقہ تکلیف میں ہے، شوکت ترین کااعتراف

ہمیں نہیں معلوم کہ مہنگائی کا عالمی دبائو کب کم ہوگا ،ہوسکتاہے اگلے 2 سے 3 مہینوں میں بھی صورتحال یہی رہے، وزیر خزانہ

اسلام آبا د(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - این این آئی۔ 26 جنوری2022ء) وفاقی وزیر خزانہ شوکت ترین نے اعتراف کیا ہے کہ تنخواہ دار طبقہ تکلیف میں ہے۔میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے شوکت ترین نے کہا کہ تنخوادہ دار طبقہ واقعی اس وقت تکلیف میں ہے، سب کی آمدنی بڑھی ہے تاہم تنخواہ دار طبقہ اس وقت مشکل حالات کا سامنا کر رہا ہے۔

(جاری ہے)

انہوںنے کہاکہ اگلے چند دنوں میں ہم خصوصاً تنخواہ دار طبقے کے لیے پروگرام لے کر آرہے ہیں جس سے ان کی آمدن میں بھی اضافہ ہوگا۔انہوںنے کہاکہ ہمیں نہیں معلوم کہ مہنگائی کا عالمی دبائو کب کم ہوگا کیونکہ یہ ہمارے ہاتھ میں نہیں ہے، ہوسکتاہے اگلے 2 سے 3 مہینوں میں بھی صورتحال یہی رہے، اس لیے ہماری کوشش ہے کہ ہمارے تمام طبقوں کی آمدن بڑھائیں۔