ظالم باپ نے 3 سالہ بیٹی کو اس کی خوبصورتی کی وجہ سے جلا دیا
UrduPoint Social

ظالم باپ نے 3 سالہ بیٹی کو اس کی خوبصورتی کی وجہ سے جلا دیا

پیر مارچ 11:34 pm

عدالتی کاغذات کے مطابق ایک باپ نے اپنی 3 سالہ بیٹی کو صرف اس کے خوبصورت ہونے کی وجہ سے پیٹرول چھڑک کر آگ لگا دی۔
حادثے کے وقت بچی کی عمر 3 سال تھی۔ حادثے کی وجہ سے اس کے جسم کا 13 فیصد حصہ جل گیا تھا۔ حادثے میں بچی جان لیوا طور پر جل گئی تھی۔ بچی کے جسم پر جلنے سے مستقل نشان پڑ گئے ہیں۔باپ نے بچی کی بڑی بہن پر بھی پیٹرول چھڑک کر اسے مارا تھا مگر اسے آگ نہیں لگائی تھی۔

اس شخص کے ہمسائے میں رہنے والی پولیس آفیسر نے شور سن کر بچیوں کو بچایا۔
لڑکیوں کے باپ ایڈورڈ جون ہربرٹ نے اعتراف کیا کہ وہ بچیوں کو قتل کرنا تھا مگر اس کی دماغی حالت کی وجہ سے اس پر کئی سنگین جرائم، جیسے بچیوں کو قتل کرنے کی کوشش کرنا

خبر کی مزید تفصیل پڑھئیے

وغیرہ، کی فرد جرم عائد نہیں کی گئی۔

(خبر جاری ہے)


سپریم کورٹ آف ویسٹرن آسٹریلیا کی عدالت میں چلنے والے مقدمے کے مطابق اگست 2015 میں ڈبل ویو کے مضافات میں حادثے کے دن بچیوں کے باپ نے سارا دن منشیات استعمال کرنے اور شراب پینے میں گزارا تھا۔


حادثے کے دن ایڈورڈ نے اپنی پارٹنر کو چاقو دکھا کر مکان کو اڑانے کی دھمکی بھی دی تھی۔حادثے کے وقت ایڈورڈ نے ، انسانی بھیڑے آ رہے ہیں، کہتے ہوئے اپنی بیٹی پر پیٹرول چھڑک کر اسے آگ لگا دی۔ ایڈورڈ کے ایک ہمسائے نے حادثے کے بعد اسے کچن میں شراب پیتے دیکھا اور اس سے بچیوں کو آگ لگانے کی وجہ پوچھی تو اس بتایا کہ وہ بہت خوبصورت تھیں۔
مقدمے کی اگلی سماعت بعد میں ہوگی ۔