اب ایکسٹریم سپورٹس اورفائرفائٹنگ ایک نئے انداز سے ممکن ہوسکےگی۔ ڈرون کی مدد سے دنیا کا پہلا جمپ

اب ایکسٹریم سپورٹس اورفائرفائٹنگ ایک نئے انداز سے  ممکن ہوسکےگی۔ ڈرون ..

انگس اوگسٹکلنس نے ڈرون کی مدد سے دنیا کا پہلا پیراشوٹ جمپ کیا ہے۔ ۔ انگس کا کہنا ہے کہ لیٹویا نے خود کو ٹیکنالوجی اور اختراع کے شعبے میں ثابت کر دیا ہے۔
دنیا کا پہلا ڈرون جمپ لگانے میں اگرچہ چند سیکنڈ لگے لیکن اس کی تیاریوں میں 6 ماہ کا عرصہ لگا۔ 6 ماہ میں انگس کی حفاظت کو یقینی بنانے کے اقدامات بھی کیے گئے۔ انگس نے جس ڈرون سے جمپ کیا اس کے 28 پروپیلر تھے۔

(جاری ہے)

ڈرون چند سیکنڈ میں ہی انگس کو 330 میٹر کی بلندی پر لے گیا، جہاں سے انگس نے پیراشوٹ کی مدد سے جمپ کیا۔
جمپ کے لیے اس خصوصی ڈرون کو ایرونیس نامی کمپنی نے بنایا تھا۔ انسان کو آرام سے اٹھا لینے  ان ڈرونز کو فائر فائنٹنگ، ریسکو، ایکسٹریم سپورٹس اور تفریحی مقاصد کے لیے استعمال کیا جا سکتا ہے۔کمپنی کا کہنا ہے کہ مستقبل قریب میں اُن کی کمپنی  کے ڈرون لوگوں کی زندگی بچانے میں اہم کردار ادا کریں گے۔

وقت اشاعت : 15/05/2017 - 23:51:04

Your Thoughts and Comments