کینسر کے مریض بچے کو دوسروں سے الگ بٹھانے پر چینی استاد کو معطل کر دیا گیا

کینسر کے مریض بچے کو دوسروں سے الگ بٹھانے پر چینی استاد کو معطل کر دیا ..

کینسر کے مریض ایک بچے سے امتیازی سلوک برتنے پر چین میں ایک استاد کو معطل کر دیا گیا ہے۔ استاد نے  کینسر کے مریض بچے کو سب سے الگ تھلگ کلاس کے پیچھے  اکیلا بٹھایا ہوا تھا، استاد نے اس بچے کو عام بچوں کی طرح امتحان میں بیٹھنے کی  اجازت  بھی نہیں دی۔
لیانچینگ پرائمری سکول، چوانژو، فوجیان میں کینسر کا مریض بچہ ستمبر میں آیا تھا۔ اس سکول میں آنے کا مقصد کیموتھراپی کے دوران اپنے والدین کے قریب رہنا تھا۔

بچے کے سکول میں آنے کے بعد سے ہی زبانیں سکھانے کے استاد مسلسل کینسر کے مریض بچے کو امتیازی سلوک کا نشانہ بنا رہے تھے۔ ان کا خیال ہے کہ Non-Hodgkin lymphoma یا این ایچ ایل چُھوت کی بیماری ہے، جو مریض سے دوسروں کو لگ سکتی ہے۔ ایسا سوچنے میں سکول کے استاد تنہا نہیں، میڈیا رپورٹس کے مطابق جب سے 13 سالہ کینسر کا مریض بچہ سکول میں آیا ہے بہت سے بچوں نے سکول آنا چھوڑ دیا ہے۔

(جاری ہے)

اس کے بعد استاد نے زہو نامی بچے کو سب بچوں سے الگ تھلگ بٹھانا شروع کر دیا۔ حد تو یہ ہے کہ اسے امتحان دینے کی بھی اجازت نہیں۔ زہو نے شروع میں اپنے ساتھ ہونے والے امتیازی سلوک کے بارے میں کسی کو نہیں بتایا لیکن جب وسط مدتی امتحانات میں اسے نمبر نہیں ملے تو والدین کو اس کے ساتھ ہونے والے امتیازی سلوک کے بارے میں پتا چلا۔
زہو کے والد نے سوشل میڈیا پر اس کی الگ تھلگ بیٹھنے کی ویڈیو اور تصاویر پوسٹ کیں تو یہ وائرل ہو گئیں، جس کے بعد الیکٹرونکس میڈیا کی توجہ بھی اس خبر کی طرف مبذول ہو گئی ۔
اس خبر کے وائرل ہونے کے بعد سکول کے استاد کو معطل کر کے ان کے خلاف محکمانہ تحقیقات کا آغاز کر دیا گیا ہے۔

وقت اشاعت : 02/12/2018 - 21:06:16

متعلقہ عنوان :

Your Thoughts and Comments