فیس بک پر وائرل ہرن اور چیتوں کی تصویر کی اصل حقیقت سامنے آ گئی

فیس بک پر وائرل ہرن اور چیتوں کی تصویر کی اصل حقیقت سامنے آ گئی
فیس بک پر ایک تصویر بہت تیزی سے وائرل ہو رہی ہے۔ جس کی وجہ اس تصویر کے بارے میں بیان کی جانے والی ”دلخراش“ کہانی ہے۔ فیس بک پر ایک ہرن کی تصویر شیئر کی جا رہی ہے۔ اس ہرن کو دو چیتے کھا رہے ہوتے ہیں اور وہ سامنے دیکھ رہی ہوتی ہے۔ اس کے ساتھ ہی تصویر کے کیپشن میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ اس ہرن نے اپنے بچوں کو بچانے کے لیے انہیں بھگا دیا اور خود چیتوں کی خوراک بن گئی تاکہ اس دوران بچے محفوظ مقام تک بھاگ جائیں۔

تصویر کے میں دعویٰ کیا گیا  کہ تصویر میں ہرن اپنے بھاگتے ہوئے بچوں کو دیکھ رہی ہے۔ اس کے علاوہ یہ دعویٰ بھی کیا گیا کہ اس تصویر کو بنانے فوٹو گرافر یہ منظر دیکھ کر پھوٹ پھوٹ کر رونے لگی۔
اس تصویر کے حوالے سے اب اصل کہانی سامنے آ گئی ہے۔ اس تصویر کو بنانے والی فوٹو گرافر Allison Buttigieg نے اس منظر کی بہت سی تصاویر بنائیں تھیں۔

(جاری ہے)

یہ تصاویر 2013 میں مسائی مارا، کینیا میں بنائی گئی تھیں۔

ان تمام تصاویر کو یہاں کلک کرکے دیکھا جا سکتا ہے۔
فوٹو گرافر نے یہ بھی کہا ہے اس منظر کی تصویر اتارتے ہوئے مجھے ڈپریسڈ ہونے کی کہانی بالکل جھوٹی ہے۔ فوٹو گرافر کا کہنا تھا کہ اس کمزور اور لاچار ہرن کو چیتوں کی ماں گردن سے پکڑ کر اپنے بچوں کے پاس لے گئی تھی تاکہ وہ شکار کی پریکٹیس کر سکیں۔ جہاں تک بات ہے ہرن کے بے خوف و خطر کھڑے ہوئے کی تو اس کی وجہ شدید خوف ہے، جو چیتوں کے نرخے میں آنے کے بعد ہرن کو لاحق ہو گیا تھا۔ فوٹو گرافر نے ہرن کے بچوں والی کہانی کو بے سروپا قرار دیا۔


وقت اشاعت : 13/02/2017 - 23:38:19

متعلقہ عنوان :

Your Thoughts and Comments