بند کریں
خواتین مضامینمضامین خوش رہیں جوان رہیں

مزید مضامین

پچھلے مضامین - مزید مضامین
خوش رہیں جوان رہیں
بوٹو کس کے زہر میں خوبصورتی تلاش نہ کریں،نوجوان اور خوبصورت نظر آنا ہر مرد وعورت کی خواہش ہے ۔شوبز سے تعلق رکھنے والی شخصیات تو ہمیشہ جوان اور خوبصورت نظر آنے کیلئے کوئی پلاسٹک سرجری کرواتا ہے تو کوئی ”بوٹو کس “انجیکشن لگواتا ہے ۔

راحیلہ مغل
نوجوان اور خوبصورت نظر آنا ہر مرد وعورت کی خواہش ہے ۔شوبز سے تعلق رکھنے والی شخصیات تو ہمیشہ جوان اور خوبصورت نظر آنے کیلئے کوئی پلاسٹک سرجری کرواتا ہے تو کوئی ”بوٹو کس “انجیکشن لگواتا ہے ۔اسطرح اُنکی خوبصورتی کو دیکھتے ہوئے عام آدمی کے دل میں بھی انکی طرح نوجوان نظر آنے کی خواہش اُبھرتی ہے ۔لیکن یہ ٹریٹمنٹ کس قدر خطر ناک ہے آج ہم اس آرٹیکل میں آپ کو ان خطرات سے آگاہ کریں گے۔ عام خواتین خوبصورت نظر آنے کیلئے رنگ گورا کرنیوالی کریموں کے بعد اب بوٹو کس انجیکشن کا استعمال بھی کررہی ہیں کیونکہ رنگ گورا کرنے والی کریموں کے استعمال تک تو چہرہ نظر آتا ہے لیکن جیسے ہی استعمال ترک کیا جائے رنگت پہلے سے بھی زیادہ خراب نظر آنا شروع ہوجاتی ہے اور جلد بھی ڈھلگ جاتی ہے ۔خوبصورت نظرآنے کے جنون میں وہ یہ بات بھی نظر انداز کرجاتی ہیں کہ ”بوٹو کس “انجکشن کی صورت میں وہ ایک ایسا زہراپنے جسم میں منتقل کر رہی ہیں جو انہیں موت کے منہ تک لے جا سکتا ہے ۔دراصل فریش نظر آنے کیلئے اور جھریاں ختم کرنے کیلئے ”بوٹو کس “دوا بہت محدود مقدار میں مخصوص مقامات پر استعمال کی جاتی ہے جب یہ دوا نجیکٹ کی جاتی ہے تو یہ اعصاب سے عضلات تک پیغامات کی ترسیل روک دیتی ہے ۔جن عضلات کو دوا سے ہدف بنایاجاتا ہے وہ سکڑنے کا عمل روک دیتے ہیں ۔جن سے چہرے پر پڑی شکنیں سلوٹیں اور جھریاں دور ہوجاتی ہیں ۔ان کے استعمال سے ہونٹوں کے اوپر‘آنکھوں کے کنارے اور بھنوؤں کے درمیان کی شکنیں اور سلو ٹیں بھی دور ہوجاتی ہیں ۔اگر چہ ”بوٹو کس “کا زہر زندگی کو خطرے میں ڈال دیتا ہے ۔لیکن اسکی کم تر خوراکوں کو محفوظ سمجھتے ہوئے استعمال کیاجاتا ہے ۔البتہ اس کے لئے ضروری ہے کسی مستند ‘کو الیفا ئیڈ اور پیشہ ور ڈرما ٹولوجسٹ کی خدمات حاصل کی جائی۔کیونکہ اگر کسی ناتجربہ کار معالج بوٹو کس کروالیا تو اسکے خطر ناک نتائج بھی بھگتنے پڑسکتے ہیں مثلا عضلات ڈھلگ جائیں گے یا لٹک جائیں گے یاد یگر خطر ناک نتائج بھی سامنے آسکتے ہیں ۔اس میں کوئی شک نہیں کہ بوٹو کس کے انجکشنز آج پوری دنیا میں مقبول ہورہے ہیں ۔لیکن اس کے سائیڈ ایفکٹس بھی ہوتے ہیں ان میں بخار ‘سردرد‘سردی لگنا وغیرہ شامل ہے ۔بعض اوقات جو انجیکشن آنکھوں کے پاس لگوائے جاتے ہیں تو اسکے استعمال سے پلکیں ڈھنگ جاتی ہیں ۔بھنویں غیر ہموار ہوجاتی ہیں ۔آنکھوں میں خشکی محسوس ہو سکتی ہے اور آنسو بھی بہنا شروع ہو سکتے ہیں ۔اسی طرح اگر ہونٹوں کے پاس یہ انجکشن لگوائے جائیں تو منہ سے را ل ٹپکنا شروع ہو جاتی ہے اور ہونٹ مسکراہٹ کا تاثر دینے میں ناکام رہتے ہیں ۔وہ لوگ جو اپنے چہروں کو جھریوں سے دور رکھنے کے لئے تا دیر جوان نظر آنے کی خواہش رکھتے ہیں انہیں سال میں 2‘3باربوٹوکس انجکشنز لگوانے پڑتے ہیں اور جب یہ انجکشنز لگوانے تر ک کر دئیے جاتے ہیں جو چہرے پر شکنیں سلوٹیں دوبارہ شروع ہو جاتی ہیں اور بڑھاپا بڑی تیزی سے چہرے پر اثر دکھانا شروع کر دیتا ہے ۔اس لئے ضروری ہے کہ اپنی صحت کاخیال رکھتے ہوئے ایسی خوراک استعمال کریں جو آپکو بیماری سے اور موٹا پے سے بچائے اور آپ تادیر جوان نظر آئیں ۔یہ فطری عمل ہے کہ انسان نے بچپن سے جوانی اور جوانی سے بڑھاپے کا سفر طے کرنا ہے ۔اس میں رکاوٹ ڈالنے سے بہتر ہے کہ اپنے آپکو فطری اصولوں کے تحت پروان چڑھنے دیں خوش رہیں با اعتماد رہیں ۔ان کریموں اور انجیکشنز کا سہارا لینے کی بجائے اچھی خوراک استعمال کریں اور قدرتی تبدیلی کو دل سے قبول کریں ۔

(0) ووٹ وصول ہوئے