Haryali Or Gher Ka Rasta - Gardening Tips And Tricks For Women

ہریالی اور گھر کا راستہ - باغبانی

جمعرات اکتوبر

Haryali Or Gher Ka Rasta
ایسا مکان گھر نہیں لگتا جہاں لوگ محبت سے آباد نہ ہوں جہاں والدین اپنی اولاد کے ساتھ خوش و خرم نہ رہتے ہوں اور ایسا گھر بھی گھر نہیں لگتا جہاں پودوں کی ہریالی نہ ہو۔جہاں گلاب نہ مہکتے ہوں نہ چمپا اور چنبیلی کی مہکار نہ آتی ہو۔جو لوگ باغبانی کا نہ شوق اور ولولہ رکھتے ہوں اور نہ ہی انہیں پودوں کی حفاظت اور نگہداشت کے انداز اپنانے آتے ہوں وہ پیشہ ور مالیوں کی خدمات حاصل کرتے ہیں اور ایسے لوگوں کی بھی کمی نہیں جو تازہ پھولوں اور پھلوں کی کاشتکاری نہ کر پاتے تو مصنوعی پھولوں کے Potsتیار شدہ حالت میں گھر لے آتے ہیں۔

پلاسٹک، کپڑے،کاغذ اور نائیلوں کے میٹریل سے بنے یہ پھول پودے بھی ان کی جمالیاتی حسن کو تسکین دیتے ہیں۔ان سے بھی گھروں کو آباد کرکے وہ خوش ہو لیتے ہیں۔

(جاری ہے)


گیلریوں میں لٹکنے والے گملوں میں یا ٹوکریوں میں تازہ جڑی بوٹیاں اگائی جا سکتی ہیں۔سبزیوں کی کاشتکاری کے لئے کوئی مالی آپ کی مدد کر سکتا ہے اور آپ اپنے کچن کے بجٹ پر نظر رکھ سکتی ہیں۔

تو کیوں جھنجھٹ میں پڑتی ہیں روزانہ سبزی والے کے انتظار کے اور یا پھر خود مارکیٹ کا چکر لگانے کے،چھوٹی چھوٹی Tipsآپ کو سہولتیں دے سکتی ہیں۔اپنی یہ ماہانہ اشاعت میں باغبانی سے متعلق سیر حاصل مواد شائع کرتا ہے،ہمارے اس سلسلے کو دلچسپی سے پڑھا جاتا ہے۔
جڑوں والی سبزیاں مثلاً گاجر،چقندر،مولی،شلجم،آلو،گوبھی،پالک،میتھی،سلاد،بروکولی وغیرہ سردیوں میں آنے والی ہیں۔

آپ مختصف رقبے پر ان کی کاشت کر سکتی ہیں۔بدلتے موسم میں ان سبزیوں کی خصوصی نگہداشت رات کے وقت کرنی پڑتی ہے۔آپ پرانا جالی کا دوپٹہ ان گملوں پر ڈال سکتی ہیں تاکہ بڑے حشرات انہیں اپنی خوراک نہ بنا لیں۔
جن گھرانوں میں چینی کھانے شوق سے کھائے جاتے ہوں وہ اگر Kale,ہری پیاز اور Chop sueyکاشت کر لیں تو انہیں سردیوں میں اپنی پسندیدہ ڈشز بنانے میں آسانی رہے گی۔


کراچی میں جن جڑی بوٹیوں کو آب وہوا راس آتی ہے ان میں اوریگانو Watercressیعنی دریائی چنسر یہ سخت جان جڑی بوٹی ہے جو Tarragon،روز میری،پیج،پارسلے اور Basilبھی انتہائی مفید اور ذائقے دار بوٹیاں ہیں۔ہم انہیں پروسیڈ حالت میں خرید کر استعمال کرتے ہیں لیکن اگر ہمیں تازہ حالت میں دستیاب ہو جائیں تو یہ کئی گنا زیادہ مفید ہو سکتی ہیں۔
پاکستان کے جنوبی حصوں میں ہر دو قسم کی پیاز،ادرک اور لہسن کاشت کرنے کی موزوں اور ہموار زمین موجود ہے۔

فضا بھی سازگار ہے اگر طوفانی بارشوں کا سلسلہ طویل نہ ہوتو فصل پروان چڑھ سکتی ہے۔اسی طرح چیری ٹماٹر اور بڑے حجم کے ٹماٹر بھی اگالئے جائیں تو با آسانی گرانی پر قابو پایا جا سکتا ہے۔
Ixoraننھے منے پھول باغ کی رونق بڑھائیں
چھوٹی چھوٹی کلیوں جیسے ننھے منے یہ پھول سرخی مائل رنگ کے ہوتے ہیں اور قدرتی طور پر اپنے پتوں کی گود میں بنے بنائے گلدستے کی مانند اگتے ہیں اور یہ باغیچے کی شان بڑھا دیتے ہیں۔

یہ اکتوبر یا دسمبر کاشتکاری کا عمل پورا کرنے والے پھول ہیں۔
لٹکانے والے پودوں میں Fernایک قابل ذکر گھریلو پودا ہے۔اسے گھروں کے اندر رکھئے تو بہتر انداز میں پروان چڑھتا ہے۔زیادہ روشنی یعنی دھوپ اس کے لئے بہتر نہیں اس طرح یہ خشک ہو سکتا ہے۔پانی اس وقت تک پودوں کو دیتی رہیں جب تک کہ پیندا کسی قدر نم نہ ہو جائے۔پودوں کے لئے منرل واٹر دینا ضروری نہیں عام نل والا پانی ہی دیجئے۔

اگر پودے میں نمی نہیں ہو گی تو پتے بھوری رنگ کے ہو جائیں گے۔اسے آپ واش رومز میں بھی رکھ سکتی ہیں۔غرضیکہ گھریلو آرائش میں تازہ اور مصنوعی دونوں ہی اقسام کے پھول پھودے بہترین اضافہ ہو سکتے ہیں جبکہ تازہ جڑی بوٹیاں اور پودے تو موجودہ دور کی کلفتوں اور مسائل کا بھی قدرتی حل ثابت ہوتے ہیں۔
جب ہم مٹی کو چھوتے ہیں تو دماغ میں خوشی کی کیفیت پیدا کرنے والے ہارمونز پیدا ہوتے ہیں۔

کچھ بھی نہ کریں تو مختصر رقبے کے ٹیرس پر سبزیوں اور پھولوں کے چند گملے رکھ کر ان کی دیکھ بھال ہی کر لیں۔فطرت سے قربت آپ کے ذہنی تناؤ کو دور کر دے گی۔ہمارے وطن کے شمالی علاقہ جات میں لوگوں کی شرح اموات کم ہونے کی ایک وجہ یہ ہریالی والا قدرتی ماحول بھی ہے۔شہروں میں لوگ سر شام ٹی وی،سکرین کے سامنے براجمان ہو کر کھاتے پیتے رہتے ہیں اور ان لوگوں سے بات کریں تو ڈپریشن کا گلہ کرتے ہیں۔خراب صحت،بگڑے ہوئے موڈ،ورزش اور کھیل کود سے دوری ،مرغن غذائیں نہ ہسٹریشن بڑھاتی ہیں جبکہ باغبانی جیسا مشغلہ صحت کے سدھار کا سبب بن سکتا ہے،آپ کوشش تو کر ہی سکتے ہیں۔
تاریخ اشاعت: 2020-10-29

Your Thoughts and Comments

Special Gardening Tips And Tricks For Women article for women, read "Haryali Or Gher Ka Rasta" and dozens of other articles for women in Urdu to change the way they live life. Read interesting tips & Suggestions in UrduPoint women section.