Sandal Singaar Ka Ahem Jazo

صندل سنگار کا اہم جزو

Sandal Singaar Ka Ahem Jazo

نسرین شاہین
صندل خوشبودار پیلے رنگ کی ایک لکڑی ہے ،جو جِلد کی حفاظت اور دل کشی میں بہت معاون ہے ۔اسے چندن کے نام سے بھی پکارا جاتا ہے ۔صندل کی لکڑی آرایشِ حسن کی مصنوعات کا اہم جزو ہے ۔یہ سورج کی تمازت سے جلد کو محفوظ رکھنے والی کریم (SUNSCREEN)،فیشل کریم اور تیل وغیرہ میں ڈالی جاتی ہے ۔خواتین کے استعمال کی بہت ساری آرایشی مصنوعات میں اسے شامل کرکے انھیں مزید مفید و موٴثر بنایا جاتا ہے ۔

صندل کی اہمیت کا اندازہ اس بات سے بھی لگایا جا سکتا ہے کہ اس کا ذکر غزلوں اور گیتوں میں بھی ملتا ہے ۔
صندل میں جلد کو بیرونی موسمی اثرات سے محفوظ رکھنے کی صلاحیت پائی جاتی ہے ۔یہی وجہ ہے کہ جلدی مسائل کے لیے صندل کی لکڑی صدیوں سے استعمال کی جاتی رہی ہے ۔امریکی انڈین(RED INDIANS)اس کی تاثیر سے واقف تھے ۔

(جاری ہے)

آج سائنس نے کھوج لگا لیا ہے کہ صندل میں جلد کے اندر سرایت کرجانے کی حیرت انگیز صلاحیت پائی جاتی ہے ۔

صندل میں بیٹا کیروٹین
(BETACAROTENE) امینوایسڈ (AMINO ACID)اور خامرے
( ENZYMES )پائے جاتے ہیں ۔
صندل کی لکڑی دافع تعدیہ (انفیکشن) ہے ،جو جلد کے لیے بنائی جانے والی کئی قسم کی کریموں میں شامل کی جاتی ہے ۔سورج کی تمازت سے جلد کو محفوظ رکھنے والی کریم کا تویہ لازمی جزو ہے ۔یہ جزو نہ صرف جلد کو سورج کی شعاعوں کے مضر اثرات سے محفوظ رکھتا ہے ،بلکہ دھوپ سے جل جانے والی جلد کو بھی صحت بخشتا ہے ۔

اس کے علاوہ جسم کے جلے ہوئے حصوں کو مندمل کرنے کے لیے صندل کی لکڑی ادویہ میں بھی استعمال کی جاتی ہے ۔
صندل کی لکڑی سے زیورات بھی بنائے جاتے ہیں ،جو بہت دل کش اور ہلکے پھلکے ہونے کی وجہ سے موسم گرما میں خاص طور پر پسند کیے جاتے ہیں ۔صندل کی لکڑی سے تیار کیے جانے والے زیورات میں بہت خوب صورت نقش اُبھارے جاتے ہیں ۔ان زیورات کی دل کشی خواتین کی توجہ حاصل کر لیتی ہے ۔

یہی وجہ ہے کہ خواتین گرمیوں میں دوسری دھاتوں سے بنے زیورات کے بجائے صندل کی لکڑی سے تیار شدہ زیورات پہننا پسند کرتی ہیں ۔صندل کی ایک خاصیت یہ بھی ہے کہ اس کی خوشبو سے ماحول بہت دیر تک معطر رہتا ہے ۔
خواتین اگر مصنوعی اشیا ء کے بجائے قدرتی چیزوں کی طرف توجہ دیں تو ان کی جلد نقصان دہ اثرات سے محفوظ رہے گی ۔اس ضمن میں ہم ذیل میں چند ایسے نسخے پیش کررہے ہیں ،جن پر عمل کرنے سے نہ صرف جلد کو فائدہ ہو گا،بلکہ یہ چہرے کی دل کشی میں اضافے کا باعث بھی بنیں گے ۔

جلد شگفتہ ہو جائے گی اور مضر اثرات سے بھی محفوظ رہے گی ۔
صندل سے تیار کر دہ نسخے جلد کی بہتری اور صفائی کے لیے بھی مفید ہیں ۔یہ نسخے آز مودہ اور بے حد فائدہ مند ہیں ،آپ بھی انھیں ضرور آزمائیں ۔اگر آپ کے چہرے کی جلد حساسیت (الرجی )کا شکار ہے تو ان نسخوں میں سے کسی ایک کو پہلے اپنی ہتھیلی کی پشت پر لگا کر اس کا اثر دیکھ لیں ۔اگر کوئی مضر اثرنہ ہوتو بلا خوف وخطرا سے اپنے چہرے پر لگائیں ۔


تھوڑی سی ملتانی مٹی لے کر بھگودیں ،جب پھول جائے تو اس میں ایک چھوٹا چمچہ صندل کا سفوف ،آدھا چمچہ پسی ہوئی ہلدی ،ایک چھوٹا چمچہ شہد اور لیموں کے رس کے چند قطرے ملا کر لگدی (پیسٹ )بنالیں ۔
اب اسے اپنے پورے چہرے پر لگالیں اور آرام کریں ۔تقریباً ایک ڈیڑھ گھنٹے بعد سادے پانی سے چہرے کو دھولیں ۔جلد کو بہت فائدہ ہو گا۔
ملتانی مٹی کو باریک پیس لیں ۔

ایک حصہ ملتانی مٹی میں آدھا حصہ صندل کا سفوف اور آدھاحصہ پسی ہوئی ہلدی ملا کر پیالی میں رکھ لیں ۔یہ وقت ضرورت تھوڑا سا لے کر شہد اور لیموں کا رس ملا کر چہرے پر لگالیں ۔اگر آپ کی جلد خشک ہے تو اس آمیزے میں چند قطرے روغنِ بادام یا روغن زیتون بھی شامل کرلیں ۔
اس نسخے کے روزانہ استعمال سے جلد پر حیران کن نتائج مرتب ہوتے ہیں۔
ایک پیالی میں دو چمچے صندل کا سفوف لیں اور اُس میں اتنا عرق گلاب ملائیں کہ وہ گاڑھا محلول بن جائے ۔

اب چہرے کو دھو کر خشک کرلیں ،چہرے سے گردن تک اس محلول کا ماسک لگائیں اور 20منٹ تک لگا رہنے دیں ۔پھر ٹھنڈے پانی سے چہرہ دھولیں ۔یہ بہت آسان گھریلو نسخہ ہے ،جو جلد کے لیے مفید ہے ۔
دو چمچے صندل کا سفوف ،ایک چمچہ جو کا دلیا،گلاب کی چند پتیاں اور تھوڑا سا پانی بلینڈر میں ڈال کر لگدی بنالیں ۔اس لگدی کو لگانے سے پہلے دودھ سے چہرہ ضرور صاف کر لیں ۔

اس کے بعد روئی عرق گلاب میں بھگو کر چہرے پر لگا ئیں ۔جب چہرہ خشک ہو جائے تو لگدی کو چہرے پر پھیلا کرلگائیں اور اتنی دیر تک لگا رہنے دیں کہ ماسک خشک ہو جائے ۔اس کے بعد ٹھنڈے پانی سے چہرہ دھولیں ۔یہ نسخہ جلد کو صحت مند اور چمک دار بناتا ہے ۔
کچے دودھ میں صندل کا سفوف ملا کر چہرے پرہلکے ہاتھوں سے مساج کریں ۔پھر 20منٹ بعد جب چہرہ خشک ہو جائے تو دھولیں ۔

یہ گھریلو نسخہ موسم گرما میں جلد کے لیے بے حد مفید ہے ،خاص طور پر دھوپ سے جھلسے ہوئے چہرے کو مندمل کرنے میں خاصا معاون ہے ۔اسے استعمال کرنے سے چہرہ کھل اٹھے گا۔
شیشے کی ایک پیالی میں دو چمچے صندل کا سفوف لیں ۔اس میں ایک چمچہ ہلدی اور تین چمچے شہد ملا دیں ۔
جب تینوں اجزاء خوب اچھی طرح مل جائیں تو چہرے پر لگا لیں اور 20منٹ کے لیے لگا رہنے دیں ۔


پھر چہرہ دھولیں ۔چہرہ گلاب کی مانند کھل اٹھے گا اور جلد بھی تروتازہ ہو جائے گی۔
سیب کا چھلکا اتارلیں ،اس کا ایک چمچہ گودا لے کر اس میں ایک چمچہ صندل کا سفوف ملا دیں ۔اس میں عرقِ گلاب بھی شامل کر دیں ۔انھیں خوب اچھی طرح ملالیں ۔اب اس آمیزے کو چہرہ پر لگالیں ۔پھر 20منٹ بعد چہرہ دھولیں ۔یہ نسخہ مردہ اور بے رونق جلد کے لیے اکسیر ہے ۔

اس سے جلد شگفتہ اور شاداب ہو جاتی ہے۔
ایک پیالی میں ایک چمچہ ملتانی مٹی اور صندل کا سفوف لے کر اس میں لیموں کا رس اور عرقِ گلاب ملا کر محلول بنالیں ۔پھر اس محلول کو چہرے پر انگلیوں کی مدد سے لگالیں ۔جب یہ اچھی طرح خشک ہو جائے تو چہرے کو سادے پانی سے دھولیں ۔یہ نسخہ جلد پر بڑھتی عمر کے اثرات کو کم کرتا اور جلد کو جھڑیوں سے بھی محفوظ رکھتا ہے ۔


دو چمچے کھیرے کے رس میں تھوڑا سا صندل کا سفوف ملا کر گاڑھا محلول بنا کر چہرے پر لگالیں ۔20منٹ بعد چہرہ دھولیں ۔یہ نسخہ چہرے کی جلد کو نرم وملائم اور پرکشش بناتا ہے ۔گرمیوں میں س کا باقاعدہ استعمال بہت مفید ثابت ہوتا ہے ۔
مذکورہ بالاتمام آزمودہ گھریلو نسخے جلد کے لیے مفید ہیں ۔ان کے مثبت اثرات جلد نظر آتے ہیں اور انھیں استعمال کرنے سے صندل کی مہک بھی تادیر ہمارے ساتھ رہتی ہے۔

تاریخ اشاعت: 2019-03-11

Your Thoughts and Comments

Special Women Beauty - Khoobsurti article for women, read "Sandal Singaar Ka Ahem Jazo" and dozens of other articles for women in Urdu to change the way they live life. Read interesting tips & Suggestions in UrduPoint women section.