Dehhaan Rakhiye - Gher Jarasim Ki Amajagh Ho Sakta Hai

دھیان رکھیے!گھر جراثیم کی آماجگاہ ہو سکتا ہے

ہفتہ جولائی

Dehhaan Rakhiye - Gher Jarasim Ki Amajagh Ho Sakta Hai
کیڑے مکوڑوں،کوڑے کرکٹ اور مکڑی کے جالوں سے صاف گھر بھی مکمل طور پر محفوظ اور صحت بخش قرار نہیں دیے جا سکتے۔اس صفائی ستھرائی کے باوجود گھر والوں کا بعض متعدی اور دیگر بیماریوں میں بار بار مبتلا ہونا اس بات کا اظہار ہوتا ہے کہ گھر میں صفائی ٹھیک اور مکمل طور پر نہیں ہو رہی ہے۔بچوں کی ناک بار بار بہتی ہو،چھینکیں آتی رہتی ہوں، خارش میں مبتلا ہوں،جسم پر سرخ دھبے ہوں،سانس یعنی دمہ کی تکلیف ہو تو اس سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ گھر میں جراثیم اور بیکٹیریا کی افزائش کرنے والے اسباب محض جھاڑ پونچھ سے دور نہیں ہو رہے۔

اپنے گھر کو مکمل طور پر صاف ستھرا اور صحت بخش بنانے کے لئے ضروری ہے کہ آپ اسے جراثیم اور بیکٹیریاسے پاک کریں۔ایک تحقیق سے انکشاف ہوا کہ گھر کے اندر موجود چند چیزیں اور جگہیں ایسی ہیں ،جہاں سب سے زیادہ بیکٹیریا اور وائرس پائے جاتے ہیں۔

(جاری ہے)

آئیے دیکھتے ہیں کہ گھریلو سلطنت کی حدود میں کہاں کہاں انسانی صحت کے یہ دشمن چھپے ہوئے ہیں اور ان سے کس طرح نمٹا جا سکتا ہے۔


جوتوں کے تلے
حال ہی میں کی گئی ایک تازہ ترین اسٹڈی سے معلوم ہوا کہ جوتے کے تلے میں تقریباً 421000جراثیم چپکے ہوتے ہیں۔جراثیم کو اپنے گھر میں داخل ہونے سے روکنے کے لئے گھر کے داخلی دروازے کے پاس ایک شوز ریک ضرور رکھیں،تاکہ باہر سے آنے والا ہر شخص اپنے جوتے وہیں اتار دے۔دروازے پر ایک فٹ میٹ بھی رکھیں اور سب لوگوں کو یہ ہدایت کریں کہ وہ گھر کے اندر آنے سے پہلے اپنے جوتے اس میٹ پر رگڑ کر صاف کریں۔

جوتوں کو پہننے یا اتارنے کے بعد ہاتھ ضرور دھوئیں۔
شاپنگ بیگز
شاپنگ بیگ خواہ پلاسٹک کے ہوں یا کپڑے کے، ان میں بیماریاں پیدا کرنے والے جراثیم موجود ہو سکتے ہیں۔اسٹڈی میں شامل ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ شاپنگ بیگز چونکہ زیادہ ترکار کے ٹرنک میں یا لاپروائی سے ادھر ادھر پڑے رہتے ہیں اور کئی دنوں یا کئی ہفتوں کے بعد استعمال میں آتے ہیں،اس لئے ان میں جراثیم خوب تیزی سے پھلتے پھولتے ہیں۔

ان میں کسی بیگ میں ہم جوتے یا ایسی ہی دوسری چیزیں رکھ دیتے ہیں،جن کے باعث یہ بیکٹیریا کا گھر بن جاتے ہیں۔جن بیگز میں چکن اور گوشت وغیرہ لایا جاتا ہے،وہ بھی جراثیم آلود ہ ہوتے ہیں،اس لئے گوشت وغیرہ ہمیشہ پلاسٹک بیگز میں لائیں اور پھر ان بیگز کو سنبھال کر رکھنے کے بجائے ڈسٹ بن میں ڈال دیں۔ سودا سلف لانے کے لئے آپ کے پاس جو کپڑے کے تھیلے ہوں،انہیں ہفتہ میں ایک مرتبہ گرم پانی سے لازمی دھوئیں۔

جن تھیلوں میں گرد سری لائی جائے،انہیں دوسری چیزیں رکھنے کے لئے استعمال نہ کریں۔پلاسٹک کے شاپنگ بیگز کم سے کم استعمال کریں اور ایک مرتبہ استعمال کے بعد انہیں پھینک دیں۔
ریفریجریٹر کا ہینڈل
یہ تو سب ہی جانتے ہیں کہ ریفریجریٹر کے ہینڈل پر گھر کے ہر فرد کا ہاتھ لگتا رہتا ہے ،لیکن یہ جان کر آپ کو حیرت ہو گی کہ ہر وقت ہاتھ لگنے کے باعث آپ کے ریفریجریٹر کا بظاہر صاف ستھرا ہینڈل آپ کے باتھ روم میں لگے بیسن اور فرش سے بھی دو سو گنا زیادہ جراثیم آلودہ ہوتا ہے۔

اس کے علاوہ فریج کا ہینڈل ان بیکٹیریا سے بھی بھرا ہوتا ہے ،جو کچی غذاؤں پر ہاتھ لگنے کی بدولت پیدا ہوتے ہیں۔ان سے بچاؤ کا بہترین طریقہ یہ ہے کہ بلیچ ملے کسی کیمیکلز میں صاف کپڑا یا پیپر ٹاول بھگو کر دن میں ایک مرتبہ ہینڈل ضرور صاف کریں۔
سیل فون
حالیہ ریسرچ کے تحت جتنے سیل فونز کو جانچا گیا،ان میں سے سو فیصد فونز پر بیماریاں پیدا کرنے والے بیکٹیریا پائے گئے۔

ان میں سے تقریباً بیس فیصد بیکٹیریا ایسے تھے،جو انسانی جسم میں منتقل ہو کر خطر ناک بیماریاں پیدا کرنے کا سبب بنتے ہیں۔ان میں دواؤں کے خلاف قوت مدافعت بھی پائی جاتی ہے یعنی ان میں مبتلا مریض جب کوئی دوا کھائے گا تو وہ اس پر پوری طرح اثر نہیں کرے گی۔اب کئی ایسے سیل فونز مارکیٹ میں آرہے ہیں جنہیں کسی خرابی کے بغیر صاف کیا جا سکتا ہے۔

لہٰذا آپ ہفتہ میں ایک مرتبہ کسی نرم کپڑے کو اینٹی بیکٹیریل محلول میں بھگو کر اپنا سیل فون صاف کر سکتے ہیں،تاہم اس سلسلے میں ماہرین کا مشورہ ہے کہ سیل فون کی صفائی کے لئے صرف وائپس یعنی بھیگا ہوا کپڑا یا پیپر ٹاول ہی استعمال کریں اور کسی بھی کلینزنگ اسپرے کو آزمانے کی کوشش نہ کریں کیونکہ یہ فون کے اندرونی حصوں کو نقصان پہنچا سکتا ہے۔


رائٹنگ ٹیبل
یہ جان کر آپ کو حیرت ہو گی کہ آپ کی آفس ٹیبل وہ جگہ ہے ،جہاں بہت زیادہ بیکٹیریا باہمہ وقت موجود ہوتے ہیں۔ریسرچرز کے مطابق میز پر جہاں آپ کے کمپیوٹر کا ماؤز ہوتا ہے ،اس کے عین نزدیک جس مقام پر آپ کا ہاتھ رکھا رہتا ہے وہ کم سے کم دس ملین جراثیم کا مسکن ہوتا ہے ۔اگر آپ کے گھر میں بھی ایسی ہی کوئی رائٹنگ ٹیبل یا کمپیوٹر ٹیبل ہے،باقاعدگی کے ساتھ کسی جراثیم کش محلول کی مدد سے اپنی میز روزانہ کم از کم ایک مرتبہ ضرور صاف کریں۔
تاریخ اشاعت: 2020-07-11

Your Thoughts and Comments

Special Home Interior & Decoration - Ghar Ki Aaraish article for women, read "Dehhaan Rakhiye - Gher Jarasim Ki Amajagh Ho Sakta Hai" and dozens of other articles for women in Urdu to change the way they live life. Read interesting tips & Suggestions in UrduPoint women section.