Makan KO Saja Lain CheezoN Se - Home Interior & Decoration - Ghar Ki Aaraish

مکان کو سجا لیں چیزوں سے - گھر کی آرائش

جمعہ اگست

Makan KO Saja Lain CheezoN Se
یہ کس نے کہا کہ مختصر رقبے والے مکانات یا فلیٹوں کی آرائش ممکن نہیں یا آپ یہاں اپنے تخلیقی جوہر نہیں آزما سکتے۔چلئے ہمارے ہمراہ آج گھر برآمدے کو دیدہ ذیب بنانے کی کوشش کریں۔یہاں چاہے آپ کو پانچ فٹ کی جگہ ہی دستیاب ہو مگر یہ ہے تو آپ کے گھر کا مرکزی حصہ،چنانچہ اس کو خوبصورت تخیل کے ساتھ آراستہ کیا جانا چاہئے یہاں آپ کو فرش کے لئے اتنی ہی لمبائی میں ایک رگ درکار ہو گی۔

ضروری نہیں کہ آپ لاکھ روپے کا غالیچہ ہی خریدیں۔انٹرنیٹ ملاحظہ کیجئے۔پاکستان میں تو بہت سی اندرونی آرائش کی ماہرین نوجوان لڑکیاں گھروں میں رگز ڈیزائن کر رہی ہیں اور ہوم ڈیکورچینز بھی خوبصورت قالین اور رگز تخلیق کر رہے ہیں۔آپ نے ڈیزائن اور رنگوں کے انتخاب میں اپنی فنکارانہ اپروچ اور تخلیقیت کا تاثر ثابت کرنا ہے۔

(جاری ہے)

برآمدے یا راہ داری میں اگر ایک آئینہ لگا دیا جائے تو یہ جگہ کشادہ نظر آئے گی۔


یہاں گنجائش ہو تو چھوٹا سا دیواری شیلف آویزاں کر سکتے ہیں۔لکڑی کی عمدہ آرائش شدہ (Carving) والی شیلف مغلیہ عمارت کا حصہ دکھائی دیتی ہے۔جس کی دراز ہو تو یہاں گھر کی چابیاں،گاڑی اور موٹر سائیکل کی چابیاں وغیرہ محفوظ کی جاسکتی ہیں اور شیلف پر تازہ یا مصنوعی پھولوں کا چھوٹا سا واز رکھا جا سکتا ہے۔یہاں منی پلانٹ کی چھوٹی سی بوتل رکھ کر گھر کو ہریالی سے آراستہ کیا جا سکتا ہے۔

برآمدے کو قد آور لیمپ سے بھی سجایا جا سکتاہے لیکن یہ ضروری نہیں کیونکہ یہ جگہ گھیرے گا اور گھر میں داخل ہوتے ہی بوجھل پن کا احساس بھی دو چند کر سکتاہے بہتر ہوگا کہ آپ لیمپ کوکسی کمرے میں جگہ دیں۔
بہت سے لوگ اپنے دروازے پر آیات ربانی اور خطاطی کے نمونے آویزاں کرتے ہیں تاکہ گھر میں روحانیت ابھرے اور ہر آنے والے پاکیزہ احساس کے ساتھ داخل ہو اور گھر میں خیرو برکت کا نزول بھی جاری رہے ۔

یہ مسلمانوں کا طرز زندگی ہے اور پاکستان بھر میں ایسی بے شمار جگہوں پر خطاطی کے دلکش نمونے فریم کی شکل میں دستیاب ہوتے ہیں آپ اپنی ذوق اور گنجائش کے مطابق ان کا انتخاب کر سکتے ہیں۔ برآمدے میں بڑے بڑے فریم نہ لگائیں۔
اگر فرش لکڑی کا ہو
کہا جاتا ہے کہ جتنا گڑ ڈالو اتنا میٹھا اور یہ مثال گھر کی تعمیر سے لے کر آرائش خانہ تک بھی صادق آتی ہے۔

لکڑی کے پینل اور فرش بہت خوبصورت ذوق کے آئینہ دار ہو سکتے ہیں پھر یہاں غالیچے کی ضرورت نہیں رہتی۔اب آپ نے یہاں ایک پلانٹ رکھنا ہے۔جو قد آور نہ ہوتو اچھا ہے۔دو یا تین فٹ لمبا اور قدرے چھوٹے گملے کو Caneکی کرافٹنگ سے سجایا جا سکتا ہے۔سیدھا سادہ گملا رکھنا بوضع معلوم ہو گا بہتر ہے کہ سرامیکس اور Clay کے بنے ہوئے گملے یہاں فرش پر رکھے جائیں۔

پر تکلف دعوتوں کے موقع پر آپ کو گھر کے مختلف حصوں میں گلوب وغیرہ جلانے پڑیں گے تاکہ مچھروں سے محفوظ رہا جا سکے۔
اگر آپ کی گیلری کشادہ ہے تو
آپ چاہیں تو یہاں چقیں لگا سکتی ہیں۔یہاں چھوٹی سی نشست گاہ بنائی جا سکتی ہے شام کے وقت بچے یہاں ہوم ورک کر سکتے ہیں گیلری کی جگہ کو استعمال کرنے کا تصور جدید رسٹورنٹس میں بھی دیکھا جا سکتا ہے ۔

یہاں دو کرسیوں والی میز لگا کر ریسٹورنٹ آنے والے کو Privacy بھی دی جاتی ہے۔آپ یہاں اپنے گھر میں اسے مطالعہ گاہ بنا سکتے ہیں۔بے تکلف دستوں کے ساتھ باربی کیو پارٹی کی جا سکتی ہے۔تازہ اور قدرتی جڑی بوٹیوں اور پھولوں کے گملے ماحول سنوارا اور محفوظ بنایا جا سکتاہے۔کچھ لوگ گھروں میں مجسمے رکھنا پسند کرتے ہیں اور بہت سے لوگ اسے بت پرستی سے تعبیر کرتے ہیں۔


گھر کے بیشتر لوگوں کی جیسی رائے بنے اپنے گھر کو آراستہ کیجئے۔انفرادیت اور تخلیقیت کو اجاگر کرتے ہوئے اپنی تہذیب،احساس، معاشرے کی سوچ اور بزرگوں کی آراء کو بھی مد نظر رکھنا اہمیت سے خالی نہیں ہوتا۔مکان تو اینٹ گارے پتھروں سے بن ہی جاتے ہیں مگر گھروں کو بسانا اور اپنی ذات سے جڑے رشتوں کالحاظ رکھنا،خود بھی مطمئن رہنا اور متعلقین کو بھی خوش باش رکھنا ہی ہمارا اولین ہدف ہوتو بہتر ہے۔ مکان بنانا تو ماہر تعمیرات کے بائیں ہاتھ کا کام ہے مگر گھر بنانا اور بسانا آ پ کے دونوں ہاتھوں کے کمال مہارت کا ثبوت ہوتا ہے ۔گھروں کی آرائش میں محبت اور احساس کو دو چند کیجئے۔
تاریخ اشاعت: 2020-08-28

Your Thoughts and Comments

Special Home Interior & Decoration - Ghar Ki Aaraish article for women, read "Makan Ko Saja Lain Cheezon Se" and dozens of other articles for women in Urdu to change the way they live life. Read interesting tips & Suggestions in UrduPoint women section.