Bedagh Jild K 5 Usool

بے داغ جلد کے 5اصول

ہفتہ مئی

Bedagh Jild K 5 Usool
لیاقت علی جتوئی
شاید آپ میک اپ کے ذریعے اپنی پسند اور خواہش کے مطابق جلد کو چمکدار اور بے داغ بنا سکتی ہیں ،تاہم اس بات میں کوئی دورائے نہیں کہ ہر عورت جلد کو فطری طور پر اچھی اور خوبصورت بنانے کی خواہاں ہوتی ہے ،کیونکہ فطری خوبصورتی کا کوئی مقابلہ نہیں۔درج ذیل باتوں پر عمل کرکے آپ فطری طور پر ایک چمکدار،بے داغ اور خوبصورت جلد حاصل کر سکتی ہیں۔


اپنی جلد کی ’ٹائپ ‘جانیں
کوئی بھی بیوٹی پراڈکٹ استعمال کرنے سے پہلے چہرے کی جلد اور ساخت کا اندازہ لگانا ضروری ہے تاکہ جلد کی ساخت کے مطابق اسی قسم کے میک اپ کو ترجیح دی جاسکے ورنہ ایک مصنوعی قسم کا تاثر ابھرتا ہے اور جلد انفیکشن کا شکار بھی ہو سکتی ہے۔

(جاری ہے)

متضاد میک اپ یا بیوٹی پراڈکٹس کا استعمال جلد کو خراب کرنے کا باعث بنتاہے۔


سب سے اہم بات جو آپ کو معلوم ہونی چاہیے،وہ یہ ہے کہ آپ کی جلد کی کیا ٹائپ ہے؟کیا آپ کی جلد خشک ہے ،حساس ہے ،آئلی ہے یا ان سب کا کامبی نیشن ہے؟آپ کو کون سی پراڈکٹس استعمال کرنی ہیں یا جلد کے لیے آپ کو روزانہ کی بنیاد پر کیا کرنا ہے ،یہ سب آپ موٴثر اور بہتر طور پر اس وقت کرپائیں گی اور آپ کی محنت نتیجہ خیز رہے گی،جب آپ کو اپنی اسکن ٹائپ کا علم ہو گا۔

مثلاً ،اگر آپ کی جلد آئلی ہے تو ایسی جلد پر آئل بیسڈ موئسچرائزر سود مند ثابت نہیں ہو گا،تاہم خشک جلد پر ان کا اثر سب سے بہترین دیکھا جاتا ہے۔
خشک جلد پر میک اپ کے لئے پہلے جلد کو نمی فراہم کرنا بے حد ضروری ہوتاہے تاکہ میک اَپ متوان نظر آئے ۔جلد کو نم نہ کرنے کی صورت میں چہرے پر دھبے پڑ جاتے ہیں ،اگرآپ کی جلد بے حد خشک ہے تو آپ نمی کے ساتھ ساتھ میک اَپ میں آئلی بیس یا فاؤنڈیشن کا استعمال کریں۔


حساس جلد رکھنے والی خواتین میک اپ کے معاملے میں احتیاط برتیں ۔چکنے فاؤنڈیشن کو بالکل استعمال نہ کریں جبکہ خشک فاؤنڈیشن یا خشک بیس کا استعمال ان کی جلد کے لئے مناسب رہتا ہے ۔
دُرست پراڈکٹس کا استعمال
جب ایک بار آپ اپنی جلد کی ٹائپ کے بارے میں جان لیں گی،تو اس کے بعد ہی آپ اپنی جلد کے لیے درست پراڈکٹس کا انتخاب کر پائیں گی۔

اس کے علاوہ ،آپ کو اس بات پر بھی توجہ دینے کی ضرورت ہے کہ آپ کی جلد کو ہر موسم کے حساب سے مختلف پراڈکٹس کی ضرورت ہوتی ہے ۔گرمیوں کے موسم میں آپ کی جلد کو الگ طرح کے پراڈکٹس کی ضرورت ہوتی ہے جبکہ سردیوں کے موسم میں آپ کی جلد کو کچھ اور طرح کے پراڈکٹس کی ضرورت پڑے گی۔اگر آپ کی جلد حساس نہیں ہے تو آپ کو ہر موسم کے حساب سے مختلف پراڈکٹس کا استعمال کرنا چاہیے اور اس سلسلے میں تجربات کرنے میں کوئی حرج نہیں ہے۔


کلینزنگ کریں
اچھی جلد کے لیے کلینزنگ کوبنیادی حیثیت حاصل ہے ۔کلینزنگ جلد کی حفاظت کا ایک اہم حصہ ہے کیوں کہ اس سے گردو غبار اور میک اپ کی صفائی آسانی سے ہوتی ہے ۔اس طرح جلد کو بہتر انداز میں آکسیجن حاصل ہوتی ہے اور جلد کی نمی بر قرار رہتی ہے ۔جلد کے لیے کلینزنگ ایک ایسا عمل ہے ،جو آپ کو ہمیشہ اور باقاعدگی سے کرنا چاہیے۔

یاد رکھیں ،آپ کو روزانہ دوبار اپنی جلد کی کلینزنگ ضرور کرنی چاہیے،کلینزنگ سے آپ کی جلد مٹی ،میل،کالک اور ہر طرح کی آلودگی سے صاف ہو جاتی ہے ۔اگر آپ کلینزنگ نہیں کریں گی تو جلد پر بلیک ہیڈز ،دانے اور ایکنی نکل آئیں گے ،اس طرح آپ کا بے داغ جلد حاصل کرنے کا خواب پورا نہیں ہو پائے گا۔صبح اور رات میں کلینزر کا استعمال آپ کی روزمرہ کی عادت میں شامل ہو نا چاہیے۔


ٹوننگ کریں
جلد کی کلینزنگ کے مرحلے کا آخری حصہ جلد کی ٹوننگ کرنا ہوتا ہے ۔ٹوننگ دو طرح سے کام کرتی ہے۔پہلا یہ کہ جو مسام کی صفائی کلینزنگ سے رہ جاتی ہے ،ٹوننگ ان کی صفائی کا بھی کام کرتی ہے ،اس کے علاوہ کلینزنگ کے جو ذرات جلد میں رہ جاتے ہیں ،ان کی بھی ٹوننگ کے ذریعے صفائی ہو جاتی ہے ۔ٹوننگ سے آپ کی جلد کی pHسطح بحال ہو جاتی ہے ۔

جبpHسطح بحال ہو جائے گی تو پھر آپ کی جلد پر ریشے پیدا نہیں ہونگے۔
موئسچرائزنگ کی اہمیت
اپنی جلد کو کبھی خشک نہ ہونے دیں۔اپنی جلد کو کم ازکم اس حد تک ہر وقت موئسچرائزرکھیں کہ جلد ڈی
ہائیڈ ریشن محسوس نہ کرے۔اس لیے اس بات کو یقینی بنائیں کہ آپ اپنی جلد کی ٹائپ کے مطابق موئسچرائزراستعمال کررہی ہیں ،تاکہ آپ کی جلد صحت مندر ہے۔موئسچرائزنگ کو کبھی نہ چھوڑیں کیونکہ یہ آپ کی جلد کو تروتازہ اور بحال رکھنے میں معاون رہتی ہے ۔پانی کی کمی جلد کو بھی متاثر کرتی ہے ۔پانی کی کمی کی وجہ سے جلد خشک اور بدرنگ ہو جاتی ہے ۔آپ دن بھر میں پانی کی زیادہ مقدار پی کر اپنی جلد کو نرم،ملائم اور تروتازہ بناسکتی ہیں۔
تاریخ اشاعت: 2019-05-11

Your Thoughts and Comments

Special Skin Care article for women, read "Bedagh Jild K 5 Usool" and dozens of other articles for women in Urdu to change the way they live life. Read interesting tips & Suggestions in UrduPoint women section.