Garmiyon Main Baraf Se Takoor Kareen - Skin Care

گرمیوں میں برف سے ٹکور کریں - جلد کی حفاظت

پیر اکتوبر

Garmiyon Main Baraf Se Takoor Kareen
نسرین شاہین
گرمیوں میں ہماری جلد سورج کی شعاعوں کا براہ راست سامنا کرنے کی وجہ سے سانولی اور جھلسی ہوئی دکھائی دیتی ہے،یعنی چہرے کی شادابی و شگفتگی کو سخت نقصان پہنچتا ہے۔ گرم موسم میں چہرے کو ٹھنڈا رکھنا چاہیے۔ سورج کی شعاعوں سے متاثر خواتین کو چاہیے کہ وہ برف کا استعمال کریں۔ برف کی ٹکور نہ صرف چہرے پر تازگی و نکھار لاتی ہے،بلکہ چہرے کے تمام سیاہ داغ دھبوں کو بھی ختم کر دیتی ہے۔

یہ چہرے کی جلد کو صحت مند اور بے داغ رکھنے کے لئے بہترین ثابت ہو چکی ہے،لیکن برف کی ٹکور کا طریق کار کیا ہے؟
سب سے پہلے پانی کو جمانے،یعنی برف بنانے کے لئے کسی اسٹیل کے پیالے میں پانی بھر کر فریزر میں رکھ دیں۔برف کی ڈلیوں (ICE-CUBES) کی شکل میں برف تیزی سے پگھلتی ہے اور ٹکور کے عمل میں مشکل پیش آتی ہے،اس لئے اسٹیل کے پیالے میں برف جمائیں۔

(جاری ہے)

جب برف جم جائے تو اسے دوسرے برتن میں نکال کر اس کے درمیانے ٹکڑے کر لیں،بہت چھوٹے نہ کریں،ورنہ برف تیزی سے پگھل جائے گی۔اب برف کے ٹکڑے کو نرم سوتی یا ململ کے کپڑے میں لپیٹ لیں اور بہت نرمی و ملائمت سے چہرے پر پھیریں ۔ سب سے پہلے گالوں،یعنی رخساروں سے شروع کریں۔آہستہ آہستہ گول دائرے کی صورت میں پہلے ایک گال پر پھیریں۔یہی عمل دوسرے رخسار پر بھی کریں۔

پھر سست روی سے پورے چہرے کی ٹکور کریں۔
برف کی ٹکور کرتے ہوئے چہرے پر جہاں کہیں دانے،مہاسے اور کیل وغیرہ آئیں تو وہاں پر تھوڑی دیر رک کر برف سے نرمی و آہستگی سے انھیں دبائیں۔یہ عمل آپ کے دانوں کو دبا دے گا۔اب اپنے ماتھے اور ٹھوڑی پر ٹکور کریں۔برف کی ٹکور کا عمل نہ صرف متاثرہ جلد،یعنی سورج کی تمازت سے جھلسی ہوئی جلد کو تسکین اور ٹھنڈک بخشے گا،بلکہ جلد کو نمی پہنچا کر اس کی کھوئی ہوئی دل کشی اور تازگی کو بھی بحال کرے گا۔

اصل میں برف جما ہوا پانی ہے اور جب اسے جلد پر استعمال کیا جائے تو یہ جلد کی سوزش و درد میں آرام پہنچاتا اور چہرے کو ٹھنڈا رکھتا ہے۔
گرمیوں کے دنوں میں سورج کی حدت سے جب جلد جھلس جائے تو گھر آنے کے بعد چہرے کو ٹھنڈے پانی سے ضرور دھوئیں،تاکہ گرد و غبار اور میل کچیل خوب اچھی طرح صاف ہو جائے۔چہرہ دھونے کے بعد برف سے ٹکور کریں،تاکہ چہرے کو ٹھنڈک اور فرحت کا احساس ہو۔

سورج کی کرنوں کا براہ راست سامنا کرنے کی وجہ سے جلد سوختگی کا شکار ہو جائے یا متواتر دھوپ میں رہنے کی وجہ سے رنگت گہری سانولی ہو جائے تو اپنی جلد کا فوری علاج کرنے کے لئے اس پر برف کا ٹکور کریں،تاکہ جلد کی کھوئی ہوئی شادابی اور جاذبیت بحال ہو جائے۔
گرم موسم میں نہ صرف خشک جلد کی شادابی اور تازگی ماند پڑ جاتی ہے،بلکہ چکنی جلد کی حامل خواتین اکثر اپنے چہرے کی چکناہٹ،داغ دھبوں اور کیل مہاسوں کی وجہ سے بے حد پریشان بھی رہتی ہیں،کیونکہ چکنی جلد کا مطلب ہے چہرے پر مسلسل چکنی رطوبت کا اخراج۔

ایسی صورت حال میں جلد پر موجود یہ اضافی چکنائی انھیں بہت پریشان کر دیتی ہے اور وہ اپنے چہرے کی فطری شگفتگی و تروتازگی بر قرار رکھنے کے لئے ہر جتن کرتی ہیں،لیکن برف کی ٹکور چکنی جلد کے مسائل سے نجات کا بہترین گھریلو نسخہ ہے۔
چکنی جلد کی ٹکور کے لئے ایک نرم و ملائم صاف کپڑا لے کر اس میں برف کے چھوٹے ٹکڑے یا برف کا چورا ڈالیں اور اسے پوٹلی کی طرح لپیٹ کر چہرے کے دانوں اور مہاسوں پر رکھیں اور ہلکے سے دبائیں،لیکن یہ یاد رہے کہ دانوں اور مہاسوں والی جگہ پر اسے دو سے تین منٹ تک رکھنے کے بعد فوراً ہٹا لیں۔

پھر آہستہ آہستہ پورے چہرے پر برف کی ٹکور کریں۔اس سے چہرے کو بہت سکون و آرام ملے گا۔برف نہ صرف چہرے کے بند مساموں میں موجود چکنی رطوبت کو خارج کرتی ہے،بلکہ اس اضافی چکنائی کو قابو میں کرنے میں بھی موثر ثابت ہوتی ہے۔علاوہ ازیں یہ کھلے منہ والے مساموں کو بند کر دیتی ہے اور کیل مہاسوں میں ہونے والی جلن اور تکلیف کو کم کرتے ہوئے سکون کا احساس بخشتی ہے۔


برف آنکھوں کی ٹھنڈک و سکون کے لئے بھی بہت مفید ہے۔اپنی آنکھیں بند کر لیں اور برف کی پوٹلی کو چند منٹ کے لئے اپنی آنکھوں پر رکھ کر بہت نرمی سے دبائیں۔پھر اس عمل کو کچھ دیر کے لئے روک دیں اور کچھ دیر چہرے پر برف پھیرنے کے بعد دوبارہ اپنی آنکھوں پر پہلے والا عمل دہرائیں،لیکن بہت زیادہ دیر تک آنکھوں پر برف نہ رکھیں،بلکہ صرف تین منٹ کے لئے ہی رکھیں۔

پھر آنکھوں سے ہٹا کر چہرے پر پھیریں۔آنکھوں پر برف کی ٹکور نہ صرف آنکھوں کو ٹھنڈک و سکون دیتی ہے،بلکہ پلکوں کو نکھارتی اور تازگی عطا کرتی ہے۔
آنکھوں کی ٹکور کے لئے صرف پندرہ منٹ کا دورانیہ بہت مناسب ہوتا ہے۔اس دورانیے میں برف کا ٹکڑا بھی پگھل چکا ہوتا ہے،لہٰذا آنکھوں کو بہت زیادہ ٹھنڈک نہیں لگتی۔زیادہ دیر تک کرنے سے برف کی ٹکور آنکھوں کو نقصان بھی پہنچا سکتی ہے۔

چہرے کی شادابی اور بہترین نتائج حاصل کرنے کے لئے برف کی ٹکور روزانہ کریں۔سخت گرمی اور لو کے دنوں میں آپ دن میں دوبار اس عمل کو کر سکتی ہیں، خصوصاًرات کو سونے سے پہلے۔اس کے علاوہ دن میں کام کی تھکن دور کرنے کے لئے بھی برف کی ٹکور کی جا سکتی ہے۔
برف کی ٹکور آنکھوں کی تھکن دور کرنے کے علاوہ سیاہ حلقے دور کرنے میں بھی موثر ہے۔آنکھوں کے سیاہ حلقے خواتین کے چہرے کی خوب صورتی کے سب سے بڑے دشمن ہیں۔

یہ وہ مسئلہ ہے جو کم و بیش ہر عمر کی عورت کو متاثر کرتا ہے،لیکن برف کی مدد سے خواتین ان سیاہ حلقوں اور آنکھوں کے نیچے کی سوجن کو دور کر سکتی ہیں۔
برف کی ٹکور کا عمل خون کی شریانوں کو سیکٹر دیتا ہے اور چہرے کی جلد کی ساخت کو جوں کا توں رکھتے ہوئے آنکھوں کے نیچے موجود گہرے رنگ کو ہلکا کر دیتا ہے۔یہ آپ کی جلد کو موئسچرائزر کرکے اس کی ماند پڑتی ہوئی رنگت اور بھدی جلد کو نئے سرے سے شگفتہ و تروتازہ بنا دیتا ہے۔


آنکھوں کے سیاہ حلقے دور کرنے کے لئے برف کی ٹکور کا طریقہ بہت آسان ہے۔بہت زیادہ ٹھنڈے پانی میں اسطو خودوس (لیونڈر آئل) کے چند قطرے شامل کر لیں۔پھر پھُریری(COTTON BUD) کو محلول میں بھگو کر اسے آنکھوں کے گرد موجود سیاہ حلقوں پر لگا کر نرمی و ملائمت سے دبائیں ۔فوری نتیجے کے لئے اس عمل کو کئی بار دہرائیں۔یہ عمل آنکھوں کے نیچے موجود گہرے رنگ کو ہلکا کرنے میں معاون ثابت ہو گا اور آنکھوں کو چمک دمک،آرام اور تازگی بخشے گا۔


برف کی ٹکور چہرے پر کریں یا آنکھوں پر،لیکن ہمیشہ ہلکے ہاتھ سے کریں،تاکہ سکون اور فرحت و تازگی کا احساس ہو اور یہ احساس ہی ہے،جو آپ کو گرمی کی شدت میں ٹھنڈک و سکون پہنچاتا ہے۔برف کی ٹکور سے گرمیوں میں جھلسے ہوئے چہرے کو شادابی اور رعنائی و تروتازگی عطا کریں۔
تاریخ اشاعت: 2020-10-19

Your Thoughts and Comments

Special Skin Care article for women, read "Garmiyon Main Baraf Se Takoor Kareen" and dozens of other articles for women in Urdu to change the way they live life. Read interesting tips & Suggestions in UrduPoint women section.