Jild Ki Nighdasht Aur Khubsurti Ke Liye Phool Patiyan - Skin Care

جلد کی نگہداشت اور خوبصورتی کے لئے پھول پتیاں - جلد کی حفاظت

جمعہ 13 مئی 2022

Jild Ki Nighdasht Aur Khubsurti Ke Liye Phool Patiyan
عارفہ خان
خوبصورتی اور مہک کا مرکز پھول ہر ایک کے لئے کشش کا باعث ہوتا ہے۔ایک عام سا پھول بھی لوگوں کی توجہ اپنی طرف مرکوز کر لیتا ہے۔شاعروں،ادیبوں نے محبوب کے تخیلاتی پیکر کی تعریفوں میں مختلف پھولوں کو ہی ضرب المثال کے طور پر استعمال کیا ہے۔مثلاً گلاب کی پنکھڑی جیسے ہونٹ،کھلتے ہوئے کنول جیسا حسین پیکر،سورج مکھی کی طرح چمکتا چہرہ وغیرہ وغیرہ۔


کائنات کی حسین ترین اشیاء میں نمایاں مقام رکھنے والے پھول دوسری مخلوقات کے انسانی حسن کو رعنائی فراہم کرنے کی صلاحیتوں سے بھی مالا مال ہوتے ہیں۔اسی خصوصیت کے پیشِ نظر آج کل کاسمیٹکس کی مختلف مصنوعات میں پھولوں کا استعمال ہوتا ہے۔حسن کی حفاظت کے لئے تازہ اور خشک پھولوں کا استعمال صدیوں سے عام ہے۔

(جاری ہے)

کہیں حسن افزاء مصنوعات میں ان کو شامل کرکے،کہیں ان پھولوں سے عرق یا نباتاتی تیل نکال کر مساج کے لئے اور کبھی ان پھولوں کی پتیوں کے عرقیات کو پانی میں شامل کرکے یا بھاپ کی صورت میں غسل کے لئے استعمال کیا جاتا ہے۔

آئیے پھولوں کے ذریعے جلد کی نگہداشت اور خوبصورتی کا سامان کرتے ہیں۔
عرق گلاب
گلاب کا پھول ہر جگہ بہ آسانی دستیاب ہے۔عرقِ گلاب چہرے کو شگفتہ اور تروتازہ بنانے کے لئے ایک قدرتی اسکن ٹانک ہے۔علاوہ ازیں امراضِ چشم،امراضِ قلب اور دیگر امراض کے لئے تیار ہونے والی ادویات اور مشروبات وغیرہ میں بھی اس کا استعمال کیا جاتا ہے۔

گلاب کے پھول میں وٹامن ای کثیر مقدار میں پایا جاتا ہے۔گلاب کا عرق جلد کے روکھے پن کو ختم کرتا ہے،بند مساموں کو کھولنے میں مددگار ہے۔چہرے کے نکھار اور کیل مہاسوں،چھائیوں اور چہرہ کی خشکی کے لئے عرقِ گلاب کو لیموں اور گلیسرین میں ملا کر استعمال کرنا مفید ہے۔گلاب کے پھول خشک کرکے اس کا سفوف اُبٹن میں ملا کر چہرے پر لگانے سے جلد خوش نما اور خوشبودار ہو جاتی ہے۔

گلاب کے عرق میں لیموں ملا کر رکھ لیجئے۔یہ لوشن جلد کو صاف ستھرا کرکے نکھار دیتا ہے۔ایک لیموں کا رس ایک گلاس عرق کے لئے بہت ہے۔اسے فرج میں رکھیے،یہ اچھا کلینزنگ لوشن ہے۔سردی کے موسم میں اس لوشن میں ایک بڑا چمچہ گلیسرین ملا کر رکھ لیجئے۔ہاتھ پاؤں پھٹنے اور جلد کی خشکی میں اور رنگ صاف کرنے کے لئے مفید ہے۔برتن یا کپڑے دھونے کے بعد چند قطرے ہاتھوں پر ملنے سے ہاتھ ملائم اور نرم رہیں گے۔

گلاب کا زیرہ خشک کرکے محفوظ کر لیجئے۔یہ منہ کے چھالوں کے لئے مفید دوا ہے۔
گیندا
گیندے کے پھول یعنی میری گولڈ کی پتیوں کو باڈی لوشن Skin Tonic کے کام میں لایا جاتا ہے۔اگر جلد بہت زیادہ چکنی Oily ہے تو اسے متوازن رکھنے کے لئے یہ آئیڈیل ہے یہ ہر کمپلیکشن کے لئے موزوں ہے۔اسکن ٹونک تیار کرنے کے لئے ایک برتن میں پانی لے کر اس میں تین مٹھی تازہ گیندے کے پھول ڈال کر اچھی طرح ملا لیں کچھ دیر بعد چھان لیں،ماہرین اسے ایک بہترین ٹانک قرار دیتے ہیں۔


یاسمین چنبیلی
یہ سفید رنگ کے پھول مختلف قسموں میں دستیاب ہیں۔اکثر گھروں میں لوگ بڑے شوق سے کیاریوں اور باغیچوں میں لگاتے ہیں۔اپنی خوشبو اور تازگی کے باعث اسے پرفیومز،صابن،ٹیلکم پاؤڈر اور فیس پیک بنانے میں استعمال کیا جاتا ہے۔چنبیلی سفید رنگ کی پنکھڑیوں پر مشتمل ایک نہایت خوشبو دار،خوبصورت اور حسین پھول ہے۔

اس پھول سے نکالا جانے والا تیل کئی وٹامنز پر مشتمل ہوتا ہے۔آئیے اب اس سے فیس پیک بنانے کا طریقہ دیکھتے ہیں۔یاسمین کی تازہ پتیاں لے کر انہیں عرق گلاب کے ساتھ باریک پیس لیں۔خشک جلد کے لئے یہ ایک اچھا فیس پیک ہے۔یہ جلد کو صاف،ملائم بناتا ہے اور کمپلیکشن بہتر کرتا ہے۔اس میں روغن کی وافر مقدار ہونے کے سبب خشک جلد پر مہینے میں ایک مرتبہ لگایا جا سکتا ہے۔

نارمل یا آئلی اسکن پر دو ماہ میں ایک مرتبہ لگانا مناسب ہے۔
لیونڈر
یہ نرم اور چمکدار گچھوں کی شکل میں ملتا ہے۔لیونڈر کاسمیٹکس میں استعمال ہونے والا سب سے زیادہ ورسٹائل پھول قرار دیا گیا ہے۔یہ تازہ حالت کے ساتھ ساتھ خشک صورت میں بھی استعمال کیا جاتا ہے۔لیونڈر کی مدد سے جلد کو نرم و ملائم اور خوبصورت رکھنے والا لوشن تیار کیا جا سکتا ہے۔

تیاری بہت آسان ہے۔تھوڑے سے لیونڈر کے پھول لے کر دو کپ پانی میں اُبال لیں اور پھر چھان کر اس میں زیتون کا گرم تیل ملا کر مکس کر لیں۔
ایلڈر فلاور
ہمارے ہاں یہ بڑی کثرت سے دستیاب ہے لیکن اسے عموماً نظر انداز کر دیا جاتا ہے۔مسحور کن خوشبو کے حامل اس پھول کو مختلف پرفیومز،لوشنز اور کریمز میں استعمال کیا جاتا ہے۔

یہ سکون بخش ہونے کے ساتھ طبیعت کو بھی تازہ دم بناتا ہے اس کے علاوہ جلد کی مختلف شکایات میں بھی مفید ہے۔اس پھول سے ایک عمدہ کریم تیار ہو سکتی ہے۔روغن بادام 3 ٹیبل اسپون اور 4 ٹیبل اسپون ایلڈر فلاور لے کر کسی برتن میں رکھیں اور ہلکی آنچ پر تقریباً ایک گھنٹے تک پکنے دیں پھر اسے چھان کر اس میں گرم پانی آہستہ آہستہ ملائیں۔یہ جلد کو تقویت پہنچانے والا بہترین ماسک تصور کیا جاتا ہے۔


بابونہ یا کیمومائل
یہ عموماً مرطوب علاقوں اور سڑکوں کے کنارے زمین میں اُگتا ہے۔اس کے پھول ڈیزی کے پھولوں سے مشابہت رکھتے ہیں۔اس کی پروں جیسی خاکی رنگ کی پتیاں ہوتی ہیں۔اس میں ایک خاص قسم کی خوشبو ہوتی ہے جو پکے ہوئے سیب سے بہت زیادہ ملتی ہے۔یہ بوٹی حسن افزاء اشیاء میں استعمال کی جاتی ہے۔بابونہ کو پھنسیوں،جلدی سوزش کے علاج میں بھی استعمال کیا جاتا ہے۔

یہ جلد کے داغ دھبوں کو بھی دور کرتی ہے۔اس کی مدد سے ایک عمدہ تیل تیار ہوتا ہے۔نصف کپ خشک کٹے ہوئے بابونہ کے پھول اور چوتھائی کپ روزمیری کی پتیاں لے کر اُبلتے ہوئے پانی میں ڈال دیں اور اس میں ایک سن فلاور آئل ملا دیں۔اب اس آمیزے کو 30 منٹ تک گرم کریں اور پھر اسے ایک چوڑے منہ کے برتن میں اُنڈیل لیں۔اس برتن کے منہ پر باریک کپڑا لپیٹ کر ربر بینڈ یا ڈوری باندھ دیں اور کسی گرم جگہ پر ایک ہفتے کے لئے رکھ دیں۔

اس دوران روزانہ باقاعدہ اسے ہلاتی رہیں،جب تیل میں سے پھول کی خوشبو آنے لگے تو اسے چھان کر کسی صاف بوتل میں نکال لیں۔اس طرح یہ ایک تہائی رہ جائے گا،اب اس میں نصف کپ تیل ملا دیں اور چند منٹ تک گرم کر لیں۔اسے استعمال کرنے کا طریقہ یہ ہے کہ تیل کو بالوں میں جڑوں سے سروں تک لگا کر خوب مساج کیا جائے۔30 منٹ بعد بالوں کو سکاکائی پاؤڈر یا بیسن سے دھو لیں۔

مندرجہ ذیل طریقے سے تیار کردہ شیمپو سے دھو لیں۔ایک ٹیبل اسپون سیج کی پتیاں،ایک ٹیبل اسپون خشک بایونہ کے پھول اور چوتھائی کپ کوئی معیاری ہلکا شیمپو لیں یہ تمام چیزیں اُبلتے ہوئے پانی میں ڈال دیں پھر اسے چھان کر شیمپو کے ساتھ اچھی طرح حل کر لیں۔بالوں کے لئے قدرتی اشیاء کی آمیزش کے مزین یہ شیمپو بہت موٴثر ہے۔
روزمیری
روزمیری کا تیل خصوصاً بالوں کی مصنوعات میں استعمال کیا جاتا ہے۔

روزمیری کا تیل بالوں میں موجود سکری کو ختم کرنے کے ساتھ پٹھوں کو پُرسکون رکھتا ہے،ذہنی دباؤ میں بھی مفید ہے۔حسن افزاء قدرتی اشیاء میں پھل،پھول اور سبزیوں کے علاوہ پتیاں بھی شامل ہیں۔یہ پتیاں حسن کے اضافے میں نہایت اہم کردار ادا کر سکتی ہیں۔ان مفید پتیوں میں نیم،پودینہ،تلسی اور مہندی کو نمایاں مقام حاصل ہے۔
نیم
نیم کی پتیاں چکنی جلد کے لئے مفید ہیں۔

اسٹین لیس اسٹیل کی پتیلی کے اندر ایک کپ پانی اور ایک کپ نیم کی پتیاں ڈال کر 20 منٹ تک جوش دیں۔پھر ٹھنڈا کرکے چھان لیں۔اب اس پانی کو فریج میں رکھ دیں۔دن میں تین وقت نیم کی پتیوں سے تیار کئے ہوئے اس پانی کو اچھی طرح چہرے پر ملیں۔یہ عمل چند ہفتے جاری رکھیں،جلد تروتازہ ہو جاتی ہے اور نکھر جاتی ہے۔مہاسوں کے چھوڑے ہوئے بدنما داغ دھبوں کے علاج کے لئے بھی نیم کی پتیاں بہت مفید ہیں۔

ایک بالٹی کی مقدار پانی میں تھوڑی سی نیم کی پتیاں ڈال کر اسے اس قدر اُبالیں کہ پانی تین چوتھائی رہ جائے۔اسے ٹھنڈا کرکے چھان لیجیے اور اس سے غسل کیجیے۔نیم کے پانی کے اس غسل سے ایک ہفتہ میں ہی ناصرف داغ دھبے مدہم پڑ جاتے ہیں بلکہ مہاسوں اور دوسری جلدی بیماریوں میں بھی افاقہ ہوتا ہے۔بالوں کی کئی بیماریوں میں بھی نیم کی پتیاں مفید پائی گئی ہیں۔

اگر بال گرنے لگیں یا نکلنا بند ہو جائیں تو انہیں نیم کی پتیوں کے پانی سے دھونا شروع کر دیں۔
تلسی کی پتیاں
تلسی کی پتیوں کے رس کو شہد کے ساتھ ملا کر پینا صحت و حسن دونوں کے لئے مفید ہے۔روزانہ صبح نہار منہ تلسی کی پتیوں کے ڈیڑھ چمچہ رس کو پینے سے خون صاف ہوتا ہے اور چہرہ نکھر جاتا ہے۔ان پتیوں کو پیس کر ان کا لیپ کبھی کبھی بدن پر لگانے سے جلدی امراض سے حفاظت ہوتی ہے۔

تلسی کی پتیوں کے عرق کی سر میں مالش کرکے اس پر کپڑا باندھ کر سو جائیں۔دوسرے روز صبح سکاکائی صابن سے سر دھو ڈالیں ۔اس طرح بال مضبوط اور سر جوؤں سے محفوظ ہو سکتا ہے۔
پودینے کی پتیاں
پودینہ کی پتیوں کو بھی حسن میں اضافے کے لئے استعمال کیا جاتا ہے۔مہاسوں،کیل اور داغ دھبے دور کرنے کے لئے پودینہ کی پتیوں کو پیس کر لیپ بنا لیں اور رات کو سوتے وقت چہرے پر اچھی طرح مل لیں۔

صبح اُٹھ کر ٹھنڈے پانی سے دھو دیں۔چند ہفتوں میں چہرے پر ایک تازگی محسوس ہو گی۔پودینے کی پتیاں اُبال کر کسی کھلے منہ کے برتن میں ٹھنڈی جگہ پر رکھ دیں۔روزانہ ایک چائے کی پیالی کے چوتھائی حصہ کے برابر نہار منہ پینے سے بھی رنگت نکھر جاتی ہے۔اگر خالص پودینہ کو سرکہ کے ساتھ پیس کر چہرے کے داغ دھبوں اور مہاسوں پر لگایا جائے تو یہ چند ہی دنوں میں دور ہو سکتے ہیں۔
تاریخ اشاعت: 2022-05-13

Your Thoughts and Comments

Special Skin Care article for women, read "Jild Ki Nighdasht Aur Khubsurti Ke Liye Phool Patiyan" and dozens of other articles for women in Urdu to change the way they live life. Read interesting tips & Suggestions in UrduPoint women section.