Cosmetics Ki Maloomat

کاسمیٹکس کی معلومات

جمعرات اپریل

Cosmetics Ki Maloomat

ہر عورت خوبصورت اور منفرد نظر آنے کی خواہشمند ہوتی ہے اور خوبصورتی کے حصول کیلئے میک اپ کا سہارا لیتی ہے بہترین میک اپ کرنے کیلئے ضروری ہے کہ معیاری کاسمیٹکس استعمال کی جائیں۔ اس حوالے سے بیوٹی کاسمیٹک کی معلومات ہر عورت کو تھوڑی بہت ضرور ہوتی ہے اور ہونی بھی چاہیے کیونکہ اگر آپ ان مصنوعات اور انکے استعمال کے بارے میں مکمل آگاہی نہیں رکھیں گی تو ان کو درست طور پر استعمال نہیں کر پائیں گی زیر نظر فیچر میں ہم اہم بیوٹی کاسمیٹک کے بارے میں ہلکا سا تعارف بیان کررہے ہیں جو یقینا خواتین کی معلومات میں اچھا اضافہ ثابت ہوگا۔


کلینزنگ ملک :یہ بیوٹی محلول ہے اور بالکل دودھ کی طرح ہوتا ہے۔ اسے روئی کے ساتھ چہرے پر لگایا جا تا ہے اس کے استعمال سے چہرے پر جمی ہوئی گرد اور دھواں وغیرہ بالکل صاف ہو جاتا ہے اور چونکہ جلد بالکل صاف و شفاف ہو جاتی ہے اس لیے چہرہ روشن و چمکدار ہو جاتا ہے۔

(جاری ہے)

کلینزنگ ملک روغنی جلد کے لیے زیادہ مفید ہے۔
کلیزنگ کریم :یہ کریم بھی چہرے کی صفائی کے لیے بہت مفید ہوتی ہے۔

خشک جلد کی مالک خواتین اس کا زیادہ استعمال کرتی ہیں۔ کلینزنگ کریم انگلیوں کے پروں کی مدد سے لگائی جاتی ہے ہلکے ہلکے ہاتھوں سے لگانی چاہیے تاکہ جلد میں اچھی طرح جذب ہو جائے۔
موسچر ائزر : یہ وائٹ کریم کی طرح ہوتا ہے اور یہ کریم کے طور پر یا ٹیوب کی شکل میں بھی دستیاب ہے۔ اسے انگلیوں کے پو روں کے ذریعے استعمال کرنا چاہیے۔ اگر جلد خشک ہو اور اس پر سفیددھبے دکھائی دیتے ہوں تو اس کے استعمال سے یہ دھبے غائب ہو جاتے ہیں اس کی بنیاد میک اپ کو داضح کرنے کے لیے بہترین ہے۔

خشک جلد کی حامل خواتین میک اپ کرنے سے 10 منٹ قبل چہرے کو موئسچرائز کر لیں تو زیادہ بہتر نتائج حاصل کرسکتی ہیں۔
ا سکن ٹانک :اس بیوٹی محلول کا استعمال مکسنگ ملک کے استعمال کے بعد روئی کے ذریعے ہوتا ہے۔ اس کا بڑا کام مسامات کو میک اپ کے وقت بند کر دینا ہے اس طرح کاسمیٹک کے کیمیکلز جلد کے اندر سرائیت نہیں کر پاتے یعنی جذب نہیں ہو جاتے ہیں اگر کاسمیٹک جلد کے اندر داخل ہو جائیں تو یہ جلد کے لیے نقصان دہ ثابت ہو سکتے ہیں۔

یہ نارمل جلد پر استعمال کی جاتی ہے۔ اس کا استعمال جلد کو نرم ملائم اور چمکدار بنا دیتا ہے۔یہ کئی طرح کے رنگوں میں دستیاب ہوتی ہے۔
ایسٹریجنٹ لوشن:یہ محلول کی شکل میں اور مختلف رنگوں میں دستیاب ہے۔ یہ بھی جلد کے مسامات کو بند کرنے کا کام کرتا ہے۔ ابتدائی طور پر اس کے لگانے سے ہلکی سی جلن محسوس ہوتی ہے۔ یہ جلد سے سیاہ دھبوں کا خاتمہ کرتا ہے اور روغنی جلد کے لیے بہت موزوں خیال کیا جاتا ہے۔

اسے روئی کے ذریعے استعمال کرنا چاہیے۔
کولڈ کریم یا نائٹ کریم: بہت زیادہ خشک جلد کی مالک خواتین کو چاہیے کہ وہ اپنے چہرے ہاتھوں اور ٹانگوں پر رات کو سونے سے پہلے کولڈ کریم سے مساج کریں خیال رہے کہ اسے سوتے وقت ہی لگایا جائے اور صبح اٹھنے کے بعد آپ کی جلدخشک نہیں رہے گی اور کافی حد تک نرم و ملائم ہو جائے گی۔ یہ کریم قدرے کم خشک جلد کے لیے بھی مناسب ہوا کرتی ہے۔

کریم کو اپنی ہتھیلی پر رکھ کرمالش کریں۔
نورشنگ کریم : یہ کریم بھی کولڈ کریم کی ایک صورت ہے۔ جو جلد کو نرم کرتی ہے۔ گھریلو کام کاج کرنے والی خواتین نورشگ کریم ضرور استعمال کریں کیونکہ اسے استعال کرنے سے کام کاج کے با وجود خواتین کی جلد نرم ہی رہتی ہے چونکہ یہ کم چینی ہے۔ اس لیے اس کا استعمال گرمیوں میں ہی ہوسکتا ہے کی انگلیوں کی پوروں کی مدد سے لگائی جاتی ہے۔


آئی کریم :یہ کریم کولڈ کریم کی نسبت ہلکی اور تھوڑی گاڑھی ہوتی ہے۔ اس کااستعمال آنکھوں کے گرد پڑنے والے حلقوں اور دھبوں کو چھپانے کے لیے ہوتا ہے۔ یہ چھوٹے کنٹیز میں دستیاب ہوتی ہے۔ اگر آپ سلیقے سے اسے استعمال کریں تو ایک کنٹینر بہت دنوں تک چل سکتا ہے۔
فاونڈیشن :فاؤنڈیشن، محلول کریم اور اسٹک تینوں صورتوں میں دستیاب ہے۔ اس کا استعمال اس لیے ہوتا ہے کہ میک اپ سے پہلے یہ آپ کی جلد کو ہموار کرنے میں مدد دیتا ہے۔

فاوٴنڈیشن ہمیشہ اپنی جلد کی رنگت کی مناسبت سے لینا چاہیے یہ اسے انگلیوں کی پوروں کی مدد سے بھی لگایا جاسکتاہے۔ آج کل بازار میں اس مقصد کے لیے فوم سے تیار کردہ بیوٹی بلینڈرز بھی دستیاب ہیں۔
فیس پاوڈر: فیس پاوٴڈر کا استعمال فاوٴنڈیشن کے بعد کیا جاتا ہے۔ پاؤڈر سفید گلاب کا گلابی اور جلد کے رنگ کی مناسبت سے دستیاب ہوتا ہے۔ اسے بہت ہلکے پن کے ساتھ استعمال کرنا چاہیے۔

اس بات کویقینی بنالیں کہ یہ فیس پاوٴڈر فاوٴنڈیشن کے رنگ سے میچ کرتا ہو۔
کمپیکٹ: ایک چھوٹا موز پاوٴڈر کمپیکٹ کہلاتا ہے۔ گھر سے باہر جاتے ہوئے خواتین اسے اپنے پرس میں آسانی سے رکھ سکتی ہیں۔ یہ پھیلتا یابکھرتا نہیں ہے آپ کہیں بھی ہوں‘ بوقت ضرورت فوری طور پر اسے اپنے چہرے پر پف کر کے اپنے میک اپ کو تازہ کرسکتی ہیں لیکن یاد رہے کہ اس کے زیادہ استعمال سے آپ کے چہرے پر پاوٴڈر کا نشان رہ سکتا ہے۔

اس لیے اس کا استعمال کم کر یں۔
روژ: یہ بہت عام نہیں ہے اس لیے یقینا بہت سی خواتین کے لیے یہ نام نیا ہو گا۔ دراصل اس کا بنیادی مقصد آپ کے گالوں کوصحتمندی کی چمک و سرخی عطا کرتا ہوتا ہے۔یہ گلابی رنگ میں دستیاب ہے۔ اس گلابی رنگ میں ہلکی سی سرخی کی آمیزش ہوتی ہے۔ کریم اسٹک اور صابن کی ٹکیہ کی صورت میں دستیاب ہے کریم کو انگلیوں کی پوروں کی مدد سے لگایا جاتا ہے اورٹکیہ کو پف کے ذریعے پف بھی روژ کے ساتھ بازار میں مل جاتا ہے اگر آپ دن کے وقت روژ لگا رہی ہیں تو ہلکا سا لگائیں اور اگر رات کا وقت ہو تو ذرا گہرا رنگ مناسب رہے گا۔


بلش آن: یہ ہلکے گلابی اور گہرے گلابی دونوں رنگوں میں پیکٹ کی صورت میں دستیاب ہے۔ بظاہر تو یہ روژ کی طرح ہوتا ہے لیکن روژ سے زیادہ چمک پیدا کرتا ہے۔ اس لیے اس کا استعمال چہرے پر زیادہ بھلالگتاہے۔ اس کے شیڈز کو اپنی جلد کی مناسبت سے میچ کیا کریں یہ آپ کے چہرے کو گلابی رنگ سے سنوار دیتا ہے اور گالوں پر شفق کی لالی بکھیر دیتا ہے۔ اس کا استعمال پاوٴڈر کے استعمال سے پہلے کر نا چا ہیے۔


آئی شیڈو : یہ سبز‘ براوٴن نیلا‘ گرے اور سیاہ رنگوں میں دستیاب ہے۔ ویسے اگر آپ چاہیں تو آپ کو سفید آئی شیڈ بھی مل سکتا ہے۔ کریم کی شکل کے آئی شیڈ کو انگلی کے پوروں کی مدد سے اور پاوٴڈر کی شکل کے آئی شیڈ کو برش کے ذریعے استعمال کیا جا تا ہے۔آئی شیڈ وآ نکھوں کو رنگ عطا کرتے ہیں اور قریب قریب قوس و قزح کے تمام رنگوں میں دستیاب ہیں۔

ایسے رنگ آج سے چند دہائیاں قبل جن کے استعمال کے بارے میں سوچا بھی نہیں جاسکتا تھا۔ مردہ دلی کے ساتھ نیلے اور ہرے رنگ پرجمے رہنے کے بجائے زندگی سے بھر پور گلابی سنہری اور برونز سے آنکھوں کی خوبصورتی اُجاگر کریں
آ ئی لائنز: یہ بھی آنکھوں کے میک اپ کا ضروری جز ہے۔ یہ بلو براوٴن اور سیاہ رنگ کا کاسمیٹک پلکوں پر لائننگ کھینچنے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔

یہ لوشن اورٹکیہ دونوں صورتوں میں دستیاب ہے۔ آئی لائنر کی ٹکیہ کے لئے برش کا استعمال ہوتا ہے۔ اس کا استعمال آپ کی آنکھوں کی رات کو پر سار است مسکارا | یہ بھی براوٴن سیاہ اور بلو رنگ میں دستیاب ہے۔ آنکھوں کی پلیں اس کی مدد سے گہری لانی اور منی دکھائی دیتی ہیں۔ اس کا استعال برش کے ذریعے ہوتا ہے۔
مسکا را: یہ براؤن اور سیاہ رنگوں میں دستیاب ہوتا ہے آنکھوں کی پلکیں اس کی مدد سے گہری‘لانبی اور گھنی دکھائی دیتی ہیں اس کا استعمال برش کے زریعے ہے
یہ فوری طور پر پلکوں کو لمبا راورگھنا بنا کر دکھاتے ہیں۔

واٹر پروف مسکا را تمام دن آپ کو اس کے پھیلنے کی فکر سے دور رکھتا ہے۔
کاجل :یہ برصغیر کا بہت پرانا روایتی سنگھار ہے جو آنکھوں میں خوبصورتی پیدا کرنے کے لیے لگایا جاتا ہے کا جل کو خواتین بڑے شوق سے استعمال کرتی ہیں یہ ٹیوب اور پنسل کی صورت میں دستیاب ہے۔ کاجل کو انگلی کے پور میں ہلکا سا لگا کر آنکھ میں لگاتے ہیں جبکہ اسے جست تا نبے یا لکڑی کی سلائی سے بھی آنکھوں میں لگایا جاتا ہے اس کے مسلسل استعمال سے آنکھیں مستقل سیا ہ دکھائی دیتی ہیں۔


ہیڈ لوشن: سرد موسم میں خشک جلد مزید خشک ہو کر بے رونق سی ہو جاتی ہے۔ ہاتھوں کی جلد کو خوبصورت اور نرم و ملائم بنانے کے لیے خاص طور پر سرد موسم میں ہینڈ لوشن استمال کرتے ہیں۔ ویسے ہینڈ لوشن کا استعمال چہرے کی خشک اور پھٹی ہوئی جلد پر بھی کیا جاسکتا ہے تا کہ سرد موسم میں جلد نرم و ملائم رہے۔
لپ اسٹک :لپ اسٹک کے مقابلے میں زیادہ گہرے رنگ کی لپ پنسل استعمال نہ
کریں خصوصا ہلکے رنگوں کے ساتھ گہرے شیڈ کی لپ پنسل استعمال کرنے سے گریز کریں۔

لپ پنسل کا شیڈ آپ کے ہونٹوں کے قدرتی رنگ سے مشابہ اورلپ اسٹک سے ہلکا ہو تو بہتر ہے۔ اگر آپ کے ہونٹ بڑے بڑے ہیں تو آپ پنسل استعمال نہ کریں بلکہ صرف ہلکے قدرتی شیڈ پرمشتمل لپ اسٹک پر گزارہ کریں۔ لپ پنسل کی نوک زیادہ نو کیلی نہیں ہونی چاہیے استعمال کرنے سے پہلی پنسل کو اپنی تھیلی اس لیے اس کا استعمال ڈارک شیڈ کی پہلی سے لگائی ہوئی لپ اسٹک پر کرنا چاہیے۔

ہلکے رنگ کی لپ اسٹک پر اس کا استعمال نہ کیا جائے۔
ہئیر سپرے:بالوں کو مختلف انداز دینے کیلئے ہیئر سپرے کیا جاتا ہے یہ بالوں کو مطلوب اسٹائل میں ڈھالنے کے کام آتا ہے اور باہر کی ہوا سے یہ ڈسڑب بھی نہیں ہوتالیکن اسپرے کا استعمالروزانہ نہیں کبھی کبھی کرنا چاہیئے یعنی صرف ضرورت کے وقت کسی تقریب میں جانے کیلئے یا پھر دعوت وغیرہ میں شرکت کیلئے جائیں تو ہیئر اسپرے کا استعمال کریں بال سیٹ رہیں گے

تاریخ اشاعت: 2018-04-05

Your Thoughts and Comments

Special New Trends Of Beauty article for women, read "Cosmetics Ki Maloomat" and dozens of other articles for women in Urdu to change the way they live life. Read interesting tips & Suggestions in UrduPoint women section.