بند کریں
خواتین مضامینبچے کی نگہداشت

بچے کی نگہداشت

کیا آپ بچوں کو پیٹو بنا رہے ہیں

سائنسدانوں کے مطابق بچے کے ابتدائی2ہزار دن ان کی غذائی عادات تشکیل دینے میں نہایت اہم کردار ادا کرتے ہیں ۔

ماں کا دودھ اور نومولود کی صحت

قدرت کی طرف سے ماں کا دودھ ایک نعمت ہے ۔یہ حقیقت ہے کہ خواتین کی چھاتیوں میں کسی اور وقت دودھ نہیں اُتر سکتا ،البتہ جب ان کے ہاں ولادت ہو جاتی ہے تو چھاتیوں میں دودھ اترتا ہے اور یہ نعمت نومولود کو حاصل ہوتی ہے ۔

بچوّں اور ماؤں میں غذائیت کی کمی‘بیماریوں کی جڑ

ہفتہ صحّت کے دوران سات کروڑ نومولود بچوّں ‘ماؤں کی سکریننگ
پنجاب میں تین لاکھ سے زائد بچے اور ایک لاکھ سے زائد خواتین غذائی قلت کاشکار پائی گئیں

نوعمر بچیوں کو ماں کی خاص ضرورت

وہ عمر جو گیارہ سے بارہ اور سولہ سے سترہ کے درمیان ہو نو خیز کہلاتی ہے اور یہی وہ موڑہے ‘جہاں سے نو جوانی کا آغاز ہوتا ہے اور یہ آغاز تبدیلیاں لے کر آتا ہے ۔ی

شیر خوار بچوں کا رونا

نومولود اور شیر خوار بچوں کے رونے سے اکثر والدین پریشان اور فکر مند ہوجاتے ہیں کیونکہ ان کے لئے یہ شناخت کرنا مشکل ہوجاتا ہے کہ آیا بچہ کسی تکلیف کے باعث رور ہا ہے یا پھر اس کا یہ رونا نارمل ہے ؟

ماں ایک ذمہ دار ہستی

ہر سمجھدار ماں کی کوشش ہوتی ہے کہ وہ بچپن سے ہی اپنے بچوں کی تربیت ایسے اخلاقی اصولوں پر کرے جس سے آگے جا کر نہ صرف کامیاب انسان بنے بلکہ اخلاق حسنہ میں بھی وہ سب کیلئے قابل رشک ہو

اولاد کی پرورش میں ماں کا کردار

س میں کوئی شک نہیں کہ بچے سحری اور افطاری کا اہتمام بڑے شوق سے کرتے ہیں۔ جونہی سورج آنکھیں دکھانا کم کرتا ہے اس کی تپش ذرا کم ہونے کو ہوتی ہے تو افطاری کی تیاری شروع ہو جاتی ہے۔وہ بچے ہی کیا جو جم کر افطاری نہ کریں

نومولود بچوں کی معمول کی نگہداشت کے لئے چند کار آمد تجاویز

نومولود بچوں کے بارے میں ایک عام نظریہ ہے کہ بڑے بچوں کی نسبت ان کی بنیادی ضروریات کا خیال رکھنا آسان کام نہیں ہے

اولا د پر تربیت کا احسان جتانا

والدین، دو معزز اورمکرم ہستیاں! جن کی رضا میں اللہ کی رضاہے۔ لیکن کیا والدین کے لیے اجازت ہے کہ اولاد پراپنی کی گئی اچھی تربیت کا احسان جتائیں؟

نومولود اور غذائی احتیاط

حاملہ خواتین کو ہر قسم کی الجھنوں اور پریشانیوں سے دور رہنا چاہیے کیونکہ ڈپریشن زدہ مائوں کے بچے جسمانی اور ذہنی طور پر کمزور پیدا ہوتے ہیں

بچوں کی عادتیں

کھانے پینے اور سونے کی بنیادی جسمانی عادتیں بچے کو زندگی کے پہلے چند مہینوں میں پڑ جاتی ہیں بچے میں ان عادتوں کو راسخ کرتے وقت والدین کی لاپرواہی یا کسی قسم کے تادیبی ضبط و نظم کی شدت سے اختیار کرنا بہت مضر ثابت ہوتا ہے

معاشرتی نشوونما اور تفریح

کمزور بچہ طاقت ور بچوں سے خائف رہتا ہے اسے اپنے آپ پر اعتبار نہیں ہوتا اس طرح اس میں احساس کمتری پیدا ہونے کا احتمال ہوتا ہے اور یہ اس کی معاشرتی نشوونما کے لیے مضرہوسکتاہے
فہرست 1 سے 12  تک   (116 ریکارڈز )