Kabhi Uthaya Kabhi Bithaya - Puzzle No. 565

کبھی اٹھایا کبھی بٹھایا

kabhi uthaya kabhi bithaya

مزید پہیلیاں

یقینا وہ بزدل ہے جس نے بھی کھایا

Yaqeenan Wo Buzdil Hy Jis Ny Khaya

خشکی پر نہ اس کا پاؤ

Khuski Par Na Us Ka Paon

سر پر ڈال کے تپتی دھوپ

Sar Per Daal K Tapti Dhoop

رکھی تھی وہ چپ چاپ کیسی

Rakhi Thi Wo Chup Chaap Kaise

جانے بوجھے ایک خدائی

Jany Bojhy Ek Khudai

چار ہیں رانیاں‌اور اک راجا

Char Hen Ranian Aur Aik Hai Raja

اوروں کے قبضے میں‌ ہے

Auro Ke Qabzy Me Hai

ہاتھ میں‌ لے کر ذرا گھمایا

Hath Me Leke Zara Ghumaya

اس سے خود بولا تو نہ جائے

Us Sy Khud Bola Tu Na Jaye

دیکھے ہیں‌ ایسے بھی سمندر

Dekhe Hain Aise Bhi Samandar

ہر اک جانے اس کا نام

Har Ek Jaane Uska Naam

نگر نگر مکے چکر کاٹے

Nagar Nagar Mukky Chakkar Kate

Your Thoughts and Comments