Jany Bojhy Ek Khudai - Puzzle No. 595

جانے بوجھے ایک خدائی

jany bojhy ek khudai

مزید پہیلیاں

بنا جڑوں کے پودا پالا

Bina Jaro Ke Poda Pala

بے شک پاؤں‌ کے نیچے آئیں

Beshak Paon Ke Neeche Aaye

موری سے نکلا اک سانپ

Mori Se Nikla Ek Saanp

جب کھائیں‌ تو سب کو بھائیں

Jab Khayen Tu Sab Bhaien

مت جانو کچھ ایسا ویسا

Mat Jano Kuch Aisa Waisa

کتیا بھونک کہ جو کہتی ہے

Kutiya Bhounk Ke Jo Kehti Hai

بکھر بال کمر میں پیٹی

Bikhre Baal Kamar Me Peti

جاگو تو وہ پاس نہ آئے

Jagu Tu Wo Paas Na Aaye

کوئی رنگ نہ بیل نہ بوٹے

Koi Rang Na Bale Na Booty

کل کا بچہ ایک نادان

Rakhi Thi Wo Chup Chaap Kaise

کچھ قطرے آنکھوں میں ڈالے

Kuch Qatre Ankhon Me Dale

ہے شرط اس میں خاموش ہونا

He Sharat Is Me Khamosh Hona

Your Thoughts and Comments