بند کریں
بدھ نومبر

وقت اشاعت: 13/11/2018 - 22:18:16 وقت اشاعت: 13/11/2018 - 16:38:15 وقت اشاعت: 13/11/2018 - 15:20:05 وقت اشاعت: 13/11/2018 - 14:28:14 وقت اشاعت: 12/11/2018 - 23:55:31 وقت اشاعت: 12/11/2018 - 14:47:10 وقت اشاعت: 10/11/2018 - 20:37:32 وقت اشاعت: 10/11/2018 - 17:28:18 وقت اشاعت: 08/11/2018 - 22:51:13 وقت اشاعت: 06/11/2018 - 17:03:02 وقت اشاعت: 06/11/2018 - 13:49:25 وقت اشاعت: 05/11/2018 - 18:15:51

فضائی آلودگی سے بچوں کی ہلاکتوں میں بھارت پہلے ،پاکستان تیسرے نمبرپر

کراچی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 03 نومبر2018ء)فضائی آلودگی سے بچوں کی ہلاکتوں میں بھارت پہلے جبکہ پاکستان تیسرے نمبرپرہے۔ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کی رپورٹ کے مطابق ہر ایک لاکھ میں سے بھارت میں 50 بچے فضائی آلودگی کی وجہ سے ہلاک ہو تے ہیں، نائیجیریا کا دوسرا، پاکستان تیسرے نمبر پر آگیا۔ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کی تازہ رپورٹ کے مطابق فضائی آلودگی میں خطرناک حد اضافہ ہوا ہے جس سے پاکستان سمیت دنیا بھر کے مختلف ممالک اس کی زدہ میں آچکے ہیں ، پڑھتی ہو ئی اس فضائی آلودگی میں پہلا نمبر بھارت کا ہے عالمی ادارہ صحت کے مطابق ہر ایک لاکھ میں سے بھارت میں 50 بچے فضائی آلودگی کی وجہ سے ہلاک ہو تے ہیں، عالمی ادارہ صحت کے مطا بق اگر بھارت فضائی آلودگی روکنے میں کامیاب ہو جاتا ہے تو ایسی صورت میں چار سال تک اس کے شہریوں کے عمر میں اضافہ ہو سکتا ہے۔

دوسرے نمبر پرنائیجیریاہے جو فضائی آلودگی کا شکار ہے، آلودگی میں اضافہ ہونے کی وجہ سے عوام کو سانس لینے میں مشکلات کا سامنا ہے،تیسرے نمبر پاکستان ہے جو اس مہلک فضائی آلودگی سے دوچارہے ، عالمی ادارہ صحت کی رپورٹ کے مطابق ہر دس میں سے نو افراد آلودہ فضا میں سانس لیتے ہیں، فضائی آلودگی سے سب سے زیادہ بچے متاثر ہوتے ہیں، فضا میں شامل سلفیٹ اور بلیک کاربن پھیپھڑوں اور دل کے امراض کا سبب بنتے ہیں, پندرہ سال سے کم عمر 93 فی صد بچے زہریلی ہوا کے باعث سانس کی مختلف بیماریوں میں مبتلا ہوکر موت کی وادی میں چلے جاتے ہیں۔
03/11/2018 - 16:05:50 :وقت اشاعت

:متعلقہ عنوان