بارش اور سردی سے آزادی مارچ اور دھرنے میں شریک عام کارکنان کی مشکلات بڑھ گئیں،

قائدین سہولیات سے آراستہ کنٹینر، اپنے گھروں اور ہوٹلوں میں مقیم سی ڈی اے کے متعلقہ شعبے پنڈال میں صفائی، پانی کی نکاسی اور سردی سے متاثرہ کارکنوں کو طبی امداد کی فراہمی میں مصروف رہے

بارش اور سردی سے آزادی مارچ اور دھرنے میں شریک عام کارکنان کی مشکلات ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین - اے پی پی۔ 07 نومبر2019ء) شدید بارش سردی کی شدت بڑھنے کی وجہ سے جے یو آئی(ف) کے آزادی مارچ اور دھرنے میں شریک عام کارکنان کی مشکلات بڑھ گئیں جبکہ قائدین ہر قسم کی سہولیات سے آراستہ کنٹینر، اپنے گھروں اور ہوٹلوں میں مقیم ہیں۔ بدھ اور جمعرات کی درمیانی اور جمعرات کی صبح کی بارش سے کارکنان بارش اور ٹھنڈ سے بچائو کے لئے بے یارو مددگار مارے مارے پھرتے رہے خیمے اور پلاسٹک شیٹیں بھی کار گر ثابت نہ ہوئیں۔

دھرنا انتظامیہ کی جانب سے بارش اور سردی کے حوالے سے کارکنان کیلئے کوئی مناسب انتظامات نہیں کیے گئے جبکہ قائدین کے گھروں اور ہوٹلوں میں قیام کا بندوبست کیا گیا ہے۔ پنڈال میں بھی موسمی اثرات سے قائدین کو بچانے کے لئے سہولیات سے آراستہ کنٹینرموجود ہے۔

(جاری ہے)

قائدین کو پنڈال میں موجود کارکنوں کی مشکلات کا کوئی لحاظ نہیں ہے اوردھرنے کے شرکاء پرایک ایک رات بھاری گزر رہی ہے اور شرکاء دھرنہ انتظامیہ پر نالاں نظر آئے ہیں۔

بڑی تعداد میں شرکاء قریبی عمارتوں میں پناہ لئے دکھائی دیئے۔تاہم وزیراعظم عمران خان نے دھرنے کے شرکاء کی مشکلات کے پیش نظر چیئرمین سی ڈی اے اور متعلقہ اداروں کو فوری ہدایات جاری کیں جس کے تحت سی ڈی اے کے متعلقہ شعبے پنڈال میں صفائی اور بارشی پانی کی نکاسی اور سردی سے متاثرہ کارکنوں کو طبی امداد کی فراہمی میں مصروف رہے۔ امدادی کارروائیوں کا سلسلہ جمعرات کو بھی جاری رہا تاکہ شرکاء دھرنا کی مشکلات کو کم سے کم کیا جا سکے۔

Your Thoughts and Comments