رام مندر کو وہیں اوراصل شکل میں تعمیر کیا جائے گا،وشو ہندو پریشد کا اعلان

گئو رکشا، پروقار ہندوسماج کو متحد کرنا اولین ترجیح،عوامی خدمات ، برابری، ہم آہنگی، خیرسگالی ، روایات اور فلاح و بہبودکیلئے اقدامات اٹھائیں جائیں گے، صدر وشو ہندو پریشد

جمعہ اپریل 21:28

نئی دہلی(اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 20 اپریل2018ء) وشو ہندو پریشد کے نئے صدر وشنو سدا شوکوکجے نے کہا ہے رام مندر کو وہیں اور اسکی اصل شکل میں بحال کیا جائے گا،گئو رکشااور پروقار ہندوسماج کو متحد کرنا اولین ترجیح ہے،عوامی خدمات ، برابری، ہم آہنگی، خیرسگالی ، روایات ، یتیموں ، بیوائوں اور بزرگوں کی فلاح و بہبود اور انکے احترام کیلئے اقدامات اٹھائیں جائیں گے۔

بھارتی میڈیا کے مطابقوشو ہندو پریشد کے نئے صدر وشنو سدا شوکوکجے نے کہا کہ رام مندر کی تعمیر، گئو رکشااور پروقار ہندوسماج کو متحد کرنا ان کا اہم مقصد ہے۔انہوں نے کہا کہ تنظیم میں نئے عہدیدار شامل ہوئے ہیں مگر ان کے مقصد اور ایجنڈے میں کوئی تبدیلی نہیں۔وشو ہندو پریشد کی تاریخ پر تبصرہ کرتے ہوئے کوکجے نے کہا کہ 1964 سے چنمیا نند جی مہاراج ، کے ایم منشی اور وڈودرا کے جے چندرباریہ جیسے لوگوں نے تنظیم کیلئے اہم خدمات انجام دیں۔

(جاری ہے)

عوامی خدمات ، برابری، ہم آہنگی، خیرسگالی ، روایات ، یتیموں ، بیوائوں اور بزرگوں کی فلاح و بہبود اور انکے احترام کیلئے بہت کچھ کیا جانا باقی ہے جس کی ذمہ داری نو منتخب امیدواروں کے کندھوں پر عائد ہوتی ہے۔کوکجے نے کہا کہ رام مندر کی تعمیر ان کے ایجنڈے کی اولین ترجیح ہے۔اشوک سنگھل نے کہا کہ ایودھیا میں ہزاروں گاو?ں سے لائی گئیں اینٹیں، تراشے ہوئے پتھر اور ستون وغیرہ مندر کی تعمیر کے منتظر ہیں۔ایودھیا میں مندر وہیں بنے گا خواہ عدالت کے فیصلے سے بنے یا پارلیمانی قانون سے لیکن ہمارا ارادہ مندر وہیں اور اسی شکل میں بنانے کا ہے جو لوگوںکے تعاون سے مکمل ہوکر رہے گا۔

متعلقہ عنوان :