بند کریں

مزید عنوان

لطیفے

ہیلو

باپ بیٹے سے

دو قیدی

ایک لڑکا سڑک پر

ایک شخص

پاگل خانے

ڈاکڑ

دودھ والا

آدم خور

کھٹا کھٹا سا دودھ

مزید لطیفے

مزاحیہ ادب

آموں سے علاج

مرحوم کا انتقال ہیضے میںہوا تھا مگر آپ جانتے ہیں کہ سپاہی اگر گھوڑے پر گولی کھائے یا پیراک کا مزار دریا کی موجوں میں بنے تو اس پر کسی کو تعجب نہیں ہوتا چاہیے، بلکہ سچ پوچھیے تو سپاہی اور پیراک کے لیے یہ نہایت شرم نام بات ہے کہ چار پائی پر ایڑیاں رگڑ رگڑ کر مریں۔بالکل اسی طرح مرحوم نے ہیضے میں جاں بحق ہو کر گویا اپنی مٹی ٹھکانے لگا دی

توپ اُٹھا کر سمندر میں پھینک دی

حضرات بعض لوگ بڑے بڑبولے ہوتے ہیں مجھے ایسے لوگوں سے بڑی چڑ ہے ایک فرانسیسی نواب بیرن ڈی ٹاٹ نے ایک کتاب میں اپنا ایک معرکہ یوں بیان کیا ہے ۔

میں نے قیدی کیسے چھڑائے

اب سنیئے کہ میں نے کیسے انگریزی قیدیوں کو فرانسیسوں کی قید اور ظلم کے پنجے سے نکالا ۔ جبرالٹر سے انگلستان واپسی کا سفر میںنے فرانس کے راستے کیا میں چونکہ غیر ملکی تھا لہٰذا مجھے کوئی تکلیف نہ ہوئی۔

چل میرے غبارے

ایک بار میںنے ایک اتنا بڑا غبارہ بنا یا کہ آپ یقین نہ کریں گے لندن اور گردو نواح کے شہروں میں جتناریشمی کپڑا بھی موجود تھاوہ سارا لے کر میں نے اس کے بنانے میںخرچ کر دیا۔

کریکٹر کی قیمت!

کل کی غیر منصفانہ بارش کے دوران ایک قلندر کی بات ہمیں پانی پانی کر گئی اس بارش کو ہم نے غیر منصفانہ اس لیے کہا کہ یہ کہیں ہوئی اور کہیں نہیں ہوئی۔

نافرمانی کی سزا!

فضلو ایک غریب لکڑ ہا را تھا سارا دن لکڑیاں کاٹ کاٹ کر مشکل سے ایک آدھ روپیہ کماتا مگر اس کی بیوی نصیبن بہت فضول خرچ، نافرمان، ضدی اور بدزبان تھی اس لیے ان کا گزارہ مشکل سے ہوتا تھا ۔

اقبال کے گانے کا عاشق!

میرا ایک لا ہور یا دوست حج کرنے گیا تو وہاں سخت بیمار پڑ گیا اس نے خانہ کعبہ میں بیٹھ کر اپنے والد کو خط لکھا کہ میں شدید بیمار ہوں‘ آپ داتا دربار جا کر میرے لیے دعا کریں

سنہء

اوروں کا حال معلوم نہیں، لیکن اپنا تو یہ نقشہ رہا کہ کھیلنے کھانے کے دن پانی پت کی لڑائیوں کے سن یاد کرنے، اور جوانی دیوانی نیپولین کی جنگوں کی تاریخیں رٹنے میں کٹی
مزید مزاحیہ ادب

مزاحیہ کالم

اچھی سی سواری

آج تو دفتر میں کام کرکر کے کمر ہی ٹوٹ گئی تھی ہماری بڑی مشکل سے جسم کے باقی حصوں کو اٹھائے ہوئے ہم کسی اچھی سواری کی تلاش میں تھے۔ویسے تو ہم روزانہ بس میں ہی جایا کرتے تھے، مگر آج بس میں جانے کی ہمت نہیں پڑ رہی تھی سوچا کوئی اچھی سی سواری ہونی چاہیے، مگر،مگر، کون سی؟

بیوی سے لڑنے کے فوائد

غور فرمائیے !! آج تک آپ نے بیوی سے جھگڑے کے نقصانات پڑھے ہونگے تو آئیے آپ کو فوائد سے متعارف کراتے ہیں۔

مشتاق احمد یوسفی سے ملاقات: ایک دیرینہ خواب کی تعبیر

یُوسفی صاحب! بات چیت میں تو آپ بالکل ٹھیک ٹھاک ہیں مگر تحریر میں بالکل لُچّے لگتے ہیں

تلاش گمشدہ

ایک روز ایک مُنہ بولی شاعرہ بھی ہمارے در پَے آزار ہوگئیں کہ ناچیز کی تازہ غزل سُنئے۔ غزل سُن کر ہمیں تو کچھ کچھ شک ہونے لگا کہ یہ اپنی غزلیں بھی ناچیز ہی سے لکھواتی ہیں کیونکہ ایسی گھٹیا غزلیں یہ خود لکھ ہی نہیں سکتیں۔
🌄

نیا اینگل

ہم نے ایک صاحب کو دیکھا جو یوٹیلٹی اسٹور کے باہر لمبی لائن کو دیکھ کر رو رہے تھے، وجہ پوچھی تو بھڑک اٹھے”ہم پر حکومت کرنے والوں کی سمجھ نہیں آتی، پہلے کے حکمرانوں نے ہمیں ترغیب دی تھی
🌄

حضور کو عادت ہے بھول جانے کی۔شوکت علی مظفر

ملک صاحب کی عادت ہے وہ کسی کام کے سلسلے میں جب بھی وعدہ کرتے ہیں تو ہم سمجھ جاتے ہیں اب یہ کام ہونے کا نہیں، کیونکہ ان کے وعدے کا مطلب ہی یہ ہوتا ہے ”بھول جاؤ!“
🌄

ابتر اشتہارات۔دل آویز

آوارگی میں تمام دن جوتے چٹخانے والے حضرات سے گزارش ہے کہ وہ کسی امیر زادی سے شادی کا ڈھونگ رچا کے نہ صرف گھر دامادی جیسی فرمانبردار نیز منافع بخش آفر قبول کریں
🌄

ہم ایک رسالہ نکالیں گے

ہم ایک رسالہ نکالیں گے۔۔۔۔۔۔۔۔۔جی صا حبو چند دنوں پہلے بدن کی بالائی اور نسبتا ویران منزل میں ایک عجیب طرح کا سودا سمایا کہ ہم ایک رسالہ نکالیں گے۔
مزید مزاحیہ کالم

مزاحیہ مضامین

ماجراچاند پر چڑھنے اُترنے کا

صاحبو! تم جانتے ہو کہ جنگ میں فتح و شکست نصیبوں سے ہوتی ہے کبھی آدمی جیتتا ہے کبھی ہارتا ہے ایک بار غینم کی تعداد اتنی تھی کہ ہم تاب نہ لا سکے میں بھی گرفتار ہوا اور ترکوں نے مجھے غلام بنا لیا۔ کام میرا سخت تو نہ تھا لیکن کچھ عجب طرح کا تھا یعنی سلطان کے چھتے کی مکھیوں کو ہر صبح چرانے کے لیے سبزہ زار میںلے جانا ۔

بالکل سچے قصے شکار کے

صاحبو۔ یہ واقعہ جو میں سنانے والا ہوں میرے الّھڑپنے کے دنوں کا ہے ابھی میں فوج میں نہ گیا تھا بالکل آزاد تھا جہاں چاہوں جاوں۔ جو چاہوں کروں آج بھی وہ مزے کے دن یاد آتے ہیںخیر ایک بار میں یاروں کے ساتھ سیرو شکار کو نکلا اور جنگل میں ایک جھونپڑے میں جا بسیرا کیا۔

ہلال و حرام

جب سے امریکہ کے ریاضی دان پروفیسر الیگزینڈر نے کہا ہے کہ محترمہ زمین کا جھکاو¿ سور کی طرف بہت بڑھ گیا ہے جس کی وجہ سے شدید موسم اور دیگر آفات نازل ہو رہی ہیں۔

سو جانا توپ کی نال میں

انگلستان میں میرا پہلی پار جانا اتفاقیہ ہوا یہ موجودہ بادشاہ کے راج کے ابتدائی دنوں کی بات ہے میں کچھ سامان جہاز کے راستے ہمبرگ بھیجنے کے لیے قریبی بندرگارہ پر گیا تھا ۔

ہرن رے ہرن تیرے سر پر بیری

ایک روز کی بات ہے سارا دن شکار کھیلتے میرے چھرے اور گولیاں صرف ہو چکی تھیں کہ ایک بارہ سنگھے سے سامنا ہو گیا۔ اب کیا کیا جائے؟ بارود تو تھا لیکن گولیوں کی جگہ کیا ڈالا جائے اتفاق سے میں اس وقت کھڑا بیر کھا رہا تھا

فائیوسٹار ہوٹل

سفید پوش وہ ہے جو ماسی برکتے کے تندور سے کھانا کھا کر نکلے اور ہوٹل ہلٹن کے باہر کھڑے ہوکر خلال کرتا پایا جائے ۔ مگرکچھ سفید پوش ایسے بھی ہیں جن کا ”مفتا“ اگر کسی فائیو سٹار ہوٹل میں لگ جاءتو وہ وہاں سے کھانا کھا کر نکلتے ہیں اور عادتاََ ماسی برکتے کے تندور کے سامنے کھڑے ہو کر خلال کرنے لگتے ہیں۔

کیلنڈر راورتھرمامیٹر

گھنٹہ گھر والے فیصل آباد میں پنجاب میڈیکل کالج کی سٹوڈنٹس یونین نے گزشتہ ہفتے ایک مشاعرے کا اہتمام کیا تھا۔ مشاعرے کے منتظمین نے محفل کے اختتام پرشعراءکومختلف وٹامنز کی چند بوتلیں اور ایک ایک تھرمامیٹر بطور تحفہ پیش کیا۔

ملک کا سب سے بڑا مسئلہ!

میں نے گھر سے آفس جانے کے لیے گاڑی سٹارٹ کی تو تھوڑی دیر بعد ہو بند ہو گئی اور پھر میری تمام تر کوشش کے باوجود سٹارٹ نہ ہو سکی۔ میں اپنے گھر کے قریب واقع ایک ورکشاپ کے میں مکینک کو لے کر آیا جس کی کوشش سے تھوڑی دیر بعد ہی گاڑی سٹارٹ ہو گئی۔

غیر تربیت یافتہ ڈرائیور اور” تربیت یافتہ“ ٹریفک پولیس!

مجھے ایک عادت جلد بازی کی بھی ہے۔ فلائٹ اناوٴنس ہوتے ہی میں اٹھ کھڑا ہوتا ہوں اور جہاز میں سوار ہونے والا پہلا مسافر ہوتا ہوں چنانچہ ایک گھنٹہ بند جہاز میں بیٹھ کر اباسیاں لیتا رہتا ہوں

لیکن کبھی کبھی اسے تنہا بھی چھوڑ دے

ہمارے ہاں بہت سے مریض ایسے ہیں جو زندگی ڈاکٹر کے دیئے ہوئے شیڈول کے عین مطابق گزارتے ہوئے اور قدرت کے مرتب کئے ہوئے شیڈول کے مطابق انتقال کر جاتے ہیں مگر کچھ اللہ کے بے نیاز بندے ایسے بھی ہیں جو بیماری میں بھی وہی کرتے ہیں جو عالم صحت میں کرتے تھے

صبح کرنا شام کا……!

انسان جب مصروف زندگی گزار رہا ہوتا ہے تو صرف یہ کہ اسے اس زندگی کی قدرصحیح طور پرمحسوس نہیں ہوتی بلکہ وہ اپنی پے در پر مصروفیات کی وجہ سے کبھی کبھی خود کو قابل رحم بھی محسوس کرنے لگتا ہے

خواتین کی حق تلفی

تحریک ِآزادی ٔ نسواں کی علمبردارخواتین سے امریکہ میں تو میری مڈبھیڑ ہوتی رہتی تھی اور ان سے علمی مباحثے بھی ہوتے تھے مگرپاکستان میں کبھی ان سے دوبدو ملاقات نہیں ہوئی۔

جنگل کا بادشاہ

بہت عرصہ پہلے میں نے ایک فلم ’’پھنے خان‘‘ دیکھی تھی جس میں علائو الدین مرحوم نے ’’پھنے خان‘‘ کا کردارادا کیا تھا۔ پھنے خان لاہور کا مخصوص کردار ہے۔

جان بچانے کے طریقے!

جان کی حفاظت تو شریعت کی رو سے بھی ضروری ہے چنانچہ ہمیں چاہیے کہ اپنی جان بچانے کے لئے منہ بند رکھیں کیونکہ شہر میں گردوغبار بہت ہے

پہنچنا انسان کا چاند پر

ایک پڑھا لکھا جاہل انہیں اس امر کا یقین دلانے کی سرتوڑ کوشش کر رہا تھا کہ انسان واقعی چاند پر گیا ہے۔حجام شیو کرتے کرتے تھوڑی تھوڑی دیر کے بعد اس بے خبر کو گھور کر دیکھتا ہے اور پھر اپنے کام میں مشغول ہو جاتا

غصہ کمہار پر!!

گزشتہ روز ایک دوست سے ملاقات ہوئی تو میں نے انہیں اپنایہ پرابلم بتایا اور کہا کہ اس کی وجہ سے بہت عذاب میں ہوں ‘اس نے میرامسئلہ حل کرنے کی بجائے مجھے ایک صوفی کا قصہ سنایا
مزید مضامین