فلپائن، سپریم کورٹ نے ملک کی پہلی خاتون چیف جسٹس ماریا لورڈس سرینو کو ان کے عہدے سے برطرف کردیا

جمعہ مئی 13:57

منیلا۔ (اُردو پوائنٹ اخبارتازہ ترین۔ 11 مئی2018ء) فلپائن کی سپریم کورٹ نے ملک کی پہلی خاتون چیف جسٹس ماریا لورڈس سرینو کو ان کے عہدے سے برطرف کر دیا۔ ماریا لورڈس سرینو کو فلپائن کے صدر روڈریگو ڈرٹے نے اپنا دشمن قرار دیا تھا، سرینو نے حکومت کے متعدد متنازع اقدامات پر ایکشن لیا تھا۔ فلپائنی سپریم کورٹ کی چیف جسٹس ماریا لورڈس سرینو کے خلاف حکومت نے ایک پٹیشن سپریم کورٹ داخل کرائی تھی جس مین ان کی تقرری کے عمل کو خلاف ضابطہ قرار دیا تھا۔

(جاری ہے)

اس پٹیشن کی سماعت کے لئے فلپائنی سپریم کورٹ کے 8 رکنی بنچ میں سے 6 نے ان کو ہٹانے کے حق میں فیصلہ دیا تاہم فلپائینی اپوزیشن نے فیصلے پر اپنے تحفظات ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ ماریا لورڈس حکومتی اختیارات کے بے جا استعمال کے خلاف ایک ڈھال تھیں جنھیں کٹھ پتلی سپریم کورٹ نے ہٹا دیا ہے۔ سپریم کورٹ کے ترجمان کے مطابق سرینو کو فوری طور ان کے عہدے سے ہٹادیا گیا ہے اور ان کی جگہ نئی تقرری کے لئے سفارشات دینے کے لئے جوڈیشل اور بار کونسل کو کہہ دیا گیا۔ جج سرینو لورڈس نے فیصلے خلاف اپیل دائر کرنے کا اعلان کیا ہے۔