پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان کی اہلیہ بشریٰ بی بی کے ساتھ نماز پڑھنے کی ویڈیو وائرل

Sumaira Faqir Hussain سمیرا فقیرحسین پیر مئی 15:01

پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان کی اہلیہ بشریٰ بی بی کے ساتھ نماز پڑھنے ..
اسلام آباد (اُردو پوائنٹ تازہ ترین اخبار۔ 28 مئی 2018ء) : پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان کی اپنی تیسری اہلیہ بشریٰ بی بی کے ساتھ حال ہی میں سوشل میڈیا پر تصاویر وائرل ہوئیں جنہیں صارفین نے بے حد پسند کیا، یہ تصاویر عمران خان کی تیسری شادی کے بعد جاری کی گئی پہلی آفیشل تصاویر تھیں جن میں عمران خان اپنی اہلیہ بشریٰ بی بی کے ہمراہ گھر کے لان میں بیٹھے تھے۔

تاہم اب سوشل میڈیا پر عمران خان اور ان کی تیسری اہلیہ بشریٰ بی بی کی ایک ویڈیو وائرل ہوئی ہے ، اس ویڈیو میں دونوں میاں بیوی کو نماز پڑھتے دیکھا گیا۔ ویڈیو میں عمران خان نماز پڑھ رہے ہیں جبکہ بشریٰ بی بی اپنے خاوند کے پیچھے ہاتھ اُٹھائے دعا میں مشغول ہیں۔

عمران خان اور بشریٰ بی بی کی اس ویڈیو کو سوشل میڈیا صارفین نے جہاں سراہا وہیں کچھ صارفین کی جانب سے اس ویڈیو کو تنقید کا نشانہ بھی بنایا گیا۔

(جاری ہے)

صارفین کا کہنا تھا کہ یہ سب لوگوں کو دکھانے کے لیے کیا گیا ہے جبکہ کپتان کے حامی کچھ صارفین نے اس تاثر کو غلط قرار دیتے ہوئے کہا کہ ویڈیو دیکھ کر ایسا ہرگز نہیں لگتا کہ یہ عمران خان نے خود بنوائی ہو گی کیونکہ اس ویڈیو میں ان کا دھیان ایک مرتبہ بھی کیمرے کی طرف نہیں گیا۔ جبکہ ان کی اہلیہ بھی اپنے خاوند کے پیچھے نماز پڑھ رہی تھیں جو میاں بیوی کے خوبصورت رشتے کا عکاس ہے۔

خیال رہے کہ رواں سال کے آغاز میں پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان نے روحانی پیشوا بشریٰ بی بی سے تیسری شادی کی ، بشریٰ بی بی کی عمران خان سے شادی پر انہیں سخت تنقید کا نشانہ بھی بنایا گیا۔ رپورٹس کے مطابق رواں برس کے آغاز میں ہی پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان نے بشریٰ بی بی سے نکاح کیا۔ نکاح کی تقریب میں قریبی دوست احباب شریک تھے، نکاح کی رسم انتہائی سادگی سے بشریٰ بی بی کی دوست کے گھر منعقد کی گئی۔

جس کے بعد 25 فروری کو پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان نے قریبی دوست احباب اور پارٹی رہنماؤں کو دعوت ولیمہ پر مدعو کیا، اس موقع پر پی ٹی آئی چئیرمین عمران خان نے بشریٰ بی بی سے سب کا تعارف بھی کروایا ۔ یاد رہے کہ عمران خان کی تیسری شادی کی تصاویر میں بشریٰ بی بی نے حجاب لے رکھا تھا ،،بشریٰ بی بی نے نکاح کے موقع پر بھی حجاب اپنے منہ پر اوڑھ رکھا تھا۔ اسی لیے ان کا چہرہ نہیں دیکھا جا سکا جس کے بعد کئی خواتین کی تصاویر کو بشریٰ بی بی سے منسوب کر کے سوشل میڈیا پر وائرل کیا گیا جس کی بعد ازاں تردید بھی کی گئی۔