سعودی خاتون وزیرکو دوران تقریر نقاب اتارنا مہنگا پڑ گیا

بدھ اپریل 15:26

منامہ  (اُردو پوائنٹ اخبار آن لائن۔ بدھ اپریل ء) سعودی عرب کی خاتون ڈپٹی وزیر کونقاب اتارنا مہنگا پڑ گیا ۔ سعودی خاتون وزیر کو نقاب اتارکر تقریر کرنے پر شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ سعودی عرب کے خبر رساں ادارے کے مطابق خواتین کی تعلیم کی وزیر احیا العواد ایک انٹرنیشنل سیمینار میں بحیثیت مہمان خصوصی موجودہ تھی اور ابھیں طالبات کے لیے ایک تقریر کرنا تھیں ۔

(جاری ہے)

خاتون ڈپٹی وزیرمقررہ وقت پر سیمینار میں بمعہ نقاب پہنچیں لیکن تقریر سے قبل انہوں نے نقاب اتاردیا اور تقریر شروع کر دی۔ نقاب اتارنا ان کو شدید مہنگا پڑ گیا ،اُن کے اِس عمل پر سوشل میڈیا اور دیگر پَلیٹ فارم سے اُن پر شدید تنقید شروع ہو گئی ،تنقید کرنے والوں کا موقف ہے کہ تعلیم کی وزیر احیا العواد کا نقاب اتارنے کا عمل نہ مذہب سے تعلق رکھتا ہے اور نہ ہی ثقافتی روایت ہے ۔م ذہبی اورثقافتی روایات کی عدم پاسداری کے باعث خواتین کی تعلیم کی وزیر احیا العواد نی معاشرتی خرابی کی مرتکب ہو ئی ہیں۔

Your Thoughts and Comments